کسی گرفتار افسر کو ہتھکڑی نہیں لگے گی، بیورو کریسی اعتماد سے کام کرے:‘چیئرمین نیب

  • آئندہ ریجنل آفس گریڈ 19 یا اس سے اوپر کے افسر کو از خود گرفتار نہیں کر ےگا ،مجھ سے پیشگی اجازت لی جائے گی
  • نیب آپ سب کا ادارہ ہے کوئی ایسا قدم نہیں اٹھایا جائیگا جس سے ملکی معیشت کو نقصان ہو ‘جسٹس (ر) جاوید اقبال کا پنجاب سول سیکرٹریٹ میں افسران سے خطاب

لاہور(اےن اےن آئی) چیئرمین قومی احتساب بیورو ( نیب ) جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ آئندہ نیب کا ریجنل آفس گریڈ 19 یا اس سے اوپر کے افسر کو از خود گرفتار نہیں کر ے گا بلکہ اس کےلئے ان سے پیشگی اجازت لی جائے گی ،کرپشن کے الزام میں گرفتار کسی افسر کو ہتھکڑی بھی نہیں لگائی جائے گی،بیورو کریسی کا کام ملکی و عوامی مفاد میں پالیسی بنانا ہے، نیب آپ سب کا ادارہ ہے ایسا قدم نہیں اٹھائے گا جس سے ملکی معیشت کو نقصان ہو۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پنجاب سول سیکرٹریٹ کے دربار ہال میں افسران سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر چیف سیکرٹری پنجاب یوسف نسیم کھوکھر، ڈی جی نیب شہزاد سلیم سمیت دیگر بھی موجودتھے ۔ اس موقع پر چیئرمین نیب اور سرکاری افسران کے درمیان کھل کر تبادلہ خیال کیا گیا ۔چےئرمےن نیب جاوےد اقبال نے کہاکہ بےورو کرےسی ملک کے لئے رےڑھ کی ہڈی کی حےثےت رکھتی ہے ، بےورو کرےسی کا ملکی ترقی مےں اہم کردار ہے ۔ اعلیٰ عدلیہ سمےت ملک کے مختلف اداروں مےں اہم ذمہ دارےاں سرانجام دی ہےں اس لئے بےور وکرےسی کے مسائل سے آگاہ ہوں ، نےب 1999مےں قائم کےا گےا جبکہ مےں چےئرمےن نےب کی حےثےت سے گزشتہ 17ما ہ سے کام کررہا ہوں نےب اےک خودمختارادارہ ہے ملکی ادارے مضبوط ہوں گے تو ملک مضبوط ہوگا۔ انہوںنے کہاکہ پراپیگنڈا کےا گےا کہ نےب کی وجہ سے بےور وکرےسی نے کام کرنا چھوڑ دےا ہے نےب کے ہزاروں مقدمات کاجائزہ لےا تو بےور و کرےسی کے خلاف سامنے آنے والے مقدما ت نہ ہونے کے برابر تھے یہ مذموم پروپےگنڈہ تھا جس کا مقصد نےب پرا لزام تراشی اور بےور وکرےسی کی حوصلہ شکنی کرنا تھا ۔ انہوںنے کہاکہ نےب قانون کے مطابق ہرشخص کی عزت نفس کا احترام کرنے کے علاوہ خدشات کو قانون اور آئےن کے مطابق حل کرنے پرےقےن رکھتا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ نےب آپ کا اپنا اور انسان دوست ادارہ ہے ،کرپشن کا خاتمہ نہ صرف نےب بلکہ ہم سب کی اجتماعی ذمہ داری ہے ۔نےب اےک قومی ادارہ ہے جس کو بدعنوان عناصر سے ملک کی لوٹی ہوئی رقم برآمد کر کے قومی خزانے مےں جمع کروانے کی ذمہ داری سونپی گئی ۔نےب نے بدعنوان عناصر سے 303ارب روپے قومی خزانے مےںجمع کروائے جوکہ اےک رےکارڈ کامےابی ہے۔ ہم پاکستان کی وجہ سے آج اہم عہدوں پر فائز ہےں ہم سب کو ملک نے جو کچھ دےا ہے وہ ہم پرقرض ہے اور ہمےں یہ قرض اتارنا ہے ۔ ہمےں ملک کی ترقی اور بدعنوانی کے خاتمہ کےلئے مل کر کام کرنا ہے ۔انہوںنے کہا کہ نےب اور بےور وکرےسی کا تعلق کسی گروپ ، گروہ ، طبقہ ،حکومت اور کسی سےاسی جماعت سے نہےں بلکہ ہمارا تعلق پاکستان کے ساتھ ہے ہر بےورو کرےٹ کو ہمےشہ قانون اورملک کے مفاد مےں فےصلے کرنے چاہیے ۔ انہوںنے کہا کہ حکومتےں بدلتی رہتی ہےں لےکن رےاست پاکستان ہمےشہ قائم ودائم رہے گی ۔حکومت پالےسی سازی کرتی ہے لےکن اس پرعملدرآمد کرنا بےوروکرےسی کا کام ہے بےوروکرےسی کو سےاسی دباﺅ کو بالائے طاق رکھتے ہوئے ہمےشہ انصاف اور قانون کے تقاضوں کو پورا کرتے ہوئے عوام کی خدمت کرنی چاہیے سزا کے خوف کی بجائے اللہ پر ےقےن رکھےں گے تو مشکلات حل ہوجائےں گی کےونکہ فتح ہمےشہ حق اورسچ کی ہوتی ہے سپرےم کورٹ کی جانب سے بھی بےورو کرےسی کے قانونی اقدامات کا تحفظ کےا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر بےور وکرےسی قانون کے مطابق کام کرے گی تو نےب آپ کو کےوں بلائے گا ۔انہوںنے کہاکہ ہمےں ملک اور عوام کے مفاد مےں وزارتوں اورڈوےژنوں مےں اپنا ادارہ جاتی نظام اتنا اچھا ہو کہ معاملہ نےب تک نہ پہنچے ۔انہوںنے کہاکہ نےب کے تفتےشی نظام اور کا م کرنے کے طرےقہ کار مےں نماےاں بہتری آئی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ یہ مےںنے فےصلہ کےا ہے کہ آج کے بعد نےب کسی سےکرتری اور اےڈےشنل سےکرٹری کے خلاف شکاےت کا مےں ذاتی طور پر جائزہ لوں گا ۔ اسی طرح کے حاضر سروس اوررےٹائرڈ بےوروکرےٹس کے خلاف شکاےات کاذاتی طو ر پر جائزہ لوں گا اور اس کے بعد اگر ضرورت پڑی تو سوال نامہ بھجواےا جائے گا ۔انہوںنے کہاکہ نےب احتساب سب کےلئے کیپالےسی پر پر عمل کرتے ہوئے بلاامتےاز احتساب کررہا ہے کسی سے نا انصافی نہےں ہوگی ۔ وائٹ کالر کرائم کی تفتےش کے لئے وقت اواحتےاط کی ضرورت ہے ۔چیئرمین نیب جسٹس(ر) جاوید اقبال نے کہا کہ گزشتہ برس پنجاب میں میگا کرپشن کیسز سامنے آئے اور ہم نے جن بیورو کریٹس کے خلاف کارروائی کی ان کے خلاف ٹھوس شواہد موجود ہیں اور شواہد سے ثابت کروں گا نیب جوکام کر رہا ہے وہ درست ہے۔چیئرمین نیب نے سرکاری افسران سے کہا کہ گریڈ 19 اور اس سے اوپر کے افسران کو ان کی اجازت کے بغیر گرفتار نہیں کیا جاسکے گا، نیب کا ریجنل دفتر کسی افسران کو از خود گرفتار نہیں کرسکے گا اور آئندہ کسی گرفتار افسر کو ہتھکڑی نہیں لگائی جائے گی،نیب آپ سب کا ادارہ ہے، ایسا قدم نہیں اٹھائے گا جس سے ملکی معیشت کو نقصان ہو۔ چےف سےکرٹری پنجاب ےوسف نسےم نے چےئرمےن نےب جسٹس (ر) جاوےد اقبال کے پنجاب بےورو کرےسی سے خطاب اوران کے اعتماد مےں اضافہ کرنے کے علاوہ ان کے سوالات کے مدلل اورمفصل انداز مےں دےنے کے علاوہ پنجاب کی بےور وکرےسی کا نےب سے رابطہ کے لئے بےورو کرےسی اور نےب کافوکل پرسن کی تعےناتی پرچےئرمےن نےب جسٹس(ر) جاودےد اقبا ل کاشکریہ اداکےا ۔ آخر مےں چےئرمےن نےب نے ڈی جی نےب لاہور شہزادسلےم کی سربراہی مےں پنجاب کی 56کمپنےوں مےں سے اےک کمپنی سے پلی بارگےن کی مد مےں تقرےبا 1ارب روپے مالےت کی جائےداد کے کاغذات چےف سےکرٹری ےوسف نسےم کھوکھر اوراےرا کے نمائندے کے حوالئے کئے جس پر چےف سےکرٹری پنجاب اور اےرا کے نمائندے نے چےئرمےن نےب کا شکریہ ادا کےا ۔

Scroll To Top