چین کی ترقی دنیا کیلئے رول ماڈل ہے، عمران خان

  • پاکستان چین کابجلی ، پٹرولیم ،گیس ، زراعت ، صنعتی شعبو ں میں تعاون بڑھانے پر اتفاق ، دورے میںتجارت، سرمایہ کاری ، معیشت اور دفاعی تعلقات مضبوط کرنے کا عزم ، تعلیم زراعت سماجی ترقی اور عوامی رابطوں کا فروغ بڑھانے پر بھی غور
  • دونوں ملکو ںنے اتفاق کیا کہ افغان تنازعے کا کوئی فوجی حل نہیں ،امن خطے کی سلامتی کیلئے ضروری ہے، سہ فریقی وزرائے خارجہ مذاکرات کے نتائج اطمینان بخش قرار،چین کی افغان امن عمل میں پاکستان کے کردار کی تعریف ،مشترکہ اعلامیہ

بیجنگ(صباح نیوز) وزیراعظم عمران خان کے دورہ چین کامشترکہ اعلامیہ جاری کردیاگیا ہے ۔ جاری اعلامیہ کے مطابق عمران خان نے چینی ہم منصب کی دعوت پر چین کا دورہ کیا ۔ دورے کے دوران وزیراعظم کی چینی صدر، وزیراعظم ، چیئرمین نیشنل پیپلزکانگریس سے ملاقاتیں ہوئیں۔ اعلامیہ میں مزید کہا گیا ہے کہ دورے کے دوران دوطرفہ تعلقات اورخطے سمیت عالمی امور پر تبادلہ خیال ہوا ۔ وزیراعظم عمران خان کی چینی سرمایہ کاروں اور کاروباری افراد سے بھی ملاقات ہوئی۔ وزیراعظم نے چین کی ترقی کو دیگر ممالک کیلئے رول ماڈل قرار دیا ۔ دونوں ممالک کی مشترکہ تعاون کمیٹی کا اجلاس نومبر میں اسلام آباد میں ہوگا۔ جس میں دونوں ممالک کے جاری منصوبوں پر عملدرآمد کا جائزہ لیا جائے گا۔ اعلامیہ کے مطابق دورے میں بجلی ، پٹرولیم ،گ یس ، زراعت ، صنعتی شعبوں میں تعاون بڑھانے پر اتفاق ہوا ۔ تجارت سرمایہ کاری ، معیشت اور دفاعی تعلقات مضبوط کرنے کا عزم کیا گیا۔ تعلیم زراعت سماجی ترقی اور عوامی رابطوں کا فروغ بڑھانے پر بھی اتفاق ہوا۔ مختلف شعبوں میں تعاون کے نئے جدید طریقے تلاش کیے جائیں گے۔ اسپیشل اکنامک زونز کے فوری قیام کی ضرورت پر زور دیا گیا۔ اکنامک زونز سے سرمایہ کاری اور صنعتی شعبے کووسعت ملے گی ۔ پاکستان اور چین نے اتفاق کیا کہ افغانستان تنازع کا کوئی فوجی حل نہیں ۔ افغانستان میں امن خطے کی سلامتی کیلئے ضروری ہے۔ سہ فریقی وزرائے خارجہ مذاکرات کے نتائج پر اطمینان کا اظہار کیا گیا۔ چین نے افغان امن عمل میں پاکستان کے کردار کی تعریف کی ۔دونوں ممالک نے دہشت گردی کے خلاف جدوجہد جاری رکھنے کا عزم کیا ۔ تمام ممالک کو دہشت گردی کیخلاف جنگ میں عالمی تعاون پر زور دیا گیا۔

Scroll To Top