150 کنال سے زائد اراضی رکھنے والے 300 مالکان کارروائی کےلئے شارٹ لسٹ

  • انتظامیہ نے ابتدائی طور پر فیڈرل بورڈ آف ریونیوکو ریکارڈ فراہم کردیا،اگلے مرحلے میں 300 افراد کے اثاثوں اور آمدنی کا جائزہ لیا جائے گا
  • فہرست میں شامل افراد کی جائیدادیں بے نامی ہونے پر سخت کارروائی ہوگی،نیب ریفرنس دائر کیے جائیں گے

اسلام آباد(الاخبار نیوز) وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں بے نامی جائیدادیں رکھنے والوں کے گرد شکنجہ تنگ ہوگیا، 150 کنال سے زائد اراضی رکھنے والے 300 مالکان کو کارروائی کے لیے شارٹ لسٹ کرلیا گیا۔تفصیلات کے مطابق بے نامی جائیدادوں کی تحقیقات کرتے ہوئے ضلعی انتظامیہ نے ابتدائی رپورٹ تیار کرلی۔ ذرائع کے مطابق 150 کنال یا زائد اراضی کے مالکان کی تحقیقات جاری ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پہلے مرحلے میں 150 کنال سے زائد اراضی کے 300 مالکان کو شارٹ لسٹ کیا ہے۔ انتظامیہ نے ابتدائی طور پر فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کو 300 افراد کا ریکارڈ فراہم کردیا۔ذرائع کے مطابق اگلے مرحلے میں 300 افراد کے اثاثوں اور آمدنی کا جائزہ لیا جائے گا، فہرست میں شامل افراد کی جائیدادیں بے نامی ہونے پر سخت کارروائی ہوگی۔ بے نامی جائیدادیں رکھنے والوں کے خلاف نیب ریفرنس دائر کیے جائیں گے۔خیال رہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے بے نامی جائیدادیں رکھنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی ہدایت کر رکھی ہے۔اس سے قبل ایف بی ا?ر کے چیئرمین شبر زیدی کا کہنا تھا کہ بے نامی جائیدادوں کے خلاف ا?رڈیننس تیار کیا گیا ہے، بے نامی قانون میں کوئی بڑی تبدیلی نہیں کر رہے۔ تاجروں کے ساتھ کوئی ڈیڈ لاک نہیں ہے۔شبر زیدی نے بتایا تھا کہ پاکستانیوں کی جائیداد سے متعلق معلومات کے تبادلے پر دبئی میں میٹنگ ہوئی ہے، ملاقات میں طے ہوا کہ دبئی کا لینڈ ڈپارٹمنٹ اس حوالے سے فوری معلومات فراہم کرے گا۔

Scroll To Top