مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی کا الرٹ جاری: جینو سائیڈ واچ نے بھی بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب کر دیا

  • مقبوضہ کشمیر میں 1979ء سے 2006ء تک 50 ہزار کشمیری شہید ہوئے،جب کہ 2016 سے اب تک 70 ہزار سے زائد کشمیری بھارتی بربریت کا نشانہ بن چکے ہیں
  • جینوسائیڈ واچ نے مقبوضہ کشمیر پر پاکستانی موقف کی تصدیق کر دی، وادی میں صورتحال اتنی بگڑ چکی کہ امریکی این جی او کو الرٹ جاری کرنا پڑا،شاہ محمود قریشی کا رد عمل کا اظہار

واشنگٹن: مقبوضہ کشمیر میں بھارتی کی جانب سے کشمیریوں کی نسل کشی کا خطرہ ہے، الرٹ جاری کر دیا گیا۔تفصیلات کے مطابق نسل کشی کے خلاف سرگرم امریکی این جی او جینو سائیڈ واچ نے مقبوضہ کشمیر سے متعلق الرٹ جاری کرتے ہوئے بھارتی چہرہ بے نقاب کر دیا.جینو سائیڈ واچ کے مطابق بھارتی فوج مقبوضہ کشمیرمیں تشدد، ریپ کے ساتھ مغویوں کو بطورہتھیاراستعمال کررہی ہے۔اس تہلکا خیز رپورٹ میں کشمیریوں کی متوقع نسل کشی کی علامات بیان کی گئی ہیں، ساتھ انکشاف کیا گیا ہے کہ مطابق مودی اور بی جے پی نے مسلم دشمنی کو ہوادی، ہندوتوا کا پرچارکیا.رپورٹ کے مطابق سوشل میڈیا پرجھوٹ پھیلایا گیا، مسلمانوں کو دہشت گرد، علیحدگی پسند، باغی کا نام دیا جاتا ہے، بنیادی انسانی حقوق کی وسیع پیمانے پرخلاف ورزیاں ہورہی ہیں.جینو سائیڈ واچ کا مزید کہنا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں 1979ء سے 2006ء تک 50 ہزار کشمیری شہید ہوئے،جب کہ 2016 سے اب تک 70 ہزار سے زائد کشمیری بھارتی بربریت کا نشانہ بن چکے ہیں. ادھر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر جو ہم مسلسل کہتے آرہے ہیں ،عالمی تنظیم جینوسائیڈ واچ نے بھی اس کی تصدیق کردی۔انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ’جینوسائیڈ واچ‘ نے مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی کے خطرے کا الرٹ جاری کیا ۔ عالمی تنظیم نے اقوام متحدہ سے بھارت کو مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی سے روکنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ وادی میں کئی لاکھ بھارتی فوجی تعینات ہیں اور مسلمان اکثریت پر اقلیت ہندو فوج کی حکمرانی ہے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ جو ہم مسلسل کہتے آرہے ہیں عالمی تنظیم نے بھی اس کی تصدیق کردی، مقبوضہ کشمیر میں قتل عام ہو رہا ہے، یہ تنظیم تمام صورتحال اور علامات دیکھ کر الرٹ جاری کرتی ہے۔وزیر خارجہ نے کہا کہ وادی میں صورتحال اتنی بگڑ چکی کہ جینوسائیڈ واچ کو الرٹ جاری کرنا پڑا، حالات سے تنگ کشمیری گھروں سے نکلتے ہیں تو بھارتی فوج گولیاں چلاتی ہے، جہاں کرفیو ہو اور ادویات و کھانا نہ مل رہا ہو وہاں عوام باہر نکلنے پر مجبور ہوجاتے ہیں

Scroll To Top