چین رواں سال 2019کی دوسری ششماہی میں 5Gموبائلز کی لانچنگ کیلئے پر عزم

(خصوصی رپورٹ):۔ چین کی رواں سال 2019میں منعقدہ 13ویں نیشنل کمیٹی برائے چائنیز پیپلز سیاسی مشاورتی کانفرنس (CPPCC)کے رکن ژانگ یوناگ نے کہا ہے کہ چین رواں سال2019کی دوسری ششماہی کے لیئے ملک میں 5Gموبائل فونز کی مارکیٹ میں لانچنگ کے لیے پر عزم ہے اور اس حوالے سے تمام ضروری لوازمات یقینی بنا لیئے گئے ہیںاپریل 2019کے حوالے سے چین کے سب سے بڑے سیاسی فورم CPPCCکے اجلاس کے حوالے سے ژانگ نے کہا کہ رواں سال کے حوالے سے اہم اقدامات پر فیصلے متوقع ہیں اور ملک میں ٹیلی کمیونیکیشنز کے شعبے کے حوالے سے اہم سنگِ میل یقینی بنائے جائیں گے، ا س حوالے سے ژانگ نے کہا کہ 2020تک چین میں 5Gموبائلز کے حوالے سے اہم ترین سل ثابت ہوگا، اور امید قوی ہے کہ 2020تک چین میں 5Gنیٹ ورک کے حامل تیزی ترین موبائلز مارکیٹس میں بہتات کیساتھ موجود ہونگے، یہ موبائلز موبائل انٹڑ نیٹ کی تیز ترین رفتار، اعلی کوالٹی، اور کسٹمر فرینڈلی5Gسروسز کی سہولت کو صارفین کیلئے یقینی بنائیں گےں، رکنCPPCCژانگ اس وقت بحثیت چائینہ یونیکام ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کیساتھ صدر کی حیثیت سے بھی کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے 5Gموبائلز نیٹ ورکس کے حوالے سے روزمرہ زندگی میں ممکنہ تبدیلیو ں کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ایک5Gراﺅٹر صبح کے وقت ایک خوبصورت دلفریب آواز کیساتھ مورننگ ویک اپ کال کی سہولت فراہم کرے گی وہیں ایک حساس بیڈ میٹرس پرآپ کے سونے کے حوالے سے آپکی نیند کی کوالٹی بارے مفید معلومات آپ کو فراہم کریگی۔ اور آپ کے نیند سے بیدار ہونے کے بعد آپ کا 5Gروٹر آپ کی کافی میشن کو ایک میسج فارورڈ کریگا اور آپ کی کافی مشین ایک خودکار مکینکی انداز میں آپ کی کافی تیار کرد ے گی۔ اور اس طرح سے ناشتے کے فوری بعد ایک آٹو پائلٹ آن لائن کیب کو آپ کے 5Gسروس کی جانب سے میسج خودکار انداز میں فارورڈ ر کر دیا جائیگا اور آن لائن کیپ آپ کیلئے تیز ترین روٹ پلان کر کے دے سکتی ہے۔ اسی طرح آپ کے آفس میں موجود5Gنیٹ ورک کی مدد سے آپ ورچوئل ریئلیٹی ٹیکنالوجی کی مدد سے ٹیلی کانفرنسزس بھی اٹینڈ کر سکتے ہیں، دوسری جانب ژانگ نے 4Gاور 5Gموبائلز کے حوالے سے وضاحت کی کہ بظاہر ایسا لگتا ہے کہ دونوں موبائلز میں کوئی خاص فرق نہیں ہے لیکن ایسا نہیں ہے ژانگ نے کہا کہ 5Gموبائل ڈیوائسز 4Gموبائلز کے مقابلے میں بہت تیز رفتار ہیں اور5Gموبائلز ڈیوائسزایک1GBڈیٹاکی مووی صرف تین سیکنڈ میں انٹر نیٹ سے ڈاﺅن لوڈ کیا جا سکتی ہے۔ اس طرح سے 5Gموبائلز ڈیوائسز نہ صرف تیز رفتار ہیں بلکہ انتہائی انٹیلی جینٹ ھامل کی بھی ڈیوائسز ہیں، ژانگ نے کہا مستقبل میں ٹیلیکام ڈیوائسز مکمل طور پر معاشرے کو یکسر تبدیل کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں اور تیز رفتار ڈیوائسزٹیلیکام انڈسٹری کو تیزی سے تبدیلی کی جانب لیکر گامزن ہیں۔ واضح رہے کہ چین نے 5Gٹیکنالوجی پر تجربات اور تحقیق کا آغاز 2016میں کر دیا تھا اور چین کے مختلف شروں میں 5Gٹیکنالوجی کا استعمال تجرباتی بنیادوں پرگزشتہ سال2018میں ہی شروع کیا گیا،اس ضمن میں قوی امید ہے کہ اگلے سال2020تک5Gٹیکنالوجی وسیع پیمانے پر چین میں شروع ہو جائیگی کیونکہ تجرباتی بنیادوں پر شروع کیئے گئے ماڈل پروگرام کے خاطر خواہ نتائج برامد ہوئے ہیں۔جس طرح سے موثر انداز میں اس ٹیکنالوجی کے استعمال کا آغاز ہوچکا ہے جوانتہائی مثبت پیش رفت ہے اور چین 5Gاستعمال میںسب سے آگے ہے۔۔

Scroll To Top