اسحاق ڈار کی جائیداد نیلامی سے متعلق پیشرفت رپورٹ احتساب عدالت میں جمع

  • اسحاق ڈار کے اکاﺅنٹس میں موجود 50کروڑ سے زائد کی رقوم اور لاہور میں ایک گھر پنجاب حکومت کی تحویل میں دے دیاگیا
  • اسحاق ڈار کی گاڑیاں تحویل میں لینے کے لیے رہائش گاہ پر کارروائی کی گئی لیکن وہاں موجود نہ تھیں، تلاش جاری ہے ، رپورٹ

احتساب عدالت نے اسحاق ڈار کو مفرور قرار دیدیا

اسلام آباد(صباح نیوز) سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی جائیداد نیلامی بینک اکانٹس قبضے میں لیے جانے سے متعلق پیش رفت رپورٹ احتساب عدالت میں جمع کرادی گئی۔احتساب عدالت نے آمدن سے زائد اثاثوں کے نیب ریفرنس میں عدالت کے روبرو پیش نہ ہونے پر اسحاق ڈار کی اثاثوں کی قرقی کا حکم دیا تھا۔تفتیشی افسر نادر عباس نے اثاثوں کی قرقی سے متعلق رپورٹ احتساب عدالت میں جمع کرادی جس میں بتایا گیا ہے کہ نیب نے اسحاق ڈار کے اکانٹس اور ان میں رقم کی تفصیلات پنجاب حکومت کو فراہم کردیں۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اسحاق ڈار اور ان کی کمپنیوں کے بینک اکاﺅنٹس میں 50کروڑ 83لاکھ سے زائد رقم ہے اور یہ رقم صوبائی حکومت کی تحویل میں دی گئی۔تفتیشی افسر نے رپورٹ میں بتایا کہ اسحاق ڈار کا گلبرگ 3لاہور کا گھر صوبائی حکومت کی تحویل میں دے دیا تاہم موضع ملوٹ اسلام آباد میں 6ایکڑ اراضی کیس کی تفتیش سے پہلے بک چکی تھی۔رپورٹ کے مطابق اسحاق ڈار کی ایک ہاﺅسنگ سوسائٹی میں 3پلاٹ بھی دسمبر 2017میں عدالتی حکم پر قرق کیے گئے تھے۔نیب رپورٹ میں بتایا گیا کہ اسحاق ڈار کی گاڑیاں تحویل میں لینے کے لیے رہائش گاہ پر کارروائی کی گئی لیکن وہاں گاڑیاں نہیں تھیں جن کی تلاش جاری ہے، گھر کی ڈی وی آر بھی وصول کی گئی لیکن گاڑیاں گھر سے غائب ہیں۔نیب رپورٹ کے مطابق اسحاق ڈار اور ان کی اہلیہ کے شئیرز کی قرقی پر ایس ای سی پی کی رپورٹ کا انتظار ہے اور رپورٹ ملنے پر عدالت کو پیش رفت سے آگاہ کیا جائے گا۔واضح رہے کہ پاناما کیس کے فیصلے کی روشنی میں نیب نے اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثوں کا ریفرنس احتساب عدالت میں دائر کر رکھا ہے جس میں انہیں مفرور قرار دیا جاچکا ہے۔سابق وزیر خزانہ کو وطن واپس لانے کے لیے ایف آئی اے کی جانب سے ریڈ وارنٹ جاری کرتےہوئے انٹرپول کو بھی درخواست دی جاچکی ہے۔28ستمبر کو نیب نے اسحاق ڈار کی قرق شدہ جائیداد کی تفصیلات عدالت میں جمع کرائیں جس کے مطابق سابق وزیرخزانہ کے دبئی میں 3فلیٹس، گلبرگ لاہور میں ایک گھر، چار پلاٹس اور اسلام آباد میں بھی 4پلاٹس ہیں۔نیب کے مطابق اسحاق ڈار اور ان کی اہلیہ کے پاس پاکستان میں 6گاڑیاں ہیں جن میں 3لینڈ کروزر، 2مرسڈیز اور ایک کرولا گاڑی ہے۔نیب دستاویزات کے مطابق اسحاق ڈار اور ان کی اہلیہ کی شراکت میں ٹرسٹس کے لاہور اور اسلام آباد کے مختلف بینکوں میں اکاﺅنٹس ہیں۔نیب نے عدالت کو بتایا تھا کہ بیرون ملک تین کمپنیوں میں اسحاق ڈار شراکت دار بھی ہیں جب کہ میاں بیوی نے ہجویری ہولڈنگ کمپنی میں 34لاکھ 53ہزار کی سرمایہ کاری بھی کر رکھی ہے۔

Scroll To Top