نیب ایگزیکٹوبورڈ اجلاس: سعد رفیق، انوشہ رحمان ،اسحاق ڈاراور ثنا اللہ زہری کیخلاف تحقیقات کافیصلہ

  • سابق وفاقی وزیر منظور وٹو ،سابق صوبائی وزیر منظور وسان ،سابق رکن قومی اسمبلی افتخار گیلانی، ڈپٹی آڈیٹر جنرل غلام محمد میمن اور خیبر پختونخوا احتساب کمیشن کے افسران کے خلاف بھی انکوائریوں کی منظوری
  • 22انویسٹی گیشنز کی بھی منظوری ،تمام تحقیقات الزامات کی بنیاد پر شروع کی گئی ہیں اور نیب متعلقہ افراد سے قانون کے مطابق ان کا موقف معلوم کرے گا،چیئرمن نیب جسٹس (ر)جاوید اقبال کا اجلاس سے خطاب
اسلام آباد:۔ چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال ایگزیکٹو بورڈ اجلاس کی صدارت کر رہے ہیں

اسلام آباد:۔ چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال ایگزیکٹو بورڈ اجلاس کی صدارت کر رہے ہیں

اسلام آباد (صباح نیوز)قومی احتساب بیورو (نیب)نے سابق وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق اور سابق وزیر اعلی بلوچستان ثنا اللہ زہری سمیت منظور وسان کے خلاف بھی نیب انکوائریوں کی منظوری دے دی۔نیب کے چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کی زیر صدارت ایگزیکٹوبورڈ کا اجلاس ہوا جس میں بورڈ نے 9 انکوائریوں کی منظوری دی۔نیب اعلامیے کے مطابق سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق، سابق وزیراعلی بلوچستان ثنا اللہ زہری، سابق وفاقی وزیر منظور وٹو اور سندھ کے سابق صوبائی وزیر منظور وسان کے خلاف انکوائری کی منظوری دی۔اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ سابق رکن قومی اسمبلی افتخار گیلانی، ڈپٹی آڈیٹر جنرل غلام محمد میمن اور خیبر پختونخوا کے احتساب کمیشن کے افسران کے خلاف بھی انکوائری کی منظوری دی گئی ہے۔اعلامیے میں بتایا گیا کہ اجلاس میں اجلاس میں انکوائریوں کے علاوہ 22 انویسٹی گیشنز کی بھی منظوری دی گئی۔اعلامیے کے مطابق سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار، انوشے رحمان، سابق چیئرمین پی ٹی اے اسماعیل شاہ اور دیگر کے خلاف تحقیقات کی منظوری دی گئی ہے۔قومی احتساب بیورو کا کہنا ہے کہ تمام تحقیقات الزامات کی بنیاد پر شروع کی گئی ہیں اور نیب متعلقہ افراد سے قانون کے مطابق ان کا موقف معلوم کرے گا، اس موقع پر چیئرمین نیب کا کہنا تھا کہ احتساب سب کیلئے کی پالیسی پر سختی سے عمل جاری رہے گا۔

Scroll To Top