منشیات کیس: راناثنا اللہ کےخلاف تمام ثبوت عدالت میں پیش کریں گے :شہریارآفریدی

  • جب حکمران اورایوانوں میں بیٹھنے والے خود ہی ان کاموں میں ملوث ہوں تو قوموں کی عزتوں کا جنازہ اٹھتا ہے
  • پورے پاکستان میں بڑے مگرمچھوں کو ٹارگٹ کیا جارہا ہے، ہم کسی کونہیں چھوڑیں گے ¾ وزیر مملکت برائے نارکورٹکس کنٹرول کی ڈی جی اے این ایف میجر جنرل عارف کے ہمراہ پریس کانفرنس

اسلام آباد(صباح نیوز) وزیر مملکت برائے نارکورٹکس کنٹرول شہریارآفریدی نے کہا کہ راناثنا اللہ سے متعلق ہمارے پاس تمام ثبوت موجود ہیں جنہیں عدالت میں پیش کیا جائے گا،رانا ثنا اللہ کی گاڑی کو تین ہفتوں تک مانیٹر کیا گیا، رانا ثنا اللہ سے نکلی ہیروئن فیصل آباد سے لاہور اور پھر بیرون ممالک جانا تھی ،رانا ثنااللہ کیلئے آواز اٹھانے والوں کو پیغام ہے کہ بہت کچھ سامنے آئے گا۔اسلام آباد میں ڈی جی اینٹی نارکوٹکس فورس میجر جنرل عارف کے ہمراہ پریس کانفرنس کے دوران وزیر برائے انسداد منشیات شہریار آفریدی نے کہا کہ منشیات کی وجہ سے پاکستان کا وقارخراب ہوا، جب حکمران اورایوانوں میں بیٹھنے والے خود ہی ان کاموں میں ملوث ہوں تو قوموں کی عزتوں کا جنازہ اٹھتا ہے۔شہریارآفریدی نے کہا کہ منشیات کا گھناونا کاروبارکرنے والوں کے ساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹیں گے، پورے پاکستان میں بڑے مگرمچھوں کو ٹارگٹ کیا جارہا ہے، ہم کسی کونہیں چھوڑیں گے، نئے پاکستان میں ہم ان لوگوں کومثال بنائیں گے، تمام ثبوت کورٹ آف لا میں پیش کئے جائیں گے، کوئی قانون سے بالاتر نہیں، میں بھی نہیں، ہماری کسی سے کوئی ذاتی دشمنی نہیں، اگراس میں تمام نام دے دئیے جائیں توان کو جانوں کی کون ضمانت دے۔ رکن اسمبلی سمیت کوئی قانون سے بالاتر نہیں، اب کوئی نہیں بچے گا، وزیراعظم کا وژن زیرو ٹالرنس ہے، شہریار آفریدی نے کہا کہ 1200 افراد منشیات فروشی میں گرفتارہوئے ہیں کیا وہ پاکستانی نہیں، فیصل آباد میں ملزم گرفتار ہوا، اس کی لیڈ پررانا ثنا اللہ کی گاڑی کو تین ہفتوں تک مانیٹر کیا گیا، رانا ثنا اللہ سے نکلی ہیروئن فیصل آباد سے لاہور اور پھر بیرون ممالک جانا تھی۔ 15 کلو ہیروئن نہیں، پاکستان کی سالمیت کا سوال ہے۔ ویڈیو اور تصاویر کا ریکارڈ موجود ہے۔شہریار آفریدی کا کہنا تھا طاقتور لوگ ملوث نہ ہوں تو یہ کام چل ہی نہیں سکتا، بڑے لوگوں کو ناکوں پر بھی نہیں روکا جاتا، منشیات کی وجہ سے ملکی تاثر خراب ہوا، 3 بار رانا ثنااللہ کے ساتھ خواتین تھیں، انہیں روکا نہیں گیا، رانا ثنااللہ کی گاڑی کی نقل و حرکت بھی پیش کی جائے گی، کسی سے کوئی ذاتی دشمنی نہیں، کراچی میں آپریشن شروع کیا تو شروع میں کچھ آوازیں آئیں، آج کراچی میں امن اومان ہے، آج زیرو ٹالرنس ہے، بڑے بڑے مگر مچھوں کو مثال بنایا جائے گا۔ راناثنااللہ سے متعلق ہمارے پاس تمام ثبوت موجود ہیں جنہیں عدالت میں پیش کیا جائے گا، انہوں نے کہا کہ فیصل آباد میں ایک گرفتاری ہوئی جس میں تین مہینے تک تفتیش ہوئی، اگر آج ہم ساری تفصیل دے دیں گے تو ان سے جڑے نام سب بھاگ جائیں گے اور جو لوگ رانا ثنااللہ کے لیے آواز اٹھا رہے ہیں وہ ان 1200 لوگوں کے بارے کیوں نہیں بولے جو گرفتار ہیں، لوگ کہتے ہیں کہ ریمانڈ کیوں نہیں لیا؟ ہمارے پاس سب کچھ موجود ہے،۔شہریار آفریدی کا کا کہنا تھا کہ یہ مقامی اور بین الاقوامی سطح کا بہت بڑا ریکٹ ہے، منشیا ت کا ناسور ملک کو تباہ کررہا ہے، کوئی قانون سے بالاتر نہیں اور کوئی نہیں بچے گا، جو بھی اس ملک کے ساتھ خیانت کرے گا اسے ہم مثال بنائیں گے ، پورے پاکستان میں اے این ایف کے صرف 29 پولیس اسٹیشن ہیں، دنیا کے تمام اسٹیک ہولڈرز سے مل کر منشیات کے خلاف کام کررہے ہیں۔شہریار آفریدی نے کہا کہ رانا ثنااللہ کے کیس میں گواہ بہت اہم ہیں۔ ہمارے پاس ثبوت موجود ہیں ہم عدالت میں تمام ثبوت اور گواہ عدالت میں پیش کرینگے۔ بہت سارے سوالوں کا ابھی ہم جواب نہیں دیں گے مگر کورٹ میں بتائیں گے۔ڈی جی اے این ایف میجر جنرل عارف نے کانفرنس میں کہا کہ منشیات معاشرے کے لیے بڑا ناسور ہیں۔ اے این ایف نے بڑی تعداد میں منشیات کو ضبط کیاہے۔ 95فیصد افراد کو ہم نے سزائیں دلوائی ہیں۔ ہم جس کو بھی پکڑا اسکو ثبوت کے ساتھ پکڑا ہے۔انہوں نے کہا کہ منشیات تعلیمی اداروں تک پھیل رہی ہے اسکا انسداد بہت ضروری ہے ۔ ہم عوام کی مدد کے بغیر یہ جنگ نہیں جیت سکتے۔رانا ثنا اللہ کے ریمانڈ سے متعلق سوال کے جواب میں انسداد منشیات فورس کے سربراہ نے کہا کہ انکا ریمانڈ لیا جاتا تو کہا جاتا کہ تشدد سے منوایا جارہاہے ، جب آپ کے پاس تمام ثبوت ہوں توپھرضروری نہیں کہ جسمانی ریمانڈ لیا جائے، جسمانی ریمانڈ لیتے تولوگ کہتے کہ آپ اسے منوارہے ہیں۔جولوگ بھی منشیات میں ملوث ہیں ان کے خلاف کارروائی ہوگی، کچھ چیزیں ہم بتانہیں سکتے

Scroll To Top