اداروں پر الزامات لگا کر دباﺅ میں لانے کی روایت ختم ہونی چاہئے، الیکشن کمیشن

  • بغیرثبوت کے انتخابات کی شفافیت کے خلاف بیانات افسوسناک ہیں ،جے یو آئی ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا استعفیٰ کا مطالبہ مسترد
  • انتخابی تنازعات کے حل کیلئے ٹریبونلز موجود ہیں جس کو شکایت ہے وہ الزامات کے بجائے پٹیشن دائر کرے

الیکشن کمیشناسلام آباد (این این آئی)الیکشن کمیشن نے جے یو آئی ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا استعفیٰ کا مطالبہ مسترد کر دیا۔الیکشن کمیشن کے ذرائع کے مطابق انتخابات 2018 صاف شفاف اور غیر جانبدارانہ ہوئے جس میں عوام نے آزادانہ ماحول میں حق رائے دہی استعمال کیا۔بغیرثبوت کے انتخابات کی شفافیت کے خلاف بیانات افسوسناک اورحقائق کے برعکس ہیں۔الیکشن کمیشن کے مطابق ذاتی مفادات کی بنیاد پرپاکستانی عوام کے مینڈیٹ کا احترام نہ کرنا جمہوریت کے منافی ہے،الیکشن کمیشن نے انتخابی تنازعات کے حل کیلئے ٹریبونل مقرر کردیے ہیں،جس کو شکایت ہے وہ الزامات کے بجائے ٹریبونل میں پٹیشن دائر کرے۔الیکشن کمیشن نے خبردار کیا کہ قومی اداروں پر الزامات لگا کر دباﺅ میں نہ لایا جائے، الیکشن کمیشن کسی قسم کے دباﺅ کو قبول نہیں کرے گا۔

Scroll To Top