کرونائی کرپشن کلچرکی کچرا کنڈی

عمرانی کلہاڑا چل گیا

 

جناب عمران خان فقیر کی نظر میں
میری ایک پوسٹ ( متن کمنٹس باکس میں ) پر میرے چند محترم دانشوروں نے تنقیدی تبصروں کے توسل سے ایک فکری مکالمے کی صورت گری فرمائی جس کے جواب میں میرا بیانیہ حسب ذیل ہے ۔
یہ فقیر اپنے سبھی نہائت محترم و مکرم فاضل ناقدین کا تہہ دل سے شکر گزارہے کہ انہوں نے کمال اخلاص سے زیر نظر پوسٹ بابت اپنے افکار کا اظہار کیا، یہ بہت اہم حسن اتفاق ھے کہ ہم سب طبقاتی سانجھ اور دکھ درد کے رشتے کا اشتراک رکھتے ہیں اور ھم سب کی شدید خواہش ہے کہ صدیوں سے معاشرتی اور معاشی ظلم و ستم اور جبر و قہر کے عذابوں سے گزرنے والی سوختہ حال لوکائی کے دن بجلد خوشحالی سے بدل جائیں ،
پر کیا کیجیئے کہ مظلوم و محروم افتادگان خاک کی اپنی کوئی سیاسی جماعت ہی نہیں ، نتیجہ !ہم جیسوں کو غریبوں کے نام پر امیروں ،وڈیروں ، رسہ گیروں ، سرمایہ شاہوں، کٹھ ملاﺅں اور سیاست کے پردے میں قومی دولت کے لٹیروں کے جتھوں کی طرف دیکھنا پڑتا ھے , PTI کو البتہ اس کے سربراہ جناب عمران خان کی صورت میں ایک محترم استثنیٰ ضرور حاصل ہے کہ امانت و دیانت کے حوالے سے ان کی شخصی اصابت ایک مسلمہ حقیقت اور ایک معین مفہوم میں نعمت غیر مترقبہہ ھے وگرنہ انکی پارٹی میں چند محترم استثناﺅں کے ساتھ، ہم غربا کی نظر میں persona non grataکے زمرے میں آنے والے ناہنجاروں کے جتھے گھس بیٹھیﺅں کی صورت براجمان ہیں ،
فقیر عشرہ 60 کے آخری ماہ و سال میں "کمتر برائی” کے طور پر بھٹو کا شریک سفر ہوا تھا اور آج اسی کا ایکشن ری پلے جناب عمران خان کی صورت میں جاری ہے، ایک رجائیت پسند نفس رکھتے ہوئے میں سمجھتا ہوں کہ دیانت ، امانت اور اھلیت کے اپنے شخصی اوصاف کی بدولت ، پارلیمانی عددی ضعف ، فکری پسماندگی میں لتھڑی پارٹی اور ”مثالیت و عملیت پسندی“میں تقسیم کے باوجود، جناب عمران خان ہمارے آشوب زدہ اور بگڑے تگڑے سیاسی، سماجی اور معاشی ڈھانچے کو کسی نہ کسی درجے پر بہتری کی طرف ضرور گامزن کر جائیں گے ،
حرف آخر ، جناب عمران خان کے ساتھ فکری رشتہ و تعلق کے باوصف میرے محترم قارئین بخوبی آگاہ ہیں کہ فقیر ان کے ساتھ شخصی سحر یا انکی پارٹی سے کسی رومانس کی خود فریبی میں ہرگز مبتلا نہیں ، اس ضمن PTI حکومت پر میری تنقیدی (تنقیصی نہیں) پوسٹس اور اخباری کالموں کے سبب سے میرا نام عمومی طور پر PTIکے ناپسندیدگان میں شمار ہوتا ہے
فقیر کی اس پوسٹ کے حوالے سے جاری مکالمے کے سبھی فاضل شرکا کی خدمت میں سپاس تشکر !
آپ سب پر سلامتی ہو ،

You might also like More from author