صوبے کی آمدن بڑھانے کیلئے دوست ممالک سے تجارتی تعلقات کو فروغ دیا جائیگا،محمود خان

  • بیرونی سرمایہ کاروں کو سہولیات کی فراہمی میں کوئی کسر اٹھا نہیں رکھی جائے گی‘وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا
پشاور۔ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان کو 100 روزہ ایجنڈے پر عملدرآمد کے بارے میں بریفنگ دی جا رہی ہے

پشاور۔ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان کو 100 روزہ ایجنڈے پر عملدرآمد کے بارے میں بریفنگ دی جا رہی ہے

پشاور(آن لائن)وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے کہا ہے کہ امن و امان اور لوگوں کی فلاح و بہبود ہماری اولین ترجیح ہے۔ سیکورٹی پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ صوبے کی آمدن (ریونیو) میں اضافہ کرنے کیلئے افغانستان ، وسطی ایشیائی ممالک اور چین سمیت تمام دوست ممالک کے ساتھ تجارت کو مزید فروغ د یا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ میں امریکہ کے کونسل جنرل جوناتھن شرئیر سے ملاقات کے دوران کیا۔ دونوں نے باہمی دلچسپی کے امور ، سیکورٹی کی صورت حال اور صوبہ میں نئے شامل ہونے والے اضلاع پر تفصیلی بات چیت کی۔ وزیراعلیٰ نے مختلف منصوبوں میں امریکہ کی حکومت اور عوام کی طرف سے تعاون پر کونسل جنرل کا شکریہ ادا کیا۔ اجلاس میں زراعت، گومل زام ڈیم، افغان مہاجرین، سپیشل اکنامک زون، گورننس اور صوبائی حکومت کے 100 دن ایجنڈے پر سیرحاصل گفتگو ہوئی۔ وزیراعلیٰ نے
کہا کہ غیر ملکیوں کے لئے سابقہ فاٹا کے علاقہ کیلئے این او سی کا اجراءوفاقی حکومت کی ذمہ داری ہے تاہم صوبائی حکومت ترقیاتی منصوبوں کیلئے بیرونی سرمایہ کاروں کو ہر قسم کی سہولیات فراہم کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑے گی۔وزیراعلیٰ نے کونسل جنرل کو بتایا کہ افغانستان ہمارا پڑوسی اور دوست ملک ہے۔ پاکستان نے1979 سے لیکر آج تک افغان مہاجرین کی ہر طرح خدمت کی ہے اور آئندہ بھی کرتے رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ فوج کی قربانیوں سے نئے شامل ہونے والے اضلاع سے دہشت گردوں کا صفایا کر دیا گیا ہے۔ اور عام آدمی اپنے آپ کو محفوظ محسوس کرہا ہے۔ پی ٹی آئی حکومت کی عوام دوست پالیسیوں کی وجہ سے صوبہ خیبرپختونخوا کے ہر شعبے میں مثبت تبدیلیاں آئی ہیں۔ یو ایس کونسل جنرل نے پی ٹی آئی حکومت کے ریفارمز ایجنڈے کو سراہا اور یقین دلایا کہ وہ عوام کی فلاح و بہبود کے کاموں میں صوبائی حکومت کو ہر قسم کی مدد اور سپورٹ فراہم کریں گے۔

Scroll To Top