کشمیر معاملے پر دو ٹوک موقف سے پیچھے نہیں ہٹیں گے،عمران خان

  • کشمیر عالمی سطح پر متنازعہ علاقہ ہے ،بھارت یکطرفہ فیصلہ نہیں کر سکتا،پاکستان نے اقوام متحدہ میں کشمیر کا مقدمہ بہترین انداز میں پیش کیا
  • دنیا کشمیر کے معاملے پر پاکستان کا موقف سن اور سمجھ رہی ہے، سنگین معاملے پر دوست ممالک کی حمایت پر شکر گزار ہیں، گفتگو

اسلام آباد (این این آئی)وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کشمیر کے معاملے پر دو ٹوک موقف سے پیچھے نہیں ہٹیں گے،کشمیر عالمی سطح پر متنازعہ علاقہ ہے ،بھارت یکطرفہ فیصلہ نہیں کر سکتا،کشمیر کے معاملے پر پاکستان سفارتی محاذ پر درست سمت میں آگے بڑھا ہے،سنگین معاملے پر پر دوست ممالک کی حمایت پر شکر گزار ہیں،پاکستان نے اقوام متحدہ میں کشمیر کا مقدمہ بہترین انداز میں پیش کیا،دنیا کشمیر کے معاملے پر پاکستان کا موقف سن اور سمجھ رہی ہے۔ہفتہ کو وزیراعظم عمران خان سے ڈاکٹر بابر اعوان نے ملاقات کی جس میں کشمیر سے متعلق عالمی صورت حال اور قانونی معاملات پر مشاورت پر بات چیت کی گئی ،ملکی تازہ سیاسی، قانونی اور آئینی امور پر بھی گفتگوکی گئی۔اس موقع پر وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان نے اقوام متحدہ میں کشمیر کا مقدمہ بہترین انداز میں پیش کیا،دنیا کشمیر کے معاملے پر پاکستان کا موقف سن اور سمجھ رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ کشمیر کے معاملے پر پاکستان سفارتی محاذ پر درست سمت میں آگے بڑھا ہے۔انہوں نے کہا کہ سنگین معاملے پر پر دوست ممالک کی حمایت پر شکر گزار ہیں ۔انہوں نے کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے گزشتہ روز تفصیلی بات ہوئی،امریکی صدر معاملے کا بغور جائزہ لے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں کرفیو، کریک ڈاو¿ن اور ممکنہ نسل کشی کے خدشے سے آگاہ کر دیا ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ کشمیر کے معاملے پر دو ٹوک موقف سے پیچھے نہیں ہٹیں گے ۔انہوں نے کہا کہ کشمیر عالمی سطح پر متنازعہ علاقہ ہے ،بھارت یکطرفہ فیصلہ نہیں کر سکتا۔بابر اعوان نے کشمیر کاز کے لئے وزیراعظم کے دلیرانہ اقدامات کو سراہا۔بابر اعوان نے کہا کہ کشمیر کا معاملہ عالمی سطح پر لے جانا پاکستان کی بڑی کامیابی ہے۔انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ میں بھارت کے بیانیہ کو شکست ہوئی،عالمی فورم پر اس شرمندگی کے خلاف خود بھارت سے آوازیں اٹھ رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ بے جے پی حکومت کو کشمیر کا معاملہ اقوام عالم تک پہنچنے پر شدید تنقید کا سامنا ہے۔

Scroll To Top