سرحد پار سے دہشتگردی کا خطرہ ، قبائلی اضلاع کی 16 نشستوں پر انتخابات موخر

  • انتخابات اب 2 جولائی کی بجائے 20 جولائی کو ہوں گے، چیف الیکشن کمشنر کی زیر صدارت اجلاس میں فیصلہ
  • سیکورٹی اداروں نے یقین دہانی کرائی ہے 18 دنوں میں حالات ٹھیک ہو جائیں گے،بیلٹ پیپرز کی چھپائی آخری دنوں میں کریں گے،سیکرٹری الیکشن کمیشن بابر یعقوب کی غیر رسمی گفتگو

اسلام آباد (این این آئی)سرحد پار سے دہشتگردی کے خطرے کے پیش نظر الیکشن کمیشن نے قبائلی اضلاع کی 16 نشستوں پر انتخابات 18 روز کےلئے موخر کردئیے، انتخابات اب 2 جولائی کی بجائے 20 جولائی کو ہوں گے۔ بدھ کو قبائلی اضلاع کی 16 نشستوں پر انتخاب ملتوی کرنے کے حوالے سے چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں الیکشن کمیشن میں اہم اجلاس ہوا۔خیبر پختونخواہ حکومت کیجانب سے الیکشن کمیشن کو قبائلی اضلاع میں انتخابات 20 دن تک ملتوی کرنے کی درخواست پر ہونے والے اجلاس میں ممبران الیکشن کمیشن، سیکرٹری الیکشن کمیشن سمیت خیبر پختونخواہ حکومت کے نمائندے شریک ہوئے۔ اجلاس میں چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا، حکام وزارت داخلہ اور صوبائی الیکشن کمشنر ، سیکریٹری وزارت داخلہ اعظم خان، بریگیڈیئر کاشف، کرنل وسیم، لیفٹیننٹ کرنل ریحان بھی اجلاس میں شریک ہوئے جبکہ متعلقہ حکام نے قبائلی اضلاع میں ہونے والی دہشت گردی پر بریفنگ دی۔ اجلاس میں الیکشن کمیشن نے باہمی مشاورت سے قبائلی اضلاع میں انتخابات ملتوی کر دیے،، اب قبائلی اضلاع کی 16 صوبائی نشستوں پر انتخابات 2 جولائی کی بجائے 20 جولائی کو ہونگے۔ الیکشن کمیشن نے خیبر پختونخواہ حکومت کی انتخابات ملتوی کرنے کی درخواست منظور کرتے ہوئے قبائلی اضلاع کی 16 صوبائی نشستوں پر 18 دن کیلئے انتخابات ملتوی کردئیے۔سیکرٹری الیکشن کمیشن بابر یعقوب نے صحافیوں سے غیررسمی گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ سیکورٹی اداروں کی بریفنگ پر الیکشن کی تاریخ میں توسیع کی گئی،سیکورٹی اداروں نے یقین دہانی کرائی ہے کہ 18 دنوں میں حالات ٹھیک ہو جائیں گے۔سیکرٹری الیکشن کمیشن نے کہاکہ بیلٹ پیپرز کی چھپائی آخری دنوں میں کریں گے۔بابر یعقوب نے بتایا کہ امن و امان کی صورتحال پر سیکورٹی اداروں نے تفصیلی بریفنگ دی،بریفنگ میں بتایا گیا کہ امیدواروں اور سیاسی شخصیات پر حملوں کے خدشات ہیں۔سیکرٹری الیکشن کمیشن نے کہاکہ بریفنگ میں قبائلی اضلاع میں اب تک ہونے والے حملوں اور واقعات کی تفصیلات پیش کی گئیں ۔ انہوںنے کہاکہ تمام 16 صوبائی حلقوں میں انتخابات ایک ہی وقت میں کرائے جائیں گے،کسی ایک حلقے میں الیکشن ملتوی کرنے پر اتفاق نہیں ہوا۔

Scroll To Top