نامناسب فوٹو شوٹ سے انکار پر کیرئیر خطرے میں

ملا کیونس — اے ایف پی فائل فوٹو

ہولی وڈ اسٹار ملا کیونس کا کیرئیر اس وقت خطرے کی زد میں آگیا جب انہوں نے ایک پروڈیوسر کا نامناسب فوٹو شوٹ کا مطالبہ مسترد کردیا۔

اپنے شوہر آسٹن کیچر کی ویب سائٹ اے پلس پر لکھے گئے کھلے خط میں اداکارہ نے لکھا کہ جب ایک فلم کی پروموشن کے دوران ایک پروڈیوسر نے ایک میگزین کے فوٹو شوٹ کے لیے نامناسب ملبوسات پہننے کا کہا تو انہوں نے انکار کردیا۔

جس پر پروڈیوسر نے دھمکی دیتے ہوئے کہا ‘ اب تم کو کبھی کسی فلم میں کام نہیں ملے گا’۔

ملا کیونس نے لکھا ‘ کیا اب میں ہولی وڈ میں دوبارہ کبھی کام نہیں کرسکوں گی؟، کیرئیر میں پہلی بار میں نے کسی چیز سے انکار کیا، مگر دنیا یہاں تک نہیں ہوجاتی’۔

انہوں نے ہولی وڈ میں صنفی تعصب اور معاوضے میں عدم توازن کا ھوالہ دیتے ہوئے کہا ‘ یہ وہ شرائط ہیں جنھیں ہمیں ماننا پڑتا ہے، اگر ہم آواز بلند کرتے ہیں تو ہمارا روزگار خطرے کی زد میں آجاتا ہے’۔

ان کے بقول ‘ اپنے کیرئیر کے دوران ایسے متعدد مواقع آئے جب میری توہین کی گئی، سائیڈلائن، کم معاوضہ، نظر انداز اور میری جنس کی بدولت امتیاز کیا گیا، میں نے لوگوں کو شک کا فائدہ دیا کہ ہوسکتا ہے کہ وہ زیادہ جانتے ہیں، ہوسکتا ہے کہ میرے اندر کچھ کمی ہو، میں نے خود کو سمجھایا کہ اس انڈسٹری میں عورت کی کامیابی کے لیے ضروری ہے کہ مجھے مردوں کے مطابق چلنا ہے، مگر عمر بڑھنے کے ساتھ مجھے احساس ہوا کہ یہ سب غلط ہے، بدترین امر یہ ہے کہ میں نے پہلے ایسا ہونے دیا’۔

انہوں نے کہا کہ ہولی وڈ سمیت زندگی کے ہر شعبے میں صنفی تعصب موجود ہے۔

انہوں نے عزم ظاہر کیا کہ اب وہ اس طرح کا رویہ برداشت نہیں کریں گی جو ان کی جنس کی وجہ سے کیا جائے۔

انہوں نے کہا ‘ میں ہولی وڈ میں دوبارہ ضرور کام کروں گی مگر اب سمجھوتہ نہیں کروں گی اور ہر رکاوٹ کا سامنا کروں گی’۔

Scroll To Top