عمران خان کا طیب اردگان، مہاتیر محمد کو ٹیلیفون: مقبوضہ کشمیر کے پر امن حل بارے تعاون کی یقین دہانی

  • مقبوضہ کشمیر کی حیثیت تبدیلی کا بھارتی اعلان سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے، بھارت کا غیر قانونی اقدام خطے کے امن و سلامتی کو تباہ کردے گا، وزیر اعظم عمران خان
  • مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کا قریب سے جائزہ لے رہے ہےں ، باخبر رہنے کےساتھ ساتھ پاکستان سے رابطے میں رہیں گے، ڈاکٹر مہاتیر محمد،ترک صدر طیب اردگان کا مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر وزیراعظم عمران خان کی تشویش سے اتفاق

اسلام آباد(صباح نیوز) وزیراعظم عمران خان نے مقبوضہ کشمیر کی حیثیت کی تبدیلی کے بھارتی اعلان کے تناظر میں اپنے ملائیشین ہم منصب ڈاکٹر مہا تیر محمد سے رابطہ کیاہے۔وزیراعظم عمران خان نے ملائشین وزیراعظم مہاتیر محمد کو ٹیلی فون کرکے مقبوضہ کشمیر میں حالیہ تبدیلیوں سے آگاہ کیا۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کی حیثیت تبدیلی کا بھارتی اعلان سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے، بھارت کا یہ غیر قانونی اقدام خطے کے امن و سلامتی کو تباہ کردے گا۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ بھارت کا یہ اقدام ایٹمی صلاحیت کے حامل ہمسائیوں کے درمیان تعلقات کو مزید خراب کرے گا۔اس موقع پر مہاتیر محمد نے کہا کہ ملائشیا مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کا قریب سے جائزہ لے رہا ہے اور اس صورتحال سے باخبر رہنے کے ساتھ ساتھ پاکستان سے رابطے میں رہے گا۔دونوں وزرائے اعظم نے امریکہ میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اجلاس کی سائڈلائن پر ملاقات پر اتفاق بھی کیا ہے۔ ادھر وزیراعظم عمران خان نے ترک صدر رجیب طیب اردوان کو ٹیلی فون کرکے مقبوضہ کشمیر کی تازہ صورتحال سے آگاہ کیا۔ وزیراعظم نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر کی حیثیت تبدیل کرنے کے خطے کے امن و سلامتی پر سنگین اثرات مرتب ہوں گے ۔ پاکستان کشمیریوں کی منصفانہ جدوجہد کی سفارتی ،اخلاقی اور سیاسی حمایت جاری رکھے گا۔ترک صدر نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر وزیراعظم کی تشویش سے اتفاق کیا ۔ صدر رجب طب اردوان نے مسئلہ کشمیرپر بھرپور حمایت کی یقین دہانی کرائی

Scroll To Top