ایم کیو ایم پاکستان اور لندن آمنے سامنے، ایم کیو ایم اپنے بانی کے خلاف سندھ اسمبلی میں قرار داد لے آئی

  • کنوینر ندیم نصرت نے رابطہ کمیٹی اور پارٹی تنظیمی ڈھانچے سمیت تمام شعبہ جات تحلیل کردیئے، اخلاقی جرات کا تقاضہ ہے کہ ارکان پارلیمنٹ استعفیٰ دیں، ندیم نصرت
  • ارکان پارلیمنٹ استعفیٰ دے کر ذاتی حیثیت میں الیکشن لڑیں اور جو ارکان پارلیمنٹ استعفے نہیں دیتے کارکنان اور ہمدرد ان سے تعلق ختم کردیں، ایم کیو ایم کنوینر
  • آپ ہمارا بلڈٹیسٹ ، طبی معائنہ،ایم آر آئی ، ایکسرے کروا لیں ہم لندن کے ساتھ رابطے میں نہیں : فاروق ستار،الطاف حسین پاکستان کا غدار ہے، اس کو سزائے موت دی جائے: سندھ اسمبلی میں پی ٹی آئی رکن خرم شیر زمان کا مطالبہ
  • ایم کیو ایم کے لندن میں مقیم دو رہنماو¿ں کہف الوریٰ اور شبیر قائم خانی کی وطن واپسی پر سربراہ ایم کیو ایم ڈاکٹر فاروق ستار سے ملاقات قیادت سنبھالنے پر اعتماد کا اظہار

downloadکراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)سندھ اسمبلی میں ملک کے خلاف اشتعال انگیز تقریر، نعرے بازی اور میڈیا ہاو¿سز پر حملے پر الطاف حسین کے خلاف مختلف جماعت سمیت ایم کیو ایم نے اپنے بانی کے خلاف قرارداد پیش کر دی، جس میںالطاف حسین کے خلاف آرٹیکل 6 کے اطلا ق کا مطالبا کیا گیا ۔ مختلف جماعتوں کی جانب سے پیش کی جانے والی قراردادیں متفقہ طور پر منظور کرلی گئیں۔کارروائی کے دوران پاکستان کے غداروں کےخلاف ایوان کی گیسٹ گیلری سے نعرے بازی کی گئی تاہم سپیکر نے مہمانوں کو نعرےبازی سے روک دیا۔ان قراردادوں پر اظہار خیال کے بعد ایوان نے متفقہ طور پر قراردادیں منظور کرلیں۔مذمتی قراردادوں پر اظہار خیال کرتے ہوئے ایم کیو ایم کے رو¿ف صدیقی نے کہا کہ وہ اسلام اور پاکستان پر کوئی سمجھوتا نہیں کرسکتے۔ایم کیو ایم کے فیصل سبزواری نے کہا کہ 22اگست کو جو ہوا وہ ایم کیو ایم کی بھوک ہڑتال کا نتیجہ نہیں تھا لیکن 22 اگست کے بعد مہاجروں کی پہچان پر بحث شروع ہوگئی، ہم اپنے معاملات میں بالکل واضح ہیں، ہم پر جو قرض ہے ہم نے وہ قرض اتارنے کے لئے انتہائی تلخ فیصلہ کیاہے۔ایک نجی ٹی وی چینل کے مطابق فاروق ستار نے بتایا کہ امریکی قونصل جنرل نے بھی ہم سے پوچھا تھا کہ لندن سے رابطہ ہے؟میں نے کہا کہ آپ ہمارا بلڈٹیسٹ اور طبی معائنہ کرالیں،ایم آر آئی کروا لیں ایکسرے کروا لیں آپکو یقین آجائے گا کہ ہم اب ان کے ساتھ نہیں ہیں۔23اگست کو ہم نے لندن سے مکمل طور پر اظہار لاتعلقی کر دیا تھا۔ان کا کہنا تھا کہ یہ دل کا فیصلہ ہے جس کا دل مانے وہ ہمارے ساتھ رہے ہم کسی کو زبردستی ساتھ نہیں رکھ سکتے۔ہم آج بھی اسی جذبے سے کام کریں گے جو 11 جون کو تھا۔22 اگست تک ایم کیو ایم کی پوزیشن بہت بہتر تھی۔ہم سب سمجھتے ہیں کہ 22 اگست کو جو ہوا وہ غلط تھا۔سندھ اسمبلی میں اس وقت با لکل خاموشی چھا گئی جب پی ٹی آئی کے رکن اسمبلی خرم شیر زمان نے ایم کیو ایم کے بانی الطاف حسین کیلئے سزائے موت کا مطالبہ کیا۔خرم شیر زمان نے اپنے خطاب میں کہا کہ الطاف حسین نے پاکستان سے غداری کی۔ اس نے اپنی تقاریر میں پاکستان کو توڑنے کیلئے بھارت اور اسرائیل سے مدد طلب کی۔یہ ملک دشمنی ہے۔ میں مطالبہ کرتا ہوں کہ اس کو آئین کے آرٹیکل 6کے تحت سزائے موت دی جائے۔جبکہگزشتہ دو ماہ سے لندن میں مقیم ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی کے ڈپٹی کنونیئر کہف الوریٰ اور رکن رابطہ کمیٹی شبیرقائم خانی وطن واپس پہنچ گئے، دونوں رہنماءگزشتہ دو ماہ سے لندن میں مقیم تھے تاہم 22 اگست کے بعد کچھ دنوں کےلئے امریکا جانے کی کوشش کی اور کوائف مکمل نہ ہونے پر ائیرپورٹ سے واپس لندن بے دخل کردیے گئے تھے۔دوسری جانب ایم کیوایم کے کنوینر ندیم نصرت نے رابطہ کمیٹی اور پارٹی تنظیمی ڈھانچے سمیت تمام شعبہ جات تحلیل کردیئے جب کہ ان کا کہنا ہے کہ اخلاقی جرات کا تقاضہ ہے کہ ارکان پارلیمنٹ استعفیٰ دیں۔ایم کیوایم لندن کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق رابطہ کمیٹی اور پارٹی تنظیمی ڈھانچے سمیت تمام شعبہ جات تحلیل کردیئے گئے ہیں جو نئے سرے سے تشکیل دیئے جائیں گے، نئی رابطہ کمیٹی اور تنظیمی ڈھانچے کی تشکیل کے اختیارات ندیم نصرت کو تفویض کردیئے گئے ہیں جب کہ متحدہ قائد نے فیصلوں کی توثیق بھی کردی ہے۔اعلامیہ کے مطابق ندیم نصرت نے کہا کہ ایم کیوایم قائد کے خلاف آرٹیکل 6 کا مطالبہ شرمناک ہے، چند ارکان تحریک بچانے کے نام پر وہ اقدام کررہے ہیں جو تحریک کے مفاد میں نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایم کیوایم کو ختم کرنے کی کوئی سازش کامیاب نہیں ہوگی، ایم کیوایم ایک ہی ہے، ایک تھی اور ایک ہی رہے گی۔ندیم نصرت کا کہنا تھا کہ اخلاقی جرات و شرافت کا تقاضہ ہے کہ ارکان پارلیمنٹ استعفیٰ دے کر ذاتی حیثیت میں الیکشن لڑیں اور جو ارکان پارلیمنٹ استعفے نہیں دیتے کارکنان اور ہمدرد ان سے تعلق ختم کردیں۔

Scroll To Top