ٹوئیٹر کالم برائے غلام اکبر 17-06-2019

ون نیشن موومنٹ کے نام سے ایک تنظیم میں نے 2016 میں رجسٹر کرائی تھی۔تب 2019 کا نقشہ میرے تصور میں یہ نہیں تھا۔ آج اس تنظیم کا بنیادی مقصد زیادہ حقیقی بن گیا ہے۔میں اس مقصد کوایک پرچم بنا کر آگے بڑھنا چاہتاہوں۔کیا آپ میرا ساتھ دیں گے؟مقصدہے
ایک قوم ایک ہی ملک اور ایک ہی لیڈر”۔
15-06-2019
۔۔۔۔۔۔۔
ایک معبود
ایک ہادی
ایک قرآن
چنانچہ
قوم بھی ایک
ملک بھی ایک
لیڈر بھی ایک
اس بوسیدہ نظام کو تاریخ کے کباڑخانے میں پھینک دو۔ریفرینڈم کے ذریعےایسا نظام لاو¿ جو ریاست مدینہ کی یاد تازہ کردے۔چین کی مثال سامنے ہے۔
15-06-2019

عمران خان کی تحریک انصاف کا المیہ بھی وہی ہے جو قائد کی مسلم لیگ کا تھا۔پہاڑ جیسی شخصیت کے سامنے سب بونے لگتے ہیں۔اور بونوں کے درمیان جانشینی کے لئے مقابلہ ہمیشہ فواد چودھری جیسے لوگوں کو سامنے لاتا ہے جو خبروں میں رہنے کے لئے ہر قسم کے ہتھکنڈوں اوربیانات سے کام لیتے ہیں۔
15-06-2019
۔۔۔۔۔۔۔
معلوم نہیں کہ یہ ہندی دیومالا ہے یا یونانی مگر وہ ایک راجکمار ہے جس کے سینے میں رعایا کا درد ابلا پڑ رہا ہے اور وہ ایک راجکماری ہے جو بھوکی جنتا کی بھوک خود محسوس کر کر کے خود نڈھال ہو رہی ہے۔ دونوں کو رعایا کی بھوک پیاس ایک دوسرے کی طرف کھینچ رہی ہے۔ یوں سمجھیں کہ کہانی شروع ہے۔
15-06-2019

۔۔۔۔۔۔۔

Scroll To Top