دو طاقتور قانو ن کے شکنجے میں :قانون کی بالا دستی ایسے ہی آگے بڑھے گی،فردوس عاشق اعوان

  • کوئی ٹولہ جمہوریت کا راگ الاپ کر غیر قانونی اثاثوں کو تحفظ نہیں دے سکے گا،موجودہ بجٹ اداروں اور حکومتوں کے اندر جو غیر ضروری اخراجا ت کو کم کرےگا
  • بجٹ کی آڑ میں کسی کو منافع خوری کی اجازت نہیں دی جائے گی ،معیشت جلد اپنے پاو¿ں پر کھڑی ہو گی،مولانا فضل الرحمن اپنی نگاہیں اسلام آباد کی بجائے اسلام پر رکھیں، میڈیا سے بات چیت

اسلام آباد (این این آئی)معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ دو طاقتور قانو ن کے شکنجے میں آئے ،ملک میں یکساں قانون وزیراعظم عمران خان کا وژن ہے، قانون کی بالا دستی ایسے ہی آگے چلے گی، کوئی ٹولہ جمہوریت کا راگ الاپ کر غیر قانونی اثاثوں کو تحفظ نہیں دے سکے گا،موجودہ بجٹ اداروں اور حکومتوں کے اندر جو غیر ضروری اخراجا ت کو کم کرےگا،بجٹ کی آڑ میں کسی کو منافع خوری کی اجازت نہیں دی جائے گی ،جلد معیشت اپنے پاو¿ں پر کھڑی ہو گی،مولانا فضل الرحمن اپنی نگاہیں اسلام آباد کی بجائے اسلام پر رکھیں۔ منگل کو میڈیا سے بات چیت کے دور ان وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے سابق صدر آصف علی زر داری اور پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز کی گرفتاری پر کہاکہ قوم کو قانون کی بالادستی پر مبارکباد پیش کرتی ہوں۔ انہوںنے کہاکہ ستر سال سے چند لوگوں نے قانون کو یرغمال بنایا ہوا تھا، عمران خان نے بتایا کہ قانون سب کےلئے یکساں اطلاق ہو گا۔ انہوںنے کہاکہ دو طاقت ور لوگوں کو قانون میں آنا آئین کی بالادستی ہے ۔انہوںنے کہاکہ تمام فیصلے قانون اور آئین کے مطابق کئے جارہے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ دو بڑی شخصیات کا قانون کے تابع آنا مثبت پیشرفت ہے،ماضی میں حکومتوں نے قانون کی اپنی مرضی کی تشریح کی۔ انہوںنے کہاکہ عدالتوں نے اپنی آزادی اور خودمختاری کر کے عوام کا دل جیت لئے، عمران خان جس خواب کی تعبیر کےلئے نکلے تھے وہ پورا ہوا۔ انہوںنے کہاکہ طاقتور قانو ن کے شکنجے میں آئے ، قانون کی بالا دستی ایسے ہی آگے چلے گی۔فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ جو ٹولہ پارلیمنٹ میں اپنے اثاثوں کو بچانے کےلئے جمہوریت کا دعوے کرتا تھا،وہ صرف خود کو بچانا چاہتے تھے۔ انہوںنے کہاکہ پورے ملک میں قانون کی بالادستی اور یکساں قانون ہی رائج ہو گا۔ انہوںنے کہاکہ کرپٹ میں ملوث جماعتیں اور ٹولے کو قانون کے تابع کرنا ہے۔ انہوںنے کہاکہ کوئی ٹولہ جمہوریت کا راگ الاپ کر غیر قانونی اثاثوں کو تحفظ نہیں دے سکے گا،جب ادارے مضبوط اور قانون کی حکمرانی ہو تو غلطی کی گنجائش نہیں ہو گی ۔معاون خصوصی نے کہاکہ ملک میں کسی بھی طبقے سے تعلق رکھنے والے کیلئے قانون برابر ہو گا۔انہوںنے کہاکہ عوام کو مشکلات سے نکالنے کےلئے حکومتی تدابیر ہو ں گی ۔انہوںنے کہاکہ بجٹ میں عوام کو ریلیف دینے کی کوشش کریں گے۔ انہوںنے کہاکہ وسائل یافتہ طبقات کو بھی بجٹ میں حصہ دار بنایا جا رہا ہے،پاکستان کے وسائل میں عدم توازن تھا ۔..انہوںنے کہاکہ غریب اور امیر کے درمیان یکساں توازن ہو گا۔انہوںنے کہاکہ یہ بجٹ تمام پہلوں پر اثر انداز ہو گا، اداروں اور حکومتوں کے اندر جو غیر ضروری اخراجا ت کو کم کرے گا، ہم ترقی یافتہ پاکستان بنانے کی کوشش کرینگے ۔ انہوںنے کہاکہ ایک طرف سیاسی عوام کی بحث ہو گی اور دوسری طرف عوام کے حق میں بجٹ پیش ہو گا،کرپٹ لوگوں کا ساتھ نہیں دینا۔ انہوںنے کہاکہ بجٹ میں حکومتی ترجیحات میں بہتری لانے کے لئے کوشش کریں گے۔ معاو ن خصوصی نے مولانا فضل الرحمن پر تنقید کرتے ہوئے کہاکہ مولانا فضل الرحمن اپنی نگاہیں اسلام پر رکھیں،آپکی نگاہیں اسلام کی بجاے اسلام آباد پر ہیں۔انہوںنے کہاکہ مولانا صاحب آپکا مرکز ایک طرف ہونا چاہیے،سیاست ہمارے کرنے کا کام اور ہم کر رہے ہے۔انہوںنے کہاکہ تمام علماءکو اسلام کے حوالے سے ایک نقطہ نظر اور اجتہاد پر قائم ہونا چاہیے ۔ بجٹ کے حوالے سے ایک بار پھر انہوںنے کہاکہ بجٹ عوام کا حکومت کے ساتھ رشتہ مضبوط کرے گا،بجٹ عوام دوست پالیسیوں کی حمایت کریگا۔ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ پاکستان کو خوشحال اور ترقی یافتہ بنانے کیلئے بجٹ معاون ثابت ہو گا۔ انہوںنے کہاکہ میڈیا کو چاہیے کہ وہ عوامی مفاد کیلئے جدوجہد کرنیوالوں کیساتھ کھڑے ہوں،توقع ہے میڈیاعوام کی مشکلات کے تدارک کیلئے حکومت کی حمایت کریگا۔معاون خصوصی نے کہاکہ پاکستان کو مشکلات سے نکالنے کیلئے سب کو کردار ادا کرنا ہو گا۔معاون خصوصی نے کہاکہ حکومت بجٹ کے حوالے سے مثبت تجاویز پر عملدرآمد کیلئے لائحہ عمل طے کریگی۔ ایک سوال پر انہوںنے کہاکہ حکومت مخالفین کے ہر چیلنج کا جواب دینے کی سکت رکھتی ہے،حکومت اپنی ذمہ داریاں پوری کررہی ہے،اپوزیشن اپنی ذمہ داری کا احساس کرے۔معاون خصوصی نے کہاکہ عدالتوں نے لوگوں کے چہروں سے نقاب اتار ا،اسحاق ڈار ملک کو قرضوں کی دلدل میں دھکیل کر چلے گئے۔معاون خصوصی نے کہاکہ جلد معیشت اپنے پاو¿ں پر کھڑی ہو گی۔ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ آج تک کوئی ایسا بجٹ نہیں دیکھا جس پر اپوزیشن نے واویلا نہ کیا ہو،حکومت نے بجٹ کے حوالے سے بہترین حکمت عملی طے کی ہے۔معاون خصوصی نے کہاکہ بجٹ کی آڑ میں کسی کو منافع خوری کی اجازت نہیں دی جائے گی۔معاون خصوصی نے کہاکہ گزشتہ حکومت کو اپنی شکست کا پتہ تھا اس لئے انہوں نے بجٹ میں بڑے اہداف رکھے،حکومت جلد مشکلات پر قابو پا لے گی۔معاون خصوصی نے کہاکہ حکومت نہیں چاہتی کہ ملک میں انتشار ہو لیکن لٹیروں کو اجازت نہیں دی جائیگی۔معاون خصوصی نے کہاکہ عوام نے وزیراعظم عمران خان کو گلے سڑے نظام سے چھٹکارے کا مینڈیٹ دیا۔معاون خصوصی نے کہاکہ ہم مسائل کو حل کرنے والے ہیں، چھپا کر جانے والے نہیں،ہم سیاست کرنے نہیں بلکہ عوام خدمت کرنے آئے ہیں۔معاون خصوصی نے کہاکہ کسی سیاسی مفاد کے بغیر پاکستان کیلئے آخری سانس تک جنگ لڑنی ہے۔ انہوںنے کہاکہ مشکل معاشی حالات میں پاک فوج کا اپنا بجٹ فریز کرنا اعلیٰ مثال ہے۔ انہوںنے کہاکہ پاک فوج نے ثابت کیا کہ انہوں نے عوام کیلئے ہمیشہ قربانی دی ہے۔ انہوںنے کہاکہ ملکی سول اداروں میں اصلاحات کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔بعد ازاں سر کاری ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے معاون خصوصی نے کہاکہ نیب صرف انکے کیس بناتا ہے جنہوں نے کرپشن کی ہو،نیب کسی بے گناہ نہیں بلاتی ، نہ اس کیخلاف تفتیش کرتی ہے۔معاون خصوصی نے کہاکہ قومی خزانے کو نقصان پہنچانے والوں کے خلاف کارروائی ہو رہی ہے،کوڈ آف کنڈکٹ کے تحت جنہوں نے اختیارات سے تجاوز کیا انکے خلاف کارروائی ہو رہی ہے۔ انہوںنے کہاکہ ملک میں امیراور غریب کیلئے الگ الگ قانون نہیں ہو سکتے۔فردوس عاشق اعوان انہوںنے کہاکہ ماضی میں بااختیار لوگ قانون سے مبرا تھے،نئے پاکستان میں عمران خان کے وژن کے مطابق سب کیلئے ایک قانو ن ہے۔معاون خصوصی نے کہاکہ نیب جب بھی ان لوگوں کو بلاتا ہے تو یہ بہانے تراشتے ہیں۔معاون خصوصی نے کہاکہ نیب کی طرف سے جو بھی سوال پوچھا جاتا ہے یہ اس کا جواب نہیں دیتے،کرپشن کی وجہ سے یہ لوگ بے نقاب ہو چکے ہیں۔

Scroll To Top