مسلح افواج ، سکیورٹی اداروں کی قربانیوں سے آج پاکستان محفوظ ملک ہے، عمران خان

  • وزیراعظم کے ہاتھوں آن لائن ویزا سروس کا اجراء ، 55 ملکوں کے شہریوں کو آن آرائیول ویزا جاری ہو گا، برطانیہ، چین، ترکی، ملائشیا اور متحدہ عرب امارات کے شہری ای میل کے ذریعے صرف 8 ڈالر میں ویزا حاصل کر سکیں گے جو نئے پاکستان کی طرف پہلا قدم ہے
  • آئندہ پی ایس ایل کے تمام میچز پاکستان میں ہوں گے،تمام پڑوسی ممالک سے اچھے تعلقات کے خواہاں ہیں، الیکشن کی وجہ سے بھارت سے کچھ مسائل ہیں ، پاکستان اب مکمل طورپر ایک پراعتماد ملک ہے ، سیکورٹی کے کوئی مسائل نہیں ہیں، وزیر اعظم کا تقریب سے خطاب

اسلام آباد ( آن لائن)وزیراعظم عمران خان نے پاکستان میں آن لائن ویزا کا اجراء کر دیا۔ 55 ملکوں کے شہریوں کو آن ارائیول ویزا آج سے جاری ہو سکے گا۔ برطانیہ، چین، ترکی، ملائشیا اور متحدہ عرب امارات کے شہری ای میل کے ذریعے صرف 8 ڈالر فیس دے کر ویزا حاصل کر سکیں گے۔انہوں نے مزید کہا کہ 70 کی دہائی میں ہمارا مائنڈ سیٹ تبدیل کیا گیا اور پیسا بنانے کو گناہ سمجھا گیا، اس مائنڈ سیٹ کو تبدیل کرنا بہت ضروری ہے۔عمران خان نے کہاہے کہ 70کی دہائی کے مائنڈ سیٹ کوختم کررہے ہیں ، سا مائنڈ سیٹ نے پاکستان کو بہت نقصان پہنچایا ، آن لائن ویزا کا اجراء ایک بہت بڑی تبدیلی ہے، یہ نئے پاکستان کی طرف پہلا قدم ہے۔وزیراعظم عمران خان کا آن لائن ویزا کے اجرائ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ آج پاکستان امن کے راستے پر نکل پڑا ہے، ملک کو دوسروں کے لیے کھولنے کے لیے نئے پاکستان کا یہ پہلا قدم ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم جو پاکستان کوکھول رہے ہیں تو یہ ایک اعتماد ہے کہ ہم کو کوئی سکیورٹی خطرہ نہیں ہے ، اس مائنڈ سیٹ کو ہم نے سرمایہ کاروں کیلئے تبدیل کرنا تھا اور یہ بھی ہے کہ پاکستان کا ویزا آسان ہوجائے تاکہ لوگوں کو پتہ چلے کے پاکستان میں کتنے مواقع ہیں؟ لوگ آئیں گے تو ان کوپتہ چلے گا کہ پاکستان میں کتنے مواقع ہیں؟ ان کا کہنا تھا کہ انگلینڈ سے جب میرا کوئی دوست پاکستان کے شمالی علاقہ جات میں گیاتو اس نے میر ی دوبارہ وہاں جانے کیلئے منتیں کیں، ہمارے شمالی علاقہ جات سوئٹرز لینڈ سے دوگنا ہیں، یہاں بہت سے علاقے ابھی رسائی سے باہر ہیں ، ہم ان علاقوں کو بھی کھولیں گے اور خیال رکھا جائےگا کہ ان علاقوں کوئی نقصان نہ ہو۔وزیراعظم نے کہا کہ ایک مائنڈ سیٹ تھا کہ ویزا کا اجرائ اتنا مشکل بنا دو کہ کوئی آئے ہی نہیں۔نئی ویزا پالیسی کے تحت 55 ملکوں کے شہریوں کو آن ارائیول ویزا آج سے جاری ہو سکے گا۔ برطانیہ، چین، ترکی، ملائشیا اور متحدہ عرب امارات کے شہری ای میل کے ذریعے صرف 8 ڈالر فیس دے کر ویزا حاصل کر سکیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ 60 کی دہائی میں پاکستان میں بہت پراعتماد تھا اور ملک بہت تیزی سے اوپر جا رہا تھا، یہ وہ وقت تھا جب پاکستانی وزیراعظم کو امریکی وزیراعظم نے خود ایئرپورٹ پر خوش آمدید کہا۔وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے سرمایہ کاری کے لیے ساز گار ماحول فراہم کرنا ہے اور آن لائن ویزا کے اجرائ کا مقصد ملک میں سرمایہ کاری کو فروغ دینا ہے۔عمران خان نے کہا کہ برطانیہ سے میرے دوست پاکستان کے شمالی علاقات کی سیر کے لیے آتے تھے، پاکستان کے شمالی علاقات سوئٹزرلینڈ سے دو گنا ہیں، لوگ جب آئیں گے تو یہاں سے متاثر ہوں گے اور سرمایہ کاری کریں گے۔ان کا کہنا تھا کہ ہنزہ، دیر اور گلگت بہترین سیاحی مقامات ہیں، سیاحت کی ٹاسک فورس سیاحت کے حوالے سے نئے علاقوں کو تلاش کر رہی ہے، سیاحت کے حوالے سے ویب سائٹ بنائیں گے۔انہوں نے کہا کہ ناردن علاقوں میں لوگوں کو سستے قرضےدیں گے تاکہ وہ اپنے گھر کے ساتھ سیاحوں کے لیے بھی کوئی کمرہ بنا لیں۔وزیراعظم نے کہا کہ ملائیشیا کی 22 ارب ڈالر کی سیاحت ہے، جو صرف ساحل پر مبنی ہے جب کہ سیاحت کے حوالے سے پاکستان کے پاس 4 مختلف چیزیں ہیں، اسکیئنگ کی بہت بڑی جگہیں پاکستان میں موجود ہیں۔وزیراعظم پاکستان کا کہنا تھا کہ آج پاکستان ایک محفوظ ملک ہے اور اگلے پی ایس ایل کے تمام میچز پاکستان میں ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ امکانات ہیں کہ بھارت کے الیکشنز تک تھوڑا سا مسئلہ ہو، لیکن انشائ اللہ تمام پڑوسی ممالک سے ہمارے اچھے تعلقات ہوں گے۔وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان میں مذہبی سیاحت بہت زیادہ ہے ، دنیا کا سب سے بڑا سلیپنگ بدھا ہری پور کے قریب دریافت ہواہے ، سکھوں کے مقدس مقامات ، ہندومذہب کے مقدس مقامات ، صوفی ازم اور دنیا کے قدم ترین شہر ہیں ، ہم ان سب جگہوں کو دنیا میں متعارف کروائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ جب ہماری حکومت آئی تو ہمیں 19ارب ڈالر خسارے کا سامنا تھا جس کے لئے ہمیں بڑی بھاگ دوڑ کرنی پڑی لیکن ملائشیامیں صرف سیاحت سے 22ارب ڈالر حاصل ہوتے ہیں او ر ان کے پاس صرف کچھ ساحلی علاقہ ہے لیکن پاکستان میں سیاحت کیلئے چار مختلف میدان ہیں، ہم ابھی آغاز کررہے ہیں ، پاکستان میں یہ بہت بڑا قدم اٹھایا گیا ہے ، دہشت گردی کے حوالے سے پاکستان ایک بہت مشکل وقت سے گزراہے اور آج پاکستان ایک محفوظ ملک ہے ، اس کا میں اپنی سکیورٹی فورسز کو بڑا کریڈٹ دیتا ہوں، مسلح افواج اور انٹیلی جنس اداروں کوخراج تحسین پیش کرتا ہوں۔انہوں نے کہا کہ اگلا پی ایس ایل سارا پاکستان میں ہوگا بجائے دبئی کے کیونکہ میں خودکھیلتا رہا ہوں اور مجھے پتہ ہے کہ خالی سٹیڈیم میں کھلنا کتنا مشکل ہوتاہے؟ان کا کہنا تھا کہ ہندوستان میں الیکشن کے بعد ہمارے تمام ہمسایہ ممالک سے بھی اچھے تعلقات ہونگے ، بھارت میں ابھی الیکشن کی وجہ سے مسائل ہیں ، جب بھی نفرتوں کی بنیاد پر الیکشن ہوتے ہیں تو مسائل پیش آتے ہیں۔

Scroll To Top