رواں برس تک صحت انصاف کارڈ سے 3کروڑ افراد مستفید ہونگے‘عثمان بزدار

  • ضلع چکوال اور جہلم کیلئے صحت انصاف کارڈ پروگرام کا افتتاح ،مجموعی آبادی کے30فیصد حصے کو بہترین ہیلتھ کور فراہم کیا جائےگا
  • کارڈ ہولڈر ایمرجنسی سمیت 8بیماریوںکا علاج کروا سکے گا،چکوال میانوالی روڈ 2 رویہ بنانے کا منصوبہ اے ڈی پی میں شامل ، 8 ارب روپے مختص

چکوال(ڈسٹرکٹ رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے چکوال میں ضلع چکوال اور ضلع جہلم کیلئے صحت انصاف کارڈ پروگرام کا افتتاح کےا۔وزیراعلیٰ نے چکوال اورجہلم کے مستحق افراد میں صحت انصاف کارڈ تقسیم کئے۔قبل ازےں وزےراعلیٰ نے چکوال کے لئے مختلف منصوبوں کا افتتاح کےا اورسنگ بنےاد رکھا۔وزیراعلیٰ نے گورنمنٹ ڈگری کالج برائے خواتین بھاگوال کا افتتاح کےا۔یہ کالج 11کروڑ 18 لاکھ روپے سے تعمیر کیا گیا ہے۔وزیراعلیٰ نے ڈھوک ٹاہلیاں جھیل میں انٹرٹینمنٹ پارک اور واٹر سپورٹس کے منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا۔ انٹرٹینمنٹ پارک اور واٹر سپورٹس کے منصوبے پر 10 کروڑ روپے لاگت آئے گی۔وزیراعلیٰ نے گورنمنٹ پوسٹ گریجوایٹ کالج چکوال کے بی ایس بلاک کی تعمیر کے منصوبے کا سنگ بنیاد رکھ دیا۔بی ایس بلاک کی تعمیر پر 16 کروڑ روپے لاگت آئے گی۔ وزیراعلیٰ نے چکوال کی دھارابی جھیل میں ریزارٹ اور رابطہ سڑک کی تعمیر کے منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا۔یہ منصوبہ 8 کروڑ روپے سے مکمل ہوگا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے چکوال مےںمنصوبوں کے افتتاح اورچکوال و جہلم کے مستحق افراد میں صحت انصاف کارڈ پروگرام کی افتتاحی تقرےب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج عوام کی خدمت کے ایک اور وعدہ پورا ہونے پر اطمینان محسوس کررہاہوں۔صحت انصاف کارڈ مستحق افراد کےلئے مفت علاج کا بہت بڑا پروگرام ہے اوراس کارڈ کے ذریعے مستحق افراد 7 لاکھ 20 ہزار روپے تک کا علاج کرا سکتے ہیں جبکہ ضرورت پڑنے پر یہ رقم دوبارہ بھی مستحق افراد کو دی جائے گی۔رواں برس تک صحت انصاف کارڈ کے ذریعے صوبے کے سوا 3کروڑ افراد مستفید ہوں گے اوراس کارڈ کے ذریعے صوبے کی مجموعی آبادی کے30فیصد حصے کو بہترین ہیلتھ کور فراہم کیا جائےگا۔صحت انصاف کارڈ ہولڈر ایمرجنسی سمیت 8بڑی بیماریوںکا علاج کروا سکے گا۔ضلع چکوال کے 4لاکھ 36ہزار سے زائدافراد صحت انصاف کارڈ سے مستفےد ہوںگے اورضلع کی 29فےصد آبادی کو ہےلتھ کورفراہم کےا جائے گاجبکہ ضلع جہلم مےں27فےصد آبادی کو ہےلتھ کور حاصل ہوگا اور ضلع جہلم کے 3لاکھ30ہزار سے زائد افراد صحت انصاف کارڈ سے مستفےد ہوںگے۔وزےراعلیٰ نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت نے ایک برس کے دوران ہسپتالوں میں 9 ہزار بیڈز کا اضافہ کیا ہے۔ ہماری حکومت صوبے میں 9 نئے ہسپتال بنا رہی ہے جبکہ گزشتہ 26 برس سے کسی حکومت نے نئے ہسپتال بنانے پر توجہ نہیں دی۔ ہیلتھ کے بجٹ میں 30 فیصد ریکارڈ اضافہ کیا ہے۔ چکوال کےلئے رواں سال کے سالانہ ترقےاتی پروگرام مےں 99 ترقےاتی منصوبے شامل ہےںاوران منصوبوں کی تکمےل پر ساڑھے26ارب روپے سے زائدصرف ہوںگے۔ مےں نے آج گورنمنٹ ڈگری کالج برائے خواتین بھاگوال کا افتتاح کیا ہے جبکہ ڈھوک ٹاہلیاں جھیل میں انٹرٹینمنٹ پارک اور واٹر سپورٹس کے منصوبے، گورنمنٹ پوسٹ گریجوایٹ کالج چکوال کے بی ایس بلاک کی تعمیر کے منصوبے اورچکوال کی دھارابی جھیل میں ریزارٹ اور رابطہ سڑک کی تعمیر کے منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا ہے۔انہوںنے کہا کہ عوام کی خدمت، خوشحالی ،فلاح وبہبود اورترقی کے عہد کو ہر قےمت پر نبھائیں گے۔ چکوال کو اپنے گھر کی طرح سمجھتا ہوں،اسے ترقی کے سفر میںشامل کریں گے۔چکوال کی ایک ایک تحصیل میں جا کر مسائل کا خود جائزہ لوں گا۔وزیراعلیٰ نے لاوا میں تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال تعمیر کرنے کے منصوبے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ 10 برس گزر گئے لیکن تحصیل لاوا میں ہسپتال نہیں بن سکا۔ ماضی کی حکومت نے تحصیل لاوا کے عوام کےساتھ ہسپتال نہ بنا کر زیادتی کی ۔وزیراعلیٰ نے چکوال میں نیا ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال بنانے کابھی اعلان کےااورکہا کہ ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال چکوال کی حالت اچھی نہیں۔ ہم چکوال میں نیا ڈی ایچ کیو ہسپتال بنائیں گے۔انہوںنے کہاکہ چکوال میں یونیورسٹی کے قیام کا بل منظور ہو گیا ہے، دوبارہ یہاں آ کر سنگ بنیاد رکھوں گا۔ وزیراعلیٰ نے پنجاب میں 100 تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتالو ںکی ایمرجنسیز کو اپ گریڈ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ان 100 تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتالوں میں ٹراما کی سہولت بھی میسر ہوگی۔انہوںنے کہا کہ چکوال میانوالی روڈ کو 2 رویہ بنانے کے منصوبے کو سالانہ ترقیاتی پروگرام میں شامل کر لیا گیا ہے۔ پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت 8 ارب روپے چکوال میانوالی روڈ کیلئے مختص کئے گئے ہیں۔ترقی کا سفر جاری رہے گا۔جتنے پراجیکٹس کا اعلان کیا ہے انکی نگرانی خود کرونگا۔راجن پور سے صحت انصاف کارڈ کا آغاز کیااور آج ہم چکوال اورجہلم کےلئے ےہ کارڈز فراہم کررہے ہےں۔ اب صحت انصاف کارڈ کا پروگرام 30 اضلاع میں شروع ہوچکا ہے ۔ صوبائی وزےر صحت ڈاکٹر ےاسمےن راشد نے تقرےب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پےنل پر شامل نجی ہسپتالوں مےں 15ہزار بےڈزشامل کےے جائےںگے۔صحت انصاف کارڈ کےلئے مخصوص شکاےت سےل بنائےں گے۔صحافےوں اوررےٹائرڈورکرز کو بھی صحت کارڈ دےںگے۔انہوںنے بتاےا کہ صحت انصاف کارڈ کے ذرےعے راجن پور کے 100افراد دل کے آپرےشن کراچکے ہےں ۔صوبائی وزےر معدنےات عمار ےاسرنے کہا کہ امےد ہے کہ عثمان بزدار دےرےنہ مسائل حل کرےںگے کےونکہ وہ انتہائی محنت سے صوبے کے عوام کی خدمت کررہے ہےں ۔صوبائی وزےر ہائر اےجوکےشن راجہ ےاسر ہماےوں نے کہا کہ وزےراعلیٰ کا شہےدوں کی سرزمےن پر خےر مقدم کرتے ہےں ۔صوبائی وزراءڈاکٹر یاسمین راشد، یاسر ہمایوں، عمار یاسر، اراکےن قومی و صوبائی اسمبلی سالک حسین،سردار ذوالفقار، آفتاب اکبر، یاور کمال، فوزیہ بہرام، آسیہ امجد،سےکرٹرےز سپےشلائزڈ ہےلتھ اےنڈ مےڈےکل اےجوکےشن،کھےل و سےاحت،کمشنرراولپنڈی اور اعلیٰ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدارسے پاکستان تحریک انصاف کے جنرل سیکرٹری عامر محمود کیانی نے ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی ، فلاح عامہ کے منصوبوں اور پارٹی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں تحریک انصاف ملک کی ہر دلعزیز جماعت بن چکی ہے۔پارٹی کے کارکن قیمتی سرمایہ ہیں، کارکنوں کو ان کاجائز مقام دیں گے اور انکے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جائینگے۔ کارکنوں کےلئے وزیراعلیٰ آفس کے دروازے ہمہ وقت کھلے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت عوام کو ریلیف دینے کےلئے آخر حد تک جائے گی۔ صوبائی وزراءکو بھی مہنگائی پر قابوپانے کےلئے فیلڈ وزٹ کی ہدایت کر دی ہے اور عوام کو ریلیف کے کاموں کی میں خود نگرانی کررہا ہوں۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ راولپنڈی کےلئے اربوں روپے کے منصوبے شروع کئے ہیں۔ ماضی کی طرح پیسہ نمائشی منصوبوں پر ضائع نہیں کیا۔ سابق دور میں نمائشی منصوبوں پرسرکاری وسائل کا بے دریغ استعمال کیاگیا اور ان نمائشی منصوبوں کا فائدہ عوام کو نہیں پہنچا۔انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے عوام کو بنیادی ضروریات کی فراہمی پر فوکس کیا ہے اور چیلنجز پر قابو پانے کیلئے دن رات ایک کئے رکھا۔وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے ذ ہنی صحت کے عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ تندرست زندگی کا براہ راست تعلق صحت مند دماغ سے ہے۔ غربت، بیروزگاری اور معاشی مسائل کے باعث ذہنی امراض میں مبتلا افراد کی تعداد میںاضافہ ہو رہا ہے۔ موبائل فون اور کمپیوٹر کا بے تحاشا اور غیر معمولی استعمال بھی ذہنی بگاڑ کا باعث بن رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ قانون فطرت سے ہٹ کر زندگی گزارنے سے ذ ہنی امراض لاحق ہونے کے خدشات میںاضافہ ہوتا ہے جبکہ میانہ روی اور اعتدال کے ساتھ زندگی بسر کرنے سے ذہنی صحت برقرار رہتی ہے۔ جسمانی ورزش، تفریحی سرگرمیاں اور اچھا ماحول دماغی صحت کےلئے ضروری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ذہنی امراض میں مبتلا افراد کی بحالی کیلئے اقدامات حکومت کی ترجیحات میں شامل ہیں۔ ذہنی امراض میں مبتلا افراد کو علاج معالجہ کی بہترین سہولتیں فراہم کی جارہی ہےں۔ انہوں نے کہا کہ ذہنی صحت کا دن منانے کا مقصد عوام میں ذ ہنی بیماریوں سے بچاو¿ او راحتیاطی تدابیر کا شعور پیدا کرنا ہے اور آج عزم کرنا ہے کہ ذ ہنی امراض میں مبتلا افرادکے علاج معالجے و بحالی کیلئے مربوط انداز میں کوششیں جاری رکھیں گے۔وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار نے روزنامہ جنگ کے ڈپٹی چےف رپورٹرامتےاز راشد کے انتقال پر دکھ اورافسوس کا اظہار کےا ہے ۔وزیراعلیٰ نے اپنے تعزیتی پیغام میں سوگوار خاندان سے ہمدردی اور تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے دعا کی کہ اللہ تعالیٰ مرحوم کی روح کو جوار رحمت میں جگہ دے اور غمزدہ خاندان کو صبر جمیل عطا فرمائے۔وزےراعلیٰ نے مرحوم کی صحافت کے مےدان مےں خدمات کو خراج عقےدت پےش کرتے ہوئے کہا کہ امتےاز راشد مرحوم کہنہ مشق صحافی تھے اورمرحوم کی صحافتی خدمات کو بھلاےا نہےں جاسکتا۔

Scroll To Top