کوئی قانون سے بالاتر نہیں:ججز معاملے پر سپریم جوڈیشنل کونسل کا فیصلہ تسلیم کریں گے، عمران خان

  • وفاقی کابینہ اجلاس: ججز کیخلاف سپریم جوڈیشل کونسل کو بھیجے گئے ریفرنس بارے شرکاءکو مکمل آگاہی دی گئی ، لندن جیسے صحت افزاء مقام سے عدلیہ بحالی کی باتیں کرنے والوں کی مذمت
  • عتیق احمدکوسیکرٹری فیڈرل بورڈ اورراجہ جواد عباس حسن کوا نسدا ددہشت گردی عدالت اسلام آباد کا جج لگانے کی بھی منظوری، الیکشن کمیشن کی انتخابات 2018بارے سالانہ رپورٹ کے جائزہ کے لئے چار رکنی وزراتی کمیٹی قائم

اسلام آباد(الاخبار نیوز) وزیراعظم عمران خان نے ججز کے خلاف ریفرنس کے معاملے پر وفاقی کابینہ کے اجلاس میں اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں ہے۔وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں کئی اہم فیصلے کیے گئے۔وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے اجلاس کے فیصلوں پر بریفنگ دی۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کی سعودی عرب میں تقریر دھواں دار تھی اور وفاقی کابینہ نے وزیراعظم کو او آئی سی میں تقریر پر داد دی، ہر پالیسی میں پاکستان کا مفاد مد نظر رکھاجا رہاہے، وزیراعظم کی سرپرستی میں اسلام کا اصل چہرہ دنیا کو دکھایا جائے گا۔فردوس عاشق اعوان نے بتایا کہ ججز کیخلاف سپریم جوڈیشل کونسل کو بھیجے گئے ریفرنس سے وفاقی کابینہ کو آگاہ کیا گیا اور جن حقائق پر ریفرنس بھیجے گئے، اس پر وفاقی(باقی صفحہ7 بقیہ نمبر2
کابینہ کو بریفنگ دی گئی، اس موقع پر وزیراعظم نے عزم کا اعادہ کیا کہ قانون سے بالاتر کوئی نہیں۔فردوس عاشق اعوان نے بتایا کہ ایسٹس ریکوری یونٹ کو ملی شکایت کو وزارت قانون کو بھجوایاگیا، وزیراعظم کے معاون خصوصی شہزاد اکبر کو شکایات موصول ہوئیں، لینڈ رجسٹری برطانیہ نے شکایت کی توثیق کی اور نوٹری پبلک کی مہریں لگیں ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ سپریم جوڈیشل کونسل کو ریفرنس پر فیصلہ کرنا ہے، جو کہ حکومت کا ماتحت ادارہ نہیں ہے بلکہ غیرجانبدار فورم ہے، سپریم جوڈیشل کونسل عدلیہ سے متعلق شکایات پر فیصلہ کرنے والا فورم ہے، عدلیہ کا معاملہ سپریم جوڈیشل کونسل ہی دیکھ رہی ہے تو یہ عدلیہ پر حملہ کیسے ہے؟ انہوں نے کہا کہ سپریم جوڈیشل کونسل جو فیصلہ کرے حکومت کو تسلیم ہوگا، عمران خان عدلیہ کو آزاد اورخودمختار بنانے کیلئے اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ کام کرنا چاہتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن مگر مچھ کے آنسو بہارہی تھی، لندن کے صحت افزاء مقام سے مذمت کی جا رہی تھی اور کابینہ نے لندن جیسے صحت افزاء مقام سے عدلیہ بحالی کی باتیں کرنے والوں کی مذمت کی ہے، ہم نے بھٹو کے دیے آئین سے ہی یہ راستہ نکالا ہے اور پاکستان کا ہر شہری قانون کے تابع ہے۔معاون خصوصی نے بتایا کہ بارشوں سے گندم کی فصل کو ہونے والے نقصان سے کابینہ کو آگاہ کیا گیا، بے موسمی بارشوں اور ژالہ باری سے فصلوں کو نقصان پہنچا، گندم کی خریداری کیلئے بار دانہ بھی پہلی بار بروقت ملا۔ان کا کہنا تھا کہ سندھ میں گندم کی خریداری شروع نہ ہونے پر کابینہ نے تحفظات کا اظہار کیا، سندھ میں گندم کی بوریوں سے ریت نکلنے کے اسیکنڈل پر کابینہ کو آگاہ کیا گیا اور بتایا گیا ذمہ داروں کے خلاف اینٹی کرپشن نے کارروائی کی ہے۔ الیکشن کمیشن کی انتخابی 2018بارے سالانہ رپورٹ کے جائزہ کے لئے چار رکنی وزراتی کمیٹی قائم کردی ارکان میں وفاقی وزراء محمد اعظم سواتی ،چوہدری فواد حسین، مراد سعید اور ڈاکٹر شیریں مزاری شامل ہیں،عتیق احمدکوسیکرٹری فیڈرل بورڈ آف انٹر میڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن تعینات کرنے کی منظوری دی۔ راجہ جواد عباس حسن،ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کو جج سپشیل کورٹ(اینٹی ٹیررازماi- )اسلام آباد تعینات کرنے کی بھی منظوری دی

Scroll To Top