سرکاری گاڑیوں کا غلط استعمال:نیب کا نواز شریف کا بیان ریکارڈ کرنیکا فیصلہ

  • نوازشریف ،مریم نوازاور خاندان کے دیگر افرادکیخلاف ایک اور کیس کھلنے کو تیار،سابق وزیر اعظم کے پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد کا جیل میں بیان ریکارڈ،نیب ٹیم نواز شریف کی ضمانت ختم ہونے کے بعد جیل میں ان کا بیان قلمبند کرنے کےلئے تیار
  • قومی احتساب بیورو اس سلسلے میں پہلے ہی سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا بیان بھی ریکار ڈکر چکا ہے، انٹیلی جنس بیورو کے سابق سربراہ آفتاب سلطان کو بھی بیان کےلئے طلب کیا گیا تھا مگر وہ پیش ہونے میں ناکام رہے

راولپنڈی(صباح نیوز)سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور ان کے خاندان کے دیگر افراد کے خلاف نیب راولپنڈی کا ایک اور کیس سامنے آ گیا۔ایک نجی ٹی وی کے مطابق نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق حکمران خاندان کے خلاف سرکاری گاڑیوں کے غلط استعمال کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔نیب ٹیم نواز شریف کی ضمانت ختم ہونے کے بعد جیل میں ان کا بیان لے گی، سرکاری گاڑیوں کے غلط استعمال کے کیس میں فواد حسن فواد سے لاہور جیل میں بیان لے لیا گیا ہے۔نیب ذرائع نے بتایا کہ شاہد خاقان عباسی کا بھی سرکاری گاڑیوں کے غلط استعمال کیس میں بیان لیا جا چکا ہے۔نیب ذرائع کے مطابق اس کیس میں آئی بی کے سابق سربراہ آفتاب سلطان کو بھی بیان کےلئے طلب کیا گیا مگر وہ پیش نہ ہوئے، گاڑیوں کے کیس میں وزارت خارجہ کے متعلقہ افسروں سے بھی بیانات لیے جا چکے ہیں۔نیب ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ نوازشریف اور ان کے اہل خانہ پر 30 سرکاری گاڑیوں کے غلط استعمال کا الزام ہے، یہ بی ایم ڈبلیو گاڑیاں سارک کانفرنس کے موقع پر وزارت خارجہ نے خریدی تھیں۔نیب ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ نیب راولپنڈی گاڑیوں کے غلط استعمال کے متعلق نامعلوم شکایت پر تحقیقات کر رہی ہے

Scroll To Top