فائنل کی ٹکٹیں لاکھوں روپے میں فروخت

آئی سی سی کی وارننگ کے باوجود شائقین نے بلیک میں دھڑا دھڑٹکٹ خریدے (فوٹو: فائل)

لندن:  انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے درمیان ورلڈ کپ فائنل کی ٹکٹیں لاکھوں روپے میں فروخت ہوئیں۔

آئی سی سی کی وارننگ کے باوجود شائقین نے بلیک میں دھڑا دھڑ ٹکٹ خریدے، ورلڈ کپ منیجنگ ڈائریکٹر اسٹیو ایلورتھی نے کہا تھا کہ جس نے غیرتصدیق شدہ آن لائن پلیٹ فارم سے ٹکٹ خریدی اسے اسٹیڈیم میں داخل نہیں ہونے دیا جائے گا۔

قبل ازیں آئی سی سی نے خبردار کیا تھا کہ آفیشل ری سیل پلیٹ فارم کے علاوہ کسی اور جگہ سے ٹکٹ خریدے گئے تو وہ منسوخ کردیے جائیں گے، مگر یہ وارننگ بھی شائقین کو مہنگے داموں ٹکٹ خریدنے سے باز نہ رکھ سکی۔

مختلف ری سیلر ویب سائٹ پر ٹکٹیں اپنے اصل دام سے کہیں زیادہ مہنگی فروخت ہوئیں، کامپٹن اسٹینڈ کی ایک ٹکٹ کے لیے 14 لاکھ روپے سے زائد کی ڈیمانڈ کی گئی جبکہ اصل قیمت 25 ہزار کے قریب تھی۔ اسی طرح دیگر پیکیجز ڈھائی سے ساڑھے 3 لاکھ روپے میں فروخت کے لیے پیش کیے گئے۔

آئی سی سی کے ورلڈ کپ مینجنگ ڈائریکٹر اسٹیو ایلورتھی پہلے ہی خبردار کرچکے تھے کہ شائقین کسی تھرڈ پارٹی ری سیل پلیٹ فارم سے ٹکٹ نہ خریدیں، ٹکٹوں کی ڈیمانڈ بہت زیادہ ہونے کے باوجود ہم نے بڑی محنت سے اس بات کو یقینی بنانا چاہا کہ صرف حقیقی شائقین ہی مناسب قیمت پر ٹکٹ خریدیں، اس لیے سیکنڈری ٹکٹنگ ویب سائٹ پر یہ ٹکٹ فروخت ہوتے دیکھ کر ہمیں کافی مایوسی ہوئی۔

یاد رہے کہ لارڈز میں شیڈول فائنل کے لیے 4 سیکشن پلاٹینیم، گولڈ، سلور اور برانز میںٹکٹ فروخت کیے گئے،ان کی قیمت 95 سے 395 پاؤنڈ تک تھی۔

Scroll To Top