عالمی برادری ترقی پذیر ملکوں کو قرضوں میں ریلف دے: عمران خان

کرونا وائرس دنیا بھر میں پھیل چکا ہے،وباءسے متعلق ترقی یافتہ ملکوں کا ردعمل ترقی پذیر ملکوں سے مختلف ہے،پاکستان میں 22 کروڑ عوام کاملک ہے مگرصرف 8 ارب ڈالر کا پیکج دیاگیا ہ

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ کرونا سے نمٹنے کے لیے ترقی پذیر ممالک کو قرضوں میں ریلیف دیاجائے۔تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے انٹرنیشنل کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کرونا وائرس دنیا بھر میں پھیل گیا ہے،کرونا وائرس سے متعلق ترقی یافتہ ممالک کا ایک ردعمل ہے۔وزیراعظم نے کہا کہ ترقی پذیر ملکوں کو یہ فکر ہے کہیں غریب بھوک سے نہ مرجائیں، ترقی پذیر ملکوں میں لاک ڈاون کی وجہ سے بھوک کے مسائل سے بھی نمٹنا ہے،ترقی یافتہ ملکوں میں کورونا کو وائرس کی روک تھام اور معیشت سےنمٹنا ہے۔وزیراعظم پاکستان کا کہنا تھا کہ ترقی یافتہ ممالک اپنی عوام کے لیے بڑے بڑے پیکیج کا اعلان کر رہے ہیں،پاکستان 22 کروڑ عوام کاملک ہے لیکن صرف 8 ارب ڈالر کا پیکج دیا۔انہوں نے مزید کہا ہمارے پاس اتنے وسائل نہیں کہ صحت پر زیادہ خرچ کرسکیں۔انہوں نے کہا کہ امریکا اپنے عوام کے لیے 2.2 ٹریلین ڈالر کا پیکیج دے رہاہے، جاپان ایک ٹریلین ڈالر خرچ کر رہا ہے۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ لوگوں کو بھوک سے بچانے کے لیے بھی وسائل کی کمی ہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ عالمی مالیاتی ادارے،سیکرٹری جنرل یو این ترقی پذیر ملکوں کو قرضوں پر ریلیف دیں، جو مسئلہ پاکستان کو درپیش ہے وہی مسئلہ ترقی پذیرملکوں کو بھی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کرونا سے نمٹنے کے لیے ترقی پذیر ممالک کو قرضوں میں ریلیف دیاجائے۔

You might also like More from author