بات نوازشریف راحیل شریف اور عمران خان کی قادرِ مطلق اپنے آپ پر کوئی پابندی کیسے لگا سکتا ہے ؟ 31-08-2015

ملک اسحق نے بھی اسلام کی سربلندی کے لئے قتل و غارت کا بازار گرم کررکھا تھا۔ مولانا فضل الرحمان بھی اسلام کی سربلندی کے جذبے سے سرشار ہیں۔ ایسے دینی رہنما بھی ہیں اسلام سے جن کا لگاﺅ انہیں قبروں پر ماتھا ٹیکنے کے لئے لے جاتا ہے۔ میاں نوازشریف بھی اسلام کی ہی بات کرتے ہیں۔ آصف علی زرداری کی حبِ اسلام ان سے کالے بکروں کی قربانی لیتی ہے۔ میں خود اس بات کا داعی ہوں کہ جب تک اسلامی نظام نافذ نہیں ہوگا ہمارا سفرِ ترقی شروع نہیں ہوسکے گا۔ اور عمران خان نے اپنی سیاست کا رشتہ ہمیشہ پاکستا ن کو ریاستِ مدینہ کا عکس بنا ڈالنے کے خواب سے جوڑا ہے۔
میں اپنے آپ سے یہاں یہ پوچھے بغیر نہیں رہ سکتا کہ ہم سب اگر ایک ہی اسلام کی بات کررہے ہیں` وہی اسلام جو ہمارے نبی ﷺ دنیا میں لائے اور جو پورے کا پورا کتابِ الٰہی کے صفحات پر پھیلا ہوا ہے۔ تو پھر ہمارے منہ اتنے سارے مختلف قبلوں کی طرف کیوں مڑے ہوئے ہیں۔ ملک اسحق کا اسلام خون میں کیوں نہایا ہوا تھا۔ مولانا فضل الرحمان کے اسلام سے ڈیزل کی بوکیوں آتی ہے ۔؟ میاں نوازشریف کا اسلام دولت کے انباروں پر کیوں بسیرا ڈالے ہوئے ہے ؟ اور آصف علی زرداری کے اسلام کی سرخروئی کے لئے رحمان ملک اور ایان علی جیسے کردار سامنے کیوں آتے ہیں؟ جہاں تک عمران خان کا تعلق ہے مجھے اُن کے اس خواب کی صداقت پر کوئی شبہ نہیں کہ پاکستان کی فلاح دورِ جدید کی ریاستِ مدینہ کے قیام میں ہی ہے۔
لیکن کیا ایسی ریاست کے قیام کے لئے اُن کے پاس مناسب کھلاڑی موجود ہیں ؟
1992ءمیں ہم نے کرکٹ کا ورلڈ کپ جیتا تھا۔ عمران خان کے بغیر یہ کپ ہم نہیں جیت سکتے تھے۔ انہوں نے آگے بڑھ کر پرفارم کیا اور قیادت کی۔ لیکن اگر اُن کے پاس وسیم اکرم نہ ہوتے ` اور میاں داد نہ ہوتے تو کیا وہ ورلڈ کپ جیت سکتے تھے ۔؟
یہاں یہ بھی کہا جاسکتا ہے کہ اگر اور مگر کی داستان بہت دور تک جاسکتی ہے۔ قدرت کسی کام کا فیصلہ کرلے تو اسباب خود بخود پیدا ہوجاتے ہیں۔اگر قدرت کو یہ بات مقصود ہے کہ پاکستان دورِ جدید کا مدینہ بنے تو وہ خدا جس نے بغیر باپ کے حضرت عیسیٰ ؑ کو پیدا کیا وہ یہاں بھی کوئی معجزہ دکھا سکتا ہے ۔
اللہ تعالیٰ نے معجزوں پر کوئی پابندی نہیں لگائی۔ قادرِ مطلق اپنے آپ پر کوئی پابندی کیسے لگا سکتا ہے ؟ میرا دل کہتا ہے کہ پاکستان میں بھی ایسا معجزہ ضرور ہوگا۔ یہ ہوسکتا ہے کہ میاں نوازشریف رات کو سوئیں تو میاں نوازشریف ہوں اور صبح اٹھیں تو ان کے اندر ایک نئی شخصیت جنم لے چکی ہو۔ وہ خود ہی اپنے آپ کو پہچان نہ سکیں۔
یہ بھی ہوسکتا ہے کہ خدا راحیل شریف کا سینہ ستاروں پر کمندیں ڈالنے کی امنگ اور آرزوئے کشور کشائی سے سرشار کردے اور وہ فیصلہ کرلیں کہ پاکستان کو پاکستان بنا کر رہنا ہے۔
اور یہ بھی ہوسکتا ہے کہ خدا نے عمران خان کے مقدر میں ایسی کامرانیاں لکھی ہوں جن کا آج وہ خود بھی تصور نہیں کرسکتے ۔
جہاں تک میرا تعلق ہے مجھے خواب اچھے لگتے ہیں!

Scroll To Top