اقتصادی رابطہ کمیٹی اجلاس:گندم اور آٹے کی برآمد پر پابندی ، افغانستان کو بھی آٹے کی ترسیل بند

  • مشیر خزانہ حفیظ شیخ کی صدارت میں ہونے والے اجلاس میں ملک میں آٹے کی قیمتوں کے استحکام اور وافر دستیابی کو یقینی بنانے کے لئے بڑا فیصلہ
  • درآمدی کھاد کی قیمت 1800 روپے فی بوری ، تمباکو کی کم ازکم امدادی قیمت مقررکرنے سمیت اسپورٹس یوٹیلٹی وہیکلز کی درآمد پر11 فیصد ایڈیشنل کسٹمز ڈیوٹی عائد

اسلام آباد(صباح نیوز) اقتصادی رابطہ کمیٹی نے گندم اورآٹے کی برآمد پر پابندی عائد کردی۔ بدھ کو مشیرخزانہ حفیظ شیخ کی زیرصدارت کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس ہوا، ملک میں آٹے کی قیمتوں کے استحکام اور وافر دستیابی کو یقینی بنانے کے لئے فیصلہ کرتے ہوئے گندم اورآٹے کی برآمد پر پابندی عائد کردی گئی۔ پابندی لاگو ہونے کے بعد افغانستان کو بھی آٹے کی ترسیل بند کردی گئی ۔دوسری جانب اسی سی سی نے غیرممنوعہ ایلومینیم اسکریپ کی درآمد کی اجازت دے دی۔ اجلاس میں درآمدی کھاد کی قیمت 1800 روپے فی بوری مقرر کرنے، رواں مالی سال کے لئے تمباکو کی کم ازکم امدادی قیمت مقررکرنے سمیت اسپورٹس یوٹیلٹی وہیکلز کی درآمد پر11 فیصد ایڈیشنل کسٹمز ڈیوٹی عائد کرنے کی منظوری بھی دی گئی۔واضح رہے کہ پنجاب حکومت نے بھی وفاق کوایکسپورٹ پرپابندی کی سفارش کی تھی

Scroll To Top