700ارب روپے واپس کرنے اور جیل جانے کے ڈر سے بلاول بھٹو چلا رہے ہیں

  • بلاول کو جیل نظر آرہی ہے اور لوٹا ہوا پیسہ بھی واپس کرنا پڑے گا اس لیے ایک گھنٹہ طویل پریس کانفرنس کی
  • لوٹ مار کرنے والوں کو جیل کا سامنا کرنا پڑے گا یہی وجہ ہے کہ اب یہ لوگ بھائی بھائی بن گئے ہیں،سینئر تجزیہ کار

لاور(مانیٹرنگ ڈیسک) 700ارب روپے لوٹے گئے ہیں اور اب حکومت وہ پیسے واپس لینے کے لیے آصف علی زرداری کو گرفتار کرنے والی ہے اس لیے بلاول شور مچا رہے ہیں۔ پاکستان پیپلز پارٹی کی چیئرمین بلاول بھٹونے گزشتہ روز ایک گھنٹے کی پریس کانفرنس کی۔معروف صحافی نے انکشاف کیا ہے کہ اس طویل پریس کانفرنس کے پیچھے ایک خاص وجہ ہے، 700 ارب روپیہ لوٹا گیا ہے اور اس کے 26 ریفرنسز بنائے گئے ہیں۔اور اس کی ریکوری ہو گی اور لوٹ مار کرنے والوں کو جیل کا سامنا کرنا پڑے گا اور یہی وجہ ہے کہ اب یہ لوگ یہ سب کام کر رہے ہیں اور بھائی بھائی بن گئے ہیں۔ واضح رہے گذشتہ روز چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے اسپیکر سندھ اسمبلیسے ملاقات اور پارلیمانی پارٹی کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہہ سندھ اسمبلی پرافسوس ناک حملہ کیاگیا ہے، اسپیکر سندھ اسمبلی پیپلز پارٹی کا عہدہ نہیں ہے۔اپوزیشن کے خلاف بولنے والے وزیراعظم مودی اور کالعدم تنظیموں کے خلاف ایک لفظ نہیں بولتے جب کہ کالعدم تنظیموں کے ہمدردر وفاقی کابینہ میں موجود ہیں۔ جعلی اکاو¿نٹس جے ا?ئی ٹی میں ا?ئی ایس ا?ئی کو شامل کرکے اسے سیاست زدہ کردیا گیا۔ پتا نہیں ہر بار انہیں کیوںشوق ہے کہ راولپنڈی میں ٹرائل ہو۔ مقدمہ سندھ اور بینک اکانٹ سندھ کے لیکن کیس پنڈی شفٹ کیا جا رہا ہے، راولپنڈی میں ایسا کیا ہی 6 ماہ سے ہماری کردار کشی کی جا رہی ہے۔آرٹیکل 10 اے کے مطابق فری ٹرائل ہمارا حق ہے۔ جمہوریت میں ایسے تو نظام نہیں چل سکتا۔ چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ ہم سب جانتے ہیں کہ نیب کا آمدن سے زائد اثاثوں کا الزام ویسا ہی ہے جیسے کوئی پولیس آفیسر کسی بیگناہ شخص کو پکڑے اس پر کوئی چرس ڈال دیں اور 2 بوتل شراب کا الزام ڈال کر اسے اندر بند کردیں۔انہوں نے کہا کہ آمدن سے زائد اثاثوں کا الزام کسی پر بھی لگ سکتا ہے اور یہاں ہر پاکستانی کے لیے ایک قانون نہیں ہے۔انہوںنے کہا کہ نیب کو سیاسی انجینئرنگ کے لیے استعمال نہ کیا جائے۔ شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے اپنے چارٹر آف ڈیموکریسی میں، اپنے منشور میں کہا تھا کہ ہمیں نیب کو ختم کرنا ہے یہ ہماری بھی ناکامی ہے کہ ہم نیب میں کوئی اصلاحات یا اس مشن کو پورا نہیں کرسکے۔بلاول بھٹو نے کہا کہ نیب ایک ایسا ادارہ ہے کہ اگر اس میں آپ فرشتہ بھی چیئرمین نیب بنادیں تو تب بھی سیاسی انتقام ہی ہوگا کچھ اور نہیں۔

Scroll To Top