آصف زرداری گرفتار: پیپلزپارٹی کی قومی اسمبلی میں شدید ہنگامہ آرائی

  • شریک چیئرمین پی پی پی کی گرفتاری کے باعث ایوان زیریں کا ماحول خاصا گرم رہا،بلاول بھٹو زرداری سے پہلے وزیرریلوے شیخ رشید کو تقریر کرنے کا موقع دینے پر پیپلزپارٹی کی جانب سے شدید احتجاج اور ہنگامہ آرائی ، اجلاس کل تک ملتوی
  • قبل ازیں پی پی پی رہنما شازیہ مری نے اپنے خطاب میں الزام لگایا کہ ہمارے ساتھ امتیازی سلوک برتا جا رہا ہے ،پیپلزپارٹی کو توڑا جا رہا ہے، اسپیکر حقیقی کسٹوڈین کی حیثیت سے کام کریں اورآصف زرداری کے پروڈکشن آرڈر جاری کریں

اسلام آباد(الاخبار نیوز) قومی اسمبلی میں بلاول بھٹو زرداری سے پہلے وزیرریلوے شیخ رشید کو تقریر کرنے کا موقع دینے پر پیپلزپارٹی کی جانب سے شدید احتجاج اور ہنگامہ آرائی کی گئی جس پر ڈپٹی اسپیکر نے اجلاس کل تک ملتوی کردیا۔ تفصیلات کے مطابق پیپلز پارٹی ارکان کے احتجاج کے بعد ڈپٹی اسپیکر، قاسم سوری نے اجلاس کل 5 بجے تک کے لیے ملتوی کر دیا.پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کی گرفتاری کے باعث اجلاس کا ماحول خاصا گرم رہا، اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے اپنی تقریر میں وزارت ریلوے سے متعلق سوالات اٹھائے.قومی اسمبلی کا اجلاس اسپیکر اسد قیصر کی زیر صدارت ہوا جس میں پاکستان پیپلزپارٹی کی جانب سے سابق صدر اور شریک چیئرمین آصف زرداری کی گرفتاری کے خلاف شدید احتجاج کیا گیا۔ اس موقع پر رہنما پی پی شازیہ مری نے کہا کہ ہمارے ساتھ امتیازی سلوک ہو رہا ہے اور پیپلزپارٹی کو توڑا جا رہا ہے، اسپیکر کسٹوڈین کی حیثیت سے کام کریں اور آصف زرداری کے پروڈکشن آرڈر جاری کریں۔رہنما پی پی شازیہ مری نے کہا کہ بطور اسپیکر ارکان کا تحفظ آپ کا فرض ہے، حکومت کے خلاف بات کرنے والے پر کارروائی کی جاتی ہے، کہیں بات نہیں کرنے دی جا رہی، یہ کیسی جمہوریت ہے۔ اسی دوران اسپیکر قومی اسمبلی نے شازیہ مری کا مائیک بند کروا دیا، شازیہ مری کو بات کرنے کی اجازت نہ دینے پر اپوزیشن ارکان نشستوں پر کھڑے ہوگئےاور احتجاج کیا۔بعد ازاں پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری سے پہلے وزیرریلوے شیخ رشید کو تقریر کا موقع دینے پر پیپلزپارٹی کے اراکین اسمبلی نے اسیپکر ڈائس کا گھیراو کیا اور شدید احتجاج و ہنگامہ آرائی کی، اس دوران ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری انہیں بار بار منع کرتے رہے لیکن پیپلزپارٹی کے اراکین نے شیخ رشید کو بات کرنے کا موقع نہیں دیا جس پراجلاس کل تک ملتوی کردیا گیا۔شیخ رشید جب جواب دینے کے لیے کھڑے ہوئے، تو پیپلز پارٹی کے ارکان نے شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس وقت بلاول بھٹو زرداری کی تقریر کا وقت ہے.قومی اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری نے متعدد بار کہا ہے کہ شیخ رشید کو دو منٹ دیں، تاکہ وہ اپنا موقف دے دیں، لیکن احتجاج جاری رہا، جس پر انھوں نے کہا کہ اگر احتجاج کا سلسلہ نہیں روکا گیا، تو اجلاس ملتوی کر دیا جائے گا.شیخ رشید کی تقریر کے دوران اپوزیشن احتجاج نعرے لگاتی رہے، جس پر وزیر ریلوے نے کہا کہ اگر انھیں نہیں بولنے دیا گیا، تو بلاول بھٹو بھی تقریر نہیں کرسکیں گے.احتجاج کے باعث قاسم سوری نے اجلاس کل تک کے لیے ملتوی کر دیا. خیال رہے کہ کل بجٹ اجلاس ہے، جس میں شاید احتجاج کی توقع کی جارہی ہے.

Scroll To Top