ٹوئیٹر کالم 09-04-2019۔۔۔غلام اکبر

نماز فجر اور چند قرآنی آیات کے بعد میں سوچ رہا ہوں اسلام ہے کیا؟معبود واحدولاشریک کی بندگی نماز و زکوٰة کی ادائیگی اور دیانت وانصاف کے معاشرے کا قیام۔کتنا آسان اور کتنا مشکل!جو لوگ اللہ کی نافرمانی پر نادم نہیں ہوتے وہ اسلام کیسے قبول کر سکتے ہیں؟سب سے بڑا نافرمان شرک کرنے والا ہے۔۔۔
08اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
وہ جج جنہوں نے بدمعاشیہ کے ساتھ ٹکر لینے میں پہل کی وہ ہمارے ہیرو ہیں بدمعاشیہ کے سردار کو ایوان اقتدار سے باہر نکال کراس جنگ نجات کا آغاز کرنے والوں کا احسان قوم کبھی نہیں بھلائے گی۔ مگر جن وکیلو ں کو وفاداریوں اور خدمات کے صلے میں جج بنا یا گیا وہ آج بدمعاشیہ کا دفاع کر رہے ہیں۔۔۔
07اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جس ملک میں مجرموں کے حقوق کا تحفظ عدالتی نظام اور جج کریں اس کی بربادی کے لئے ایک طاقتور دشمن یا کسی قدرتی آفت کی ضرورت نہیں۔اگر اس ملک کو آگے بڑھانا ہے تو کسی ایوبی کو سامنے آ کر اس نظام کا بوریا بستر سمیٹنا ہو گا-اب بدمعاشیہ کا مکمل خاتمہ ہی ریاست کا نصب العین ہونا چاہیے۔۔۔
07اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
میرے خیال میں مریم اورنگزیب کو یہ بتانے کی بڑی شدید ضرورت ہے کہ ریاستی دہشتگردی کیا ہوتی ہے۔۔۔
06اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اگر نیب کا مقصد یہ ہے کہ ریاستی طاقت کو حمزہ اور نون لیگ کے سامنے بے بس دکھایا جائے تو وہ اس مقصد میں کامیاب نظر آتی ہے۔اگر مقصد واقعی حمزہ کی گرفتاری ہے تو اگر وہ گرفتار نہیں ہوتے تو سمجھا جائے گا کہ نون لیگ کی بی ٹیم نیب کے اندر موجود ہے جو حمزہ کو ہیرو بنا رہی ہے
06اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
وقت آگیا ہے کہ ان سے پو چھا جائے کہ بھٹو کی بیٹی کے قاتل بھٹو کے ورثے کے امین کیسے ہو سکتے ہیں۔۔۔؟؟؟؟
04اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
معراج اللہ کریم کا ایک عظیم معجزہ تھا۔مگر اللہ کریم کا عظیم ترین معجزہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کی ذات مبارک تھی۔ہمارے لئے اس سے بڑا اعزاز کیا ہو گا کہ ہم رحمت اللعالمین کی امت ہیں۔۔۔
04اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
بڑائی کا تعین پسند اور ناپسند کی بنیاد پر نہیں زمینی حقائق کی بنیاد پر ہونا چاہئے۔میں کبھی ایڈلف ہٹلر بننا پسند نہیں کروں گا لیکن ایک ایسے شخص کی بڑائی سے کیسے انکار ممکن ہے جو ویانا کے سٹیشن پر ایک قلی تھا اور چند ہی برس میں دنیا کا سب سے طاقتور شخص بن گیا۔۔۔؟
03اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
گذشتہ کچھ عرصے سے جن صحافیوں کے قد کاٹھ میں اضافہ ہوتا رہا ہے ان میں نمایاں ترین نام صابر شاکر کا ہے۔ اس کے بعد ارشاد بھٹی کا نام آتا ہے جو سترہ برس قبل تک الاخبار کے چیف رپورٹر تھے۔ صابر شاکر اگر اپنے محاذ پر ڈٹے رہے تو بہت آگے جائیں گے۔یہی بات میں ارشاد کے بارے میں بھی کہوں گا۔۔۔
03اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
میں ارشاد عارف اور اوریا مقبول جان کو سب سے زیادہ پسند کرتا ہوں کیوں کہ وہ میری سوچ کے قریب ہیں مگر کوئی شک نہیں کہ نکتہئ نظر میں فرق یا اختلاف سے قطع نظر ارشد شریف روف کلاسرہ عامر متین اورحامد میر بڑے باکمال صحافی ہیں۔صحافی تب بونا بنتا ہے جب اس کے ضمیر پر انااور مفاد حاوی ہو جا۔۔۔؟
03اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
بر خوردار لیڈر سے کسی نے کہا کہ مرد بن مرد۔۔چنانچہ وہ مرد بن کر دکھا رہے ہیں آپ نے اس چوہے کا قصہ تو سنا ہو گا جو بیئر کے ڈرم میں غوطے کھا کر دم کے بل کھڑا ہوا تو للکارا۔۔کہاں ہے بلی؟۔۔۔
یکم اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جہانگیرترین اور شاہ محمود کی چپقلش میں فواد چودھری اور فیصل واڈا نے کہا ہے کہ جہانگیرترین نہ ہوتے تو عمران خان بر سر اقتدار نہ آتے۔اور اگر عمران خان نہ ہوتے تو کیا آج جہانگیر ترین فواد چودھری اور فیصل واڈا یا پھر شاہ محمود کا نام ٹی وی چینلز پر سنا جا رہا ہوتا؟ذرا سوچ کر بتائیں۔۔۔
یکم اپریل2019ئ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Scroll To Top