شاہد خاقان عباسی گرفتار، مفتاح اسماعیل کی تلاش جاری

  • سابق وزیر اعظم کو ٹھوکر نیاز بیگ کے قریب اس وقت گرفتار کیا گیا جب وہ احسن اقبال اور مریم اورنگزیب کے ہمراہ لاہور آ رہے تھے، یاد رہے کہ شاہد خاقان عباسی کو ایل این جی کیس میں نیب نے گزشتہ روز طلب کر رکھا تھا لیکن سیاسی مصروفیات کی وجہ سے انہوں نے پیش ہونے سے معذرت کی تھی
  • سابق سیکٹری پٹرولیم عابد سعید شاہد خاقان عباسی کیخلاف وعدہ معاف گواہ بن گئے،سابق وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کی گرفتاری کیلئے نیب ٹیم کا ان کے گھر پر چھاپہ، سابق ایم ڈی پی ایس او عمران الحق کے وارنٹ گرفتاری جاری

لاہور( این این آئی)قومی احتساب بیورو (نیب ) لاہور نے سابق وزیر اعظم و مسلم لیگ (ن) کے سینئر نائب صدر شاہد خاقان عباسی کو لاہور سے گرفتار کرلیا،شاہد خاقان عباسی کو سابق وزیر پیٹرولیم و قدرتی وسائل ایل این جی مبینہ کرپشن سکینڈل میں گرفتار کیا گیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی پارٹی رہنماﺅں احسن اقبال اور مریم اورنگزیب کے ہمراہ اسلام آباد سے لاہور آرہے تھے کہ ٹھوکر نیاز بیگ کے قریب نیب کے اہلکاروںنے رینجرز اور پنجاب پولیس کے ہمراہ ان کی گاڑی کو روکا ۔ اس موقع پرانہیں گرفتار ی کےلئے گاڑی سے نیچے آنے کےلئے کہا گیا تاہم شاہد خاقان عباسی نے وارنٹ گرفتاری دکھانے تک گاڑی سے نیچے اترنے اور گرفتاری دینے سے انکار کر دیا ۔ بعد ازاں انہیں وارنٹ گرفتاری کی کاپی دکھائی گئی ،شاہد خاقان عباسی اصل تصدیق شدہ وارنٹ گرفتاری دکھانے کےلئے بضد رہے تاہم کچھ دیر بعد انہوں نے گرفتاری دیدی ۔ نیب کے اہلکار شاہد خاقان عباسی کو وہیں سے نیب لاہور کے ہیڈ کوارٹر لے گئے جہاںڈاکٹروں کی ٹیم نے ان کا چیک اپ کیا ۔ ذرائع کے مطابق شاہد خاقان عباسی کو آج جمعہ کے روز راہداری ریمانڈ کے بعد راولپنڈی لے جایا جائے گا ۔ایل این جی کیس میں شاہد خاقان عباسی کو8مرتبہ طلبی کے نوٹس جاری کیے گئے جس میںسے وہ 5نوٹسز پر تفتیش کے لیے پیش ہوئے۔نیب کی جانب سے جاری کیے گئے نوٹس میں شاہد خاقان عباسی کو ایل این جی ٹرمینل کیس میں سابق وزیر پیٹرولیم اور قدرتی وسائل کی حیثیت سے 18جولائی کو تفتیشی افسر ملک زبیر احمد کے سامنے پیش ہونے کی ہدایت کی تھی تاہم انہوں نے سیاسی مصروفیات کی وجہ سے پیش ہونے سے معذرت کی تھی ۔شاہد خاقان عباسی اور دیگر رہنما پارٹی صدر محمد شہباز شریف کے ہمراہ پارٹی کے سیکرٹریٹ ماڈل ٹاﺅن میں پریس کانفرنس کےلئے اسلام آباد سے لاہور آرہے تھے تاہم نیب نے شاہد خاقان عباسی کو گرفتار کرلیا ۔
ادھر
پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما مفتاح اسماعیل نیب کے چھاپے سے قبل ہی گھر سے روانہ ہو گئے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے مفتاح اسماعیل کے گھر کے باہر سادہ لباس میں افراد موجود ہیں۔مفتاح اسماعیل کے گھر کے باہر سرکاری گاڑیوں کی نقل و حمل جاری ہے۔ تاہم مفتاح اسماعیل نے گھر پر موجود نہیں ہیں۔مفتاح اسماعیل نے اپنا فون بھی بند کر دیا ہے۔مفتاح اسماعیل کے ملازمین کا کہنا ہے کہ ان سے کوئی رابطہ نہیں ہو رہا۔ مفتاح اسماعیل 3 بجے کے قریب گھر سے روانہ ہوئے تھے۔میڈیا رپورٹس میں مزید بتایا ہے سباق سیکٹری پٹرولین عابد سعید وعدہ معاف گواہ بنے،عابد سعید کی چئیرمین نیب سے بھی ملاقات ہوئی تھی،چئیرمین نیب نے عابد سعید کے وعدہ معاف گواہ بننے کی منظوری دی۔خیال رہے حتساب بیورو (نیب) نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے بعد اب دو مزید افراد کو گرفتار کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ نیب نے سابق وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل اور سابق ایم ڈی پی ایس او عمران الحق کو بھی گرفتار کرنے کا فیصلہ کیا۔ جس کے تحت نیب کی جانب سے دونوں رہنماو¿ں کے وارنٹ گرفتاری بھی جاری کر دئے گئے ہیں۔ نیب کی ٹیم مفتاح اسماعیل اور عمران الحق کی گرفتاری کے لیے کارروائی کرے گی۔یاد رہے کہ اب سے کچھ دیر قبل نیب نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو بھی گرفتار کیا تھا۔ شاہد خاقان عباسی کا ریمانڈ حاصل کرنے کے بعد انہیں نیب راولپنڈی منتقل کیا جائے گا۔ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو لاہور کے ٹول پلازہ سے گرفتار کر لیا گیا۔ نیب نے آج سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو طلب کر رکھا تھا لیکن انہوں نے نیب کے سامنے پیش ہونے سے معذرت کر لی تھی۔نیب راولپنڈی نے شاہد خاقان عباسی کو ایل این جی ٹرمینل کا غیر قانونی ٹھیکہ دینے کے الزام میں تفتیش کے لیے طلب کیا تھا۔

Scroll To Top