سانحہ ماڈل ٹاﺅن: تحقیقاتی ٹیم کو نواز شریف سے جیل میں پوچھ گچھ کی اجازت

  • نواز شریف مقدمے میں نامزد ملزم ہیں، جیل میں تفتیش کی اجازت دی جائے، پنجاب پولیس کی استدعا، نواز شریف سے تفتیش کے لیے پنجاب پولیس ہائی کورٹ سے رجوع کرے، نیب کی استدعا
  • شہباز شریف کی ضمانت منسوخی کیلئے نیب کا سپریم کورٹ سے رجوع،شہباز شریف نے آشیانہ ہاو¿سنگ اور رمضان شوگر ملز کیس میں قومی خزانے کو نقصان پہنچایا، ہائیکورٹ نے حقائق کے برعکس شہباز شریف کی درخواست ضمانت منظور کی،متن

اسلام آباد(صباح نیوز)اسلام آباد کی احتساب عدالت نے سانحہ ماڈل ٹاون پر تحقیقاتی ٹیم کو سابق وزیر اعظم نواز شریف سے تفتیش کی اجازت دے دی اب سانحہ ماڈل ٹاون کی تحقیقاتی ٹیم سابق وزیر اعظم نواز شریف سے تفتیش کرے گی تاہم نیب نے مخالفت کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ نواز شریف سے تفتیش کے لیے پنجاب پولیس ہائی کورٹ سے رجوع کرے۔اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد ارشد ملک نے درخواست پر سماعت کرتے ہوئے تحقیقاتی ٹیم کو نواز شریف سے ماڈل ٹاون کیس کی تفتیش کی اجازت دے دی۔پنجاب پولیس کے ڈی ایس پی محمد اقبال نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ نواز شریف ماڈل مقدمے میں نامزد ملزم ہیں، جیل میں ان سے تفتیش کی اجازت دی جائے۔ادھر نیب کی جانب سے پنجاب پولیس کی درخواست کی مخالفت کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ نواز شریف سے تفتیش کے لیے پنجاب پولیس ہائی کورٹ سے رجوع کرے۔دریں اثناء نیب نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی ضمانت منسوخی کے لئے سپریم کورٹ سے رجوع کرلیا۔ نیب کے سپیشل پراسیکیوٹر اکرم قریشی نے عدالت میں درخواست دائر کر دی۔ نیب کی جانب سے دائر کی گئی درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ ہائیکورٹ نے حقائق کے برعکس شہباز شریف کی درخواست ضمانت منظور کی، شہباز شریف نے آشیانہ ہاو¿سنگ اور رمضان شوگر ملز کیس میں قومی خزانہ کو نقصان پہنچایا، شہباز شریف نے اختیارات سے بھی تجاوز کیا۔ درخواست میں استدعا کی گئی کہ سپریم کورٹ شہباز شریف کی ضمانت منظور کرنے کا ہائی کورٹ کا فیصلہ کالعدم قرار دے۔

Scroll To Top