پاکستان کا پاک ایران گیس منصوبے سے قبل تاپی گیس پائپ لائن منصوبہ مکمل کرنے کا فیصلہ

پاکستان اور ترکمانستان کے مابین ”تاپی“ گیس پائپ لائن منصوبہ جلد مکمل کرنے بارے معاہدے پر دستخط ، دو مراحل میں مکمل کیا جائے گا

پہلے مرحلے میں 5سے6ارب ڈالر خرچ ہونگے ، دوسرے مرحلے میں 2ارب ڈالر اخراجات کا تخمینہ ہے، کل لاگت 8ارب ڈالر ہوگی

اسلام آباد (آن لائن) پاکستان اور ترکمانستان کے مابین ”تاپی“ گیس پائپ لائن منصوبہ جلد مکمل کرنے بارے معائدے پر دستخط ہو گئے (باقی صفحہ7 بقیہ نمبر14
ہیں، پاکستان نے پاک ایران گیس منصوبہ سے قبل تاپی گیس پائپ لائن منصوبہ مکمل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ پاکستان ترکمانستان کے مابین گیس پائپ لائن منصوبہ تاپی کی جلد تکمیل بارے معائدے پر دستخط منگل کے روز اسلام آباد میں ہوئے، دستخطوں کی تقریب میں وزیر پٹرولیم سرور خان اور ترکمانستان کے وزیر خارجہ بھی موجود تھے۔ پاکستان کی طرف سے سیکرٹری پٹرولیم نے معائدے پر دستخط کیے جبکہ ٹی پی سی ایل کے طرف سے معائدے پر دستخط امنینوف نے کیے، اس منصوبہ کو دو فیز میں مکمل کیا جائے گا پہلے مرحلہ میں منصوبہ پر 5سے6ارب ڈالر خرچ ہونگے جبکہ منصوبہ کے دوسرے مرحلہ میں کی تنصیب کی تکمیل پر 2ارب ڈالر اخراجات کا تخمینہ لگایا جارہا ہے اس طرح یہ منصوبہ پر لاگت 8ارب ڈالر لگائی جارہی ہے اس منصوبہ کی تکمیل کی مالی امداد کا دعدہ ایشیائی ترقیاتی بنک نے کر رکھا ہے۔ اس گیس پائپ لائن منصوبہ کی ابتداءترکمانستان کے گیس نکلنے والے علاقے گائی لیلنش سے ہوگی جو افغانستان کے راستے پاکستان تک گیس پائپ لائن جائے گی۔ اس منصوبہ کے تحت ترکمانستان سے پاکستان گیس لانے کےلئے 1680کلو میٹر گیس پائپ لائن بچھائی جائے گی یہ پائپ لائن چین کے مغربی علاقے تک بھی توسیع دیئے جانے کا امکان ہے اس منصوبہ کیلئے زمین کی خریداری جولائی 2019سے شروع ہو گی جبکہ منصوبہ پر تعمیراتی کاموں کا آغاز مئی2019میں شروع ہونے کا امکان ہے اس منصوبہ کی تعمیرات بارے ٹینڈر اگلے دہ ماہ کے اندر اندر جاری ہوگا۔

Scroll To Top