حمزہ شہباز تفتیشی ٹیم سے تعاون نہیں کر رہے ،نیب آج عدالت سے گرفتاری مانگے گا

  • منگل کو پیشی کے موقع پر نیب کی 2 تحقیقاتی ٹیموں نے حمزہ شہباز سے آمدن سے زائد اثاثہ جات او رمنی لانڈرنگ کے حوالے سے سوالات کیے ، تاہم وہ ٹال مٹول سے کام لیتے رہے اورجوابات دینے میں نا کام رہے
  • مدعا علیہ سے ہونے والی تفتیش، عدم تعاون اور سوالات کے جوابات نہ دینے سے متعلق سینئر افسران کو آگاہ کر دیا گیا ہے اوراس سلسلے میں ایک رپورٹ بھی تیار کرلی گئی ہے جو آج عدالت میں پیش کی جائے گی

لاہور(الاخبار نیوز) ذرائع کا کہنا ہے کہ پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما حمزہ شہبازشریف نیب کے سوالات کے جوابات دینے میں ناکام رہے اور نیب کل عدالت میں حمزہ شہباز کو گرفتار کرنے کی اجازت مانگے گا۔نجی ٹی وی کے مطابق پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز کی مختلف کیسز میں نیب میں پیشیوں کا سلسلہ جاری ہے، اور ضمانت ملنے کے بعد وہ 3 دفعہ نیب میں پیش ہوچکے ہیں، اور آج بھی وہ نیب کے سامنے پیش ہوئے تاہم ذرائع کے مطابق وہ نیب کے سوالات کے جوابات دینے میں ناکام رہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ نیب کی 2 انوسٹی گیشن ٹیموں نے حمزہ شہباز سے آمدن سے زائد اثاثہ جات اور مبینہ منی لانڈرنگ کے حوالے سے سوالات کیے، تاہم حمزہ شہباز نے دونوں ٹیموں کے سوالات پر ٹال مٹول سے کام لیا اور نیب حکام کو کل تک کا انتظار کرنے کی تلقین کرتے رہے۔ذرائع کے مطابق حمزہ شہبازشریف سے ہونے والی تفتیش، ان کے تعاون نہ کرنے اور سوالات کے جوابات نہ دینے سے متعلق سینئر افسران کو آگاہ کر دیا گیا ہے جب کہ نیب کی جانب سے رپورٹ بھی تیار کرلی گئی ہے جو کل عدالت میں پیش کی جائے گی اور ممکنہ طور پر نیب کی جانب سے کل عدالت میں حمزہ شہباز کی گرفتاری کی درخواست کی جائے گی۔ واضح رہے کہ حمزہ شہباز نے لاہور ہائیکورٹ میں رمضان شوگر ملز اور صاف پانی کرپشن کیس میں عبوری ضمانت کے لیے الگ الگ درخواستیں دائر کی تھیں اورموقف اپنایا تھا کہ نیب کی طرف سے گرفتاری کا خدشہ ہے، نیب پہلے بھی سیاستدانوں کو کسی اور انکوائری میں بلا کر دوسرے مقدمات میں گرفتار کر چکا ہے، عدالت نے حمزہ شہباز کی دونوں کیسز میں 17 اپریل تک عبوری ضمانت منظور کی، اور دو کیسز میں ایک ایک کروڑ کے مچلکے بھی جمع کرانے کا حکم دیا تھا، کل شہبازشریف کی عبوری ضمانت کی تاریخ ختم ہوجائے گی۔

Scroll To Top