مودی ہٹلر بننا چاہتا ہے، کشمیر آزاد ہوگا، کوئی سمجھوتہ نہیں، عمران خان

    اسلام آباد:۔ وزیر اعظم عمران خان قومی ترقیاتی کونسل اجلاس کی صدارت کر رہے ہیں، آرمی چیف جنرل قمر جاویدباجوہ بھی نمایاں ہیں
  • یہ رائے عامہ کی جنگ ہے، ہم نے یہ جنگ جیتنی ہے، بھارت کشمیر سے توجہ ہٹانے کیلئے کچھ بھی کرسکتا ہے، نہتے کشمیریوں پر بڑھتے بھارتی مظالم سے اقوام عالم کو آگاہ کریں گے،دنیا کو بتائیں گے کہ مودی سرکار کشمیریوں کی نسل کشی کررہی ہے،صحافیوں سے گفتگو
  • دنیا منتظر ہے کرفیو ہٹے تو دیکھے کہ مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں سے کیا ہورہا ہے،بی جے پی حکومت کا خیال ہے کہ فوجی قوت سے وہ تحریک آزادی روک سکتی ہے؟ مگر کشمیریوںکی جدوجہد زور پکڑے گی،ٹوئٹرپیغام

اسلام آباد (این این آئی)وزیراعظم عمران خان نے واضح کیا ہے کہ ہم جنگ نہیں چاہتے تاہم بھارت نے جنگ مسلط کی تومنہ توڑ جواب دیں گے،یہ رائے عامہ کی جنگ ہے، ہم نے یہ جنگ جیتنی ہے، بھارت کشمیر سے توجہ ہٹانے کیلئے کچھ بھی کرسکتا ہے،نہتے کشمیریوں پر بڑھتے بھارتی مظالم سے اقوام عالم کو آگاہ کریں گے۔سینئر صحافیوں سے گفتگو میں انہوںنے کہاکہ یہ رائے عامہ کی جنگ ہے، ہم نے یہ جنگ جیتنی ہے، بھارت کشمیر سے توجہ ہٹانے کیلئے کچھ بھی کرسکتا ہے۔عمران خان نے کہا کہ نہتے کشمیریوں پر بڑھتے بھارتی مظالم سے اقوام عالم کو آگاہ کریں گے، بھارت مقبوضہ وادی میں نہتے کشمیریوں پر مظالم کررہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم دنیا کو بتائیں گے کہ مودی سرکار کشمیریوں کی نسل کشی کررہی ہے، بھارت مقبوضہ کشمیر کا جغرافیہ بدلنا چاہتا ہے، مودی سرکار ہٹلر جیسی سوچ رکھتی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کشمیریوں کی سفارتی، سیاسی اوراخلاقی حمایت جاری رکھیں گے۔ انہوںنے واضح کیا کہ ہم جنگ نہیں چاہتے، بھارت نے جنگ مسلط کی تو منہ توڑ جواب دیں گے، یہ رائے عامہ کی جنگ ہے، ہم نے یہ جنگ جیتنی ہے۔عمران خان نے خدشہ ظاہر کیا کہ بھارت کشمیر سے توجہ ہٹانے کیلئے کچھ بھی کرسکتا ہے، میں نے نریندرمودی سے ہمیشہ امن کی بات کی۔علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر جاری پیغام میں کہا کہ پوری دنیا منتظر ہے کرفیو ہٹے تو دیکھے کہ مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں سے کیا ہورہا ہے۔عمران خان نے کہا کہ کیا بی جے پی حکومت کا خیال ہے کہ فوجی قوت سے وہ تحریک آزادی روک سکتی ہے؟ مقبوضہ کشمیر میں فوجی قوت کے استعمال سے تحریک آزادی زور پکڑےگی۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ یہ بات صاف ہے کہ عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی نسل کشی کا نظارہ کرے گی۔ سوال یہ ہے کہ کیا ہم اس بار بی جے پی سرکار کے لبادے میں فسطائیت کا ایک اور مظاہرہ دیکھیں گے یا پھر عالمی برادری میں ایسا ہونے سے روکنے کی اخلاقی جرات ہوگی؟۔

Scroll To Top