وزیر اعظم کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا طویل ترین اجلاس :26وزارتوں کی کارکردگی کا جائزہ

  • تمام وزراءکی کارکردگی پر اظہار اطمینان ، کسی بھی وزیر کا قلمدان تبدیل نہ کرنے کا فیصلہ ، ہر تین ماہ بعد وزراءکی کارکردگی کا جائزہ لینے کا بھی فیصلہ ،نئے اہداف مقرر ،نئے پاکستان کی بنیاد رکھ دی گئی ہے، محنت اور کوششیں تیز کریں تاکہ عوام کا معیار زندگی بہتر بنایاجاسکے، عمران خان
  • ہر وزارت عملدرآمد کا 5 سالہ مخصوص اسٹریٹجک پلان تشکیل دیگی، کارکردگی کا جائزہ لینے کے بعد جہاں ضرورت پیش آئے گی اصلاح کی جائے گی تاکہ مجموعی کارکردگی بہتر بنائی جاسکے ، جن وزراءکی کارکردگی تسلی بخش نہ ہوئی ان کے قلمدان تبدیل کیے جاسکیں گے
وزیر اعظم کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا طویل ترین اجلاس :26وزارتوں کی کارکردگی کا جائزہ

وزیر اعظم کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا طویل ترین اجلاس :26وزارتوں کی کارکردگی کا جائزہ

اسلام آباد( آن لائن ) وزیراعظم عمران خان نے100روزہ کارکردگی کے امتحان میں تمام وزراءکو پاس کر دیا، کسی وفاقی وزیر کا قلمدان تبدیل نہیں ہو گا، مزید تین ماہ تک کام جاری رکھنے کا گرین سگنل، نئے اہداف بھی مقرر کر دیئے، طویل دورانیے کے اجلاس میں کسی وزیر کا شوگر لیول کم ہوا تو کسی کو بھوک نے ستایا، وزیراعظم نے سنیکس سے تواضع کرکے شکایات کا ازالہ کیا، تفصیلات کے مطابق پیر کے روز وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا خصوصی اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزراءکی100روزہ کارکردگی رپورٹس کا جائزہ لیا گیا، اجلاس صبح ساڑھے دس بجے سے شروع ہو کر رات گئے تک جاری رہا، وزیراعظم عمران خان نے تمام وزراءکی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ فی الحال کسی وزیر کا قلمدان تبدیل نہیں کیا جارہا، وزراءکو مزید تین ماہ تک کام جاری رکھنے کا گرین سگنل سے دیا ہے، جبکہ نئے اہداف بھی مقرر کر دیئے ہیںِ وزیراعظم عمران خان نے وفاقی کابینہ کے وزراءکے قلمدان تبدیل ہونے کی افواہوں کی سختی سے تردید کرتے ہوئے کہا کہ ایسی خبریں دے کر انتشار پھیلایا جاتا ہے، ایسی کسی بھی کوشش کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے،ہر وزارت عملدرآمد کا 5 سالہ مخصوص اسٹریٹجک پلان تشکیل دیگی، کارکردگی کا جائزہ لینے کے بعد جہاں ضرورت پیش آئے گی اصلاح کی جائے گی تاکہ مجموعی کارکردگی بہتر بنائی جاسکے ، جن وزراءکی کارکردگی تسلی بخش نہ ہوئی ان کے قلمدان تبدیل کیے جاسکیں گے۔ وفاقی کابینہ کے خصوصی اجلاس میں وزارت خارجہ، داخلہ، خزانہ، اطلاعات، ریلوے، پانی، بجلی، ہا¶سنگ، منصوبہ بندی اور تعلیم سمیت تمام وزارتوں کی سو روزہ کارکردگی کا تفصیلی جائزہ لیا گیا، تمام وزراءنے انفرادی طور پ اپنی اپنی وزارتوں کی تحریری رپورٹ پیش کرنے کے ساتھ ساتھ وزیراعظم کو بریفنگ بھی دی، وزیراعظم نے سوال و جواب کے سلسلے کے بعد تمام وزراءکی سو روزہ کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے موجودہ وزارتوں میں ہی کام جاری رکھنے کی ہدایت کر دی ہے۔

Scroll To Top