سوکھے پتے کا روپ دھارنے والی نئی مکڑی کی دریافت

واشنگٹن: ماہرین نے حال ہی میں مکڑی کی ایک نئی قسم دریافت کی ہے جو خطرے کے وقت ایک سوکھے پتے کا روپ اس طرح دھارتی ہے کہ اسے پہچاننا مشکل ہوجاتا ہے۔

مکڑیوں کے ماہرین کے مطابق یہ واحد مکڑی ہے جو خطرے کے وقت سوکھے پتے کا روپ دھارلیتی ہے اور اس کا شکاری اسے کسی جانور کے بجائے اسے مردہ پتا سمجھتے ہوئے آگے بڑھ جاتا ہے۔ اس مکڑی کا کوئی نام ابھی تک نہیں رکھا گیا تاہم یہ پولٹیس جینس خاندان سے تعلق رکھتی ہے  جس سے 3 ہزار اقسام کی مکڑیاں تعلق رکھتی ہیں۔

لیکن ایسی کم ازکم 100 مکڑیاں پائی جاتی ہیں جو دشمن کو دیکھتے ہوئے ساکت ہوجاتی ہیں اور خود کو بند کرکے چھپاتی ہیں تاہم پتے کی شکل اختیار کرنے والی یہ پہلی مکڑی ہے۔

یہ مکڑی چین کے صوبے ینان کے ایک بارانی جنگل میں اتفاقیہ طور پر دریافت ہوئی جسے سلووانیہ اکادمی برائے سائنسز میں ارتقائی حیوانیات کے ایک ماہر مٹجاز کونٹنر نے دریافت کیا تھا۔ 2011 میں ملنے والی اس مکڑی کو اب ایک نئی قسم کا درجہ دیا گیا ہے۔

یہ مکڑی انفرادی طور پر پائی جاتی ہے اور عموماً سوکھے پتوں کے درمیان رہتی ہے۔ اس کی پیٹھ سبز پتے جیسی جبکہ اندرونی اور پیٹ کا حصہ بال دار اور پیلے پتے جیسا دکھائی دیتا ہے۔ اس کے دوہفتے بعد اس کا نر مکڑا بھی دیکھا گیا اور اسے احتیاط سے میوزیم لایا گیا۔

Scroll To Top