نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزا معطلی کی درخواستوں پر سماعت کیلئے نیا بینچ تشکیل

  • جسٹس اطہر من اللہ، جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب پر مشتمل بینچ شریف فیملی کی اپیلوں پر سماعت کرے گا

نواز مریم صفدراسلام آباد(آن لائن) سابق وزیراعظم نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کے خلاف ایون فیلڈ ریفرنس میں نیا بینچ تشکیل دے دیاگیا ہے، ذرائع کے مطابق جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب پر مشتمل بینچ شریف فیملی کی اپیلوں پر سماعت کرے گا، اس سے پہلے جسٹس محسن اختر کیانی اور جسٹس اطہر من اللہ پر مشتمل بینچ تشکیل دیا گیا تھا، بینچ میں شامل فاضل جج جسٹس محسن اختر کیانی، فاضل جج شوکت عزیز صدیقی کے الزامات کے بعد رخصت پر چلے گئے، ذرائع نے آن لائن کو بتایا بعدزاں فاضل جج محسن اختر کیانی نے خود کو بینچ سے الگ کرنے کیلئے چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس انور خان کاسی سے درخواست کی، جس کے بعد فاضل جج کو شریف فیملی کی اپیلوں کے حوالے سے تشکیل دیئے گئے روسٹرم سے الگ کر دیا گیا، نواز شریف، مریم نواز اور محمد صفدر کی سزا معطلی کی درخواستوں پر بھی یہی بنچ سماعت کرے گا۔ذرائع کا مزید کہنا ہے ممکنہ طور پر جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب پر مشتمل نیا بینچ 10ستمبر کو سماعت کرے گا، واضح رہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کی جانب سے لندن میں ایون فیلڈ پراپرٹی ریفرنس میں سزا کے بعد عدالت عالیہ اسلام آباد سے رجوع کیا گیا تھا، لیکن موسم گرمائی چھٹیوں کی وجہ سے روسٹرم کی عدم دستیابی کی وجہ سے درخواستیں التوا کا شکار تھیں، جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے ایون فیلڈ پراپرٹی میں مزید سماعت ملتوی کر دی تھی، اسلام آباد کی احتساب عدالت نمبر ایک کے جج محمد بشیر خان نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو ایون فیلڈ پراپرٹی ریفرنس میں 7سال جبکہ مریم نواز کو گیارہ اور کیپٹن (ر) صفدر کو ایک سال کی سزا سنا رکھی ہے، نیب حکام کی جانب سے عدالت کے فیصلے پر عمل درآمد یقینی بناتے ہوئے لندن واپسی پر مذکورہ بالا شخصیت کو گرفتار کرکے اڈیالا جیل منتقل کر دیا، سابق وزیراعظم نواز شریف کے صاحبزادے حسن اور حسین نواز تاحال مفرور ملزمان کی حیثیت سے لندن میں مقیم ہیں، فرد جرم عائد کرنے اور فیصلہ آنے کے بعد مجرمان کی جانب سے عدالت عالیہ اسلام آباد سے رجوع کیا گیا۔

Scroll To Top