نیند کی کمی ذیابیطس کا خطرہ بڑھائے

یہ انتباہ امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا— کریٹیو کامنز فوٹو

رات کو پانچ گھنٹے سے کم نیند آپ کو ذیابیطس ٹائپ ٹو کا شکار بنا سکتی ہے۔

یہ انتباہ امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا۔

کیلیفورنیا یونیورسٹی کی تحقیق کے مطابق کم نیند کے نتیجے میں اگلے روز سافٹ ڈرنک کی خواہش بہت زیادہ ہوتی ہے اور ذیابیطس ٹائپ ٹو کا خطرہ بہت زیادہ بڑھ جاتا ہے۔

تحقیق کے مطابق جو لوگ کم نیند کو عادت بنا لیتے ہیں وہ کیفین اور چینی کا استعمال مشروبات کی شکل میں بہت زیادہ کرنے لگتے ہیں۔

اس سے پہلے بھی یہ بات سامنے آچکی ہے کہ نیند کی کمی اور سافٹ ڈرنکس دونوں ذیابیطس کا باعث بن سکتے ہیں۔

تاہم اب اس تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ نیند کی کمی کو دور کرنا چینی کے استعمال سے لوگوں کو بچانے میں مددگار ثابت ہوسکتا ہے۔

اس تحقیق کے دوران انیس ہزار کے قریب لوگوں کا جائزہ لیا گیا کہ وہ ایک ہفتے کے دوران کتنے گھنٹے سوتے ہیں، جبکہ محققین نے ان سے مشروبات کے استعمال کے بارے میں بھی پوچھا۔

نتائج سے معلوم ہوا کہ بہت کم نیند اور زیادہ میٹھے مشروبات کے استعمال میں تعلق موجود ہے جو کہ میٹابولک صحت کو متاثر کرتا ہے۔

محققین کا کہنا تھا کہ اس دو طرفہ تعلق کے نقصانات میں کمی نیند کے دورانیے کو بڑھانے سے مکن ہوسکتی ہے۔

سافٹ ڈرنکس کا زیادہ استعمال متعدد امراض کا خطرہ بڑھاتا ہے۔

محققین کا کہنا تھا کہ ماضی کی رپورٹس سے بھی عندیہ ملتا ہے کہ نیند کی کمی بھوک بڑھاتی ہے خاص طور پر میٹھی چیزوں کی خواہش بڑھ جاتی ہے۔

یہ تحقیق طبی جریدے جرنل سلیپ ہیلتھ میں شائع ہوئی۔

Scroll To Top