ٹوئیٹر کالم۔غلام اکبر۔۔10-07-2019

میں نے یہ تو سنا تھا کہ قیدی جیلوں سے بھاگتے ہیں مگر پاگل خانے سے لوگ شاید پہلی دفعہ بھاگے ہیں اور سب ایک ہی انداز سے جلسوں میں چیخ و پکار کرتے دکھائی دیئے۔میں نے احسن اقبال کے منہ سے جھاگ نکلتے بھی دیکھی۔آپ نے دیکھی؟
8جولائی 2019

اگر صحافی یا خودساز دانشور ان قومی مجرموں کے آلہ کار پائے جائیں تو انہیں عبرت کا نشان بنایا جانا چاہئے۔قلم کی حرمت بیچنے والوں سے بڑے مجرم اگر ہیں تو وہ باریش شیطان ہیں جو اپنی پہچان اسلام سے کرا کر قادر ِمطلق سے جھوٹ بولنے کی کوشش کرتے ہیں میرا اشارہ مولانا فضل کی طرف ہرگز نہیں۔۔۔
8جولائی 2019

کل میں نے ہائی کورٹ کے ایک بہت ہی بڑے اور “متقی صورت”جج کو سوالوں کے جواب میں جو کچھ کہتے سنا اس سے مجھے یقین ہو گیا کہ اعلیٰ عدلیہ میں بھی مجرموں کے لئے نرم گوشہ رکھنے والے جزیرے واقعی موجود ہیں۔ ۔۔
9جولائی 2019

جسٹس نے کہا کہ سووموٹو کی ضرورت نہیں۔چونکہ جج ارشد ملک نے انکار کیا ہے اس لئے فرانزک ٹسٹ کے ڈریعے پتہ لگایا جائے کہ آواز ان کی ہے کہ نہیں۔۔۔
محترم جسٹس صاحب جج ارشد ملک نے یہ کہا ہے کہ گفتگو کو سیاق و سباق سے ہٹ کر توڑا مروڑاگیا ہے چنانچہ معلوم یہ کرنا ہے کہ ویڈیو ڈاکٹرڈ ہے یا اصلی۔۔۔
9جولائی 2019

Scroll To Top