مشکلات پر قابو پائیں گے، عوام جلد واضح تبدیلی دیکھیں گے، عمرا ن خان

  • وزراء کی کارکردگی کا باقاعدگی سے جائزہ لیا جائے گا وہ اپنی کارکردگی بارے جوابدہ ہیں، پی ٹی آئی حکومت وزراءکی کارکردگی کا جائزہ لینے کی روایت قائم کرے گی،وزیراعظم کی خیبر پختونخوا سے تعلق رکھنے والے ارکان اسمبلی سے گفتگو
  • پاکستان یمن تنازع کا پرامن اور قابل قبول حل چاہتا ہے، تمام فریقین رضامند ہوں تو امن عمل کیلئے کردار ادا کرنے کو تیار ہیں، وزیر اعظم سے یمن کے سفیر محمد اطہر العشبی کی ملا قات،باہمی تعا ون اور دلچسپی کے امور سمیت خطے میں سیکورٹی صورتحال پر تبادلہ خیالات
اسلام آباد:۔ وزیر اعظم عمران خان متروکہ وقف املاک بورڈ اجلا س سے خطاب کر رہے ہیں

اسلام آباد:۔ وزیر اعظم عمران خان متروکہ وقف املاک بورڈ اجلا س سے خطاب کر رہے ہیں

اسلام آباد (آن لائن) وزیراعظم عمران خان نے ممبران قومی اسمبلی سے کہا ہے کہ وہ حکومتی وزراءکی کارکردگی پر نظر رکھیں اور انہیںآگاہ کریں، میری وزارت عظمیٰ میں ایسا نہیں ہوگا کہ وزراءاپنی مرضی سے کچھ کرتے رہیں اور انہیں کوئی نہ پوچھے، وزراءکی کارکردگی کا باقاعدہ جائزہ لیا جائے گا اور ناقص کارکردگی پر انہیں پوچھا جائے گا۔ شکایت سنگین ہوئی تو انہیں ہٹانے میں دیر نہیں کروں گا۔ وزیراعظم نے ان خیالات کا اظہار کے پی کے کے ارکان اسمبلی سے ملاقات میں کیا۔ صوابی ‘ مردان ‘ چارسدہ ‘ نوشہرہ اور پشاور سے منتخب ہونے والے ارکان اسمبلی نے وزیراعظم آفس میں ان سے ملاقات کی۔ ذرائع کے مطابق کئی ممبران اسمبلی نے وزیراعظم کو شکایت کی کہ صوبائی اور وفاقی وزراءان کی بات نہیں سنتے اور ان کے جائز مسائل پر بھی توجہ نہیں دی جارہی۔ وزیراعظم نے تمام ممبران اسمبلی کی باتیں اطمینان سے سنیں اور واضح کیا کہ ماضی کی حکومتوں کی طرح ہمارے وزراءبے لگام نہیں ہوں گے۔ ان کی کارکردگی کی جانچ پرکھ کی جاتی رہے گی۔ ممبران اسمبلی اپنی شکایات براہ راست مجھے بتائیں۔ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت وزراءپر نظر رکھنے کی روایت قائم کرے گی۔ ہم احتساب کا بھی جاری رکھیں گے اور احتساب کے خوف سے شور مچائے شور والوں کو پرواہ کئے بغیر اپنا کام جاری رکھیں گے۔ اس موقع پر وزیراعظم نے ممبران اسمبلی سے کہا کہ وہ حوصلہ رکھیں ہماری مشکلیں آئندہ چھ ماہ میں مکمل طور پر ختم ہوجائیں گی۔ 35 سال سے کم عمر کے دس لاکھ نوجوان ہمارا اصل سرمایہ ہیں۔ ہم ان کی صلاحیتوں سے ملک کی تقدیر بدل دیں گے۔ وزیراعظم نے ممبران اسمبلی سے کہا کہ فوری ریلیف کے طور پر آپ لوگ اپنے اپنے حلقوں میں بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام پر کام کریں۔ جن ممبران کے حلقوں میں اس پروگرام کا سروے نہیں ہوا ہے وہاں کی تفصیلات فوراً فراہم کی جائیں تاکہ سروے کا انتظام کیا جاسکے۔ وزیراعظم نے ممبران اسمبلی سے کہا کہ آپ کے حلقوں کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرائے جائیں گے اور اس میں کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔ وزیراعطم نے اپنے ترقیاتی پروگرام اور حکومت کی ترجیحات سے بھی ممبران اسمبلی کو آگاہ کیا۔ اس ملاقات کے موقع پر سپیکر قومی اسمبلی اسد قصر ‘ وزیر دفاع پرویز خٹک‘ وزیر مملکت علی محمد خان اور وزیراعظم کے معاون خصوصی نعیم الحق بھی موجود تھے۔

دریں اثناء وزیراعظم عمران خان سے یمن کے سفیرمحمد مطہرالعشبی نے ملاقات کی جس میں پاک یمن تعلقات اور مشرق وسطیٰ میں امن وسلامتی کے معاملات پر بات چیت گئی۔بدھ کے روز وزیر اعظم ہا ﺅ س میں وزیر اعظم عمر ان خان سے یمن کے سفیر محمد اطہر العشبی نے ملا قات کی ، ملا قات میں دونو ں ملکو ں کے درمیان باہمی تعا ون اور دلچپی کے امور سمیت خطے میں سکیکورٹی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ وزیراعظم عمران خا ن نے سفیر کو یمنی قیادت کے لیے نیک خواہشات کا پیغام دیتے ہو ئے کہا کہ پاکستان یمن تنازع کا پرامن اور قابل قبول حل چاہتا ہے، تمام فریقین رضامند ہوں تو پاکستان امن عمل کیلئے کردار ادا کرسکتا ہے۔واضح رہے کہ وزیراعظم نے دورہ سعودی عرب کے بعد 24 اکتوبر کو قوم سے خطاب میں کہا تھا کہ پاکستان حوثی باغیوں اور یمن میں سعودی اتحاد کے درمیان ثالث کا کردار ادا کرے گا۔

Scroll To Top