دنیاخطے کوہتھیاروں کی دوڑ میں نہ دھکیلے، ترجمان دفتر خارجہ

  • رافیل طیارے ہو ں یا کچھ اور پاکستان دفاع کرنا جانتا ہے، سارک کانفرنس کے انعقاد میں بھارت کی رکاوٹ ختم ،اس حوالے سے معاملات آگے بڑھ سکتے ہیں
  • کرتا پور راہداری وزیر اعظم کے وعدے کے مطابق مقررہ وقت پر کھولی جائے گی،ڈاکٹر محمد فیصل کی ہفتہ وا بریفنگ

اسلام آباد (این این آئی+صباح نیوز)ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ ہندوستان سے ہمیں کسی خیر کی توقع نہیں،پاکستان اپنا دفاع کرنا جانتا ہے چاہے بھارت رافیل طیارہ رکھے یا کچھ اور بھی لے لے ۔ انہوں نے ہفتہ واربریفنگ میں مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر بات کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کو 66 روز ہوچکے ہیں، لوگوں کو ادویات، علاج، خوراک اور رابطوں کی سہولیات سے محروم رکھا گیا ہے،لوگ بدستور بھارتی بربریت کے باعث شدید مسائل کا شکار ہیں، بھارتی فورسز کے ہاتھوں عبید فاروق لون، عباس بھٹ شہید کئے گئے۔ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی چینی قیادت سے ملاقاتوں میں ہر شعبے میں تعاون  بڑھانے پراتفاق کیا گیا، چینی صدر نے کشمیر پر پاکستانی موقف کی حمایت کرتے ہوئے اس کو نامکمل ایجنڈا قرار دیا، امریکی سینیٹرز کی آمد اور کشمیر کا دورہ خوش آئند ہے، پاکستان ہر سطح پر مقبوضہ کشمیر کی صورتحال اٹھا رہاہے۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ سکیورٹی اور اسلحہ کی دوڑ پر پاکستان کا موقف واضح ہے، پاکستان ایسی کسی بھی دوڑمیں شامل نہیں، پاکستان اپنا دفاع کرنا جانتا ہے چاہے بھارت رافیل طیارہ رکھے یا کچھ اور بھی لے لے۔ انہوں نے کہا کہ سارک کانفرنس کے انعقاد میں بھارت کی رکاوٹ ختم ہوگئی ہے اور اس حوالے سے معاملات آگے بڑھ سکتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہندوستان سے خیرکی کوئی توقع نہیں، دنیاپرزوردیتے ہیں خطے کوہتھیاروں کی دوڑ میں نہ دھکیلاجائے ادھر ترجمان دفتر خارجہ نے واضح کیا ہے کہ راہداری وزیر اعظم کے وعدے کے مطابق اپنے مقررہ وقت پر کھولی جائے گی، سارک کی بین الاوزراتی کونسل کے اجلاس میں بھارت نے ایجنڈا آئٹم سات پر اجلاس کے انعقاد پر اعتراض اٹھایا ، سارک سربراہ اجلاس کے حوالے سے تواریخ کا جائزہ لیا جا رہا ہے،مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی جانب سے کرفیو کو 66 دن ہو چکے ہیں ، کشمیریوں کی زندگی اجیرن بن چکی ہے،کشمیریوں کے پاس بنیادی ضروریات کی چیزیں نہیں،عالمی دنیا کشمیر پر بول رہی ہے، عراق کے لئے زائرین کو ویزوں کے اجراءکیلئے سفارتی کوششیں جاری ہیں، وزیر اعظم کے دورہ چین میں چینی قیادت نے کشمیر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا ہے ، گوادر پروجیکٹ پر کام تیز کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ جمعرات کو ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل نے ہفتہ وار پریس بریفنگ کہاکہ بھارت کی قابض فوجیوں نے اونتی پورہ کشمیر میں دو نوجوانوں کو شہید کیا اور ایک کو زخمی کیا،بھارت کی جانب سے کرفیو کو 66 دن ہو چکے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ کشمیریوں کی زندگی اجیرن بن چکی ہے،کشمیریوں کے پاس بنیادی ضروریات کی چیزیں نہیں،عالمی دنیا کشمیر پر بول رہی ہے۔انہوںنے کہاکہ امریکا کے مستقبل کے صدارت کے تین امیدواروں نے اس پر بات کی ۔ انہوںنے کہاکہ وزیراعظم عمران خان نے چین کا دورہ کیا،وزیراعظم نے چین کے صدر اور وزیراعظم سے ملاقات کی ،وزیراعظم نے صنعتکاروں سے بھی ملاقات کی ،ملاقات میں پاکستان چین تعلقات پر بات چیت کی گئی،انہوںنے کہاکہ گوادر پروجیکٹ پر کام تیز کرنے کا فیصلہ کیا گیا ،دونوں ممالک نے گوادر کے دوسرے حصے کو اکنامک ترقی اور سوشل ترقی بڑھانے کا کہا۔انہوںنے کہاکہ کشمیر کی موجودہ صورتحال پر وزیراعظم نے چین کی قیادت کو آگاہ کیا،چینی قیادت نے اس صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا ۔ ترجمان نے کہاکہ بھارت کے ڈپٹی ہائی ٰ کمشنر کو ک ٹرول لائن کی خلاف ورزی پر دفتر خارجہ طلب کیا گیاانہوںنے کہاکہ تین امریکی سینیٹروں نے بھی مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی آواز میں اپنی آوازیں شامل کیں،انہوں میجر جنرل عامر نے ایل او سی جی صورتحال پر بریفنگ دی،امریکی سینیٹروں نے وزیر خارجہ سے ملاقات کے لیے ملتان کا دورہ بھی کیا ،انہوں نے بہاو¿ دیں زکریا کے عرس کی تقریبات میں شرکت بھی کیں۔ترجمان نے وزیر اعظم کے دورہ چین کے حوالے سے بتایاکہ پاکستان نے چین کو جموں و کشمیر پر اپنے تحفظات سے بڑی آگاہ کیا،چین نے بتایا کہ وہ جموں و کشمیر کے تنازعہ کا گہرائی سے معائنہ کر رہے ہیں ۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ وزیر اعظم عمران خان کے سعودی عرب اور ایرن کا دورہ زیر غور ہے۔انہوںنے کہاکہ سارک کی بین الاوزراتی کونسل کے اجلاس میں بھارت نے ایجنڈا آئٹم سات پر اجلاس کے انعقاد پر اعتراض اٹھایا ، سارک سربراہ اجلاس کے حوالے سے تواریخ کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔انہوںنے کہاکہ کرتار پور راہداری پر سابق بھارتی وزیراعظم من موہن سنگھ کو باقاعدہ دعوت دے دی گئی ہے،راہداری وزیر اعظم کے وعدے کے مطابق اپنے مقررہ وقت پر کھولی جائے گی۔انہوںنے کہاکہ عراق کے لئے زائرین کو ویزوں کے اجراءکیلئے سفارتی کوششیں جاری ہیں۔ترجمان دفتر خارجہ نے آئی ایم کشمیر کی کالی پٹی پہن کر پریس بریفننگ دی۔

Scroll To Top