وزیراعظم نے گیس چوری کی روک تھام کےلئے جامع منصوبہ بندی کی ہدایت کر دی

  • گیس و تیل کے شعبہ میں طلب و رسد کی صورتحال بارے بریفنگ،تاپی اور پاک ایران گیس پائپ لائن کی تعمیر و فعالیت پر پیشرفت ، دیگر اہم منصوبوں بارے بھی آگاہی دی گئی
  • وزیراعظم نے نجکاری، سی پیک اور توانائی کمیٹیاں تشکیل دےدیں ،نجکاری کمیٹی کے چیئرمین اسد عمر،توانائی کمیٹی کے چیئرمین غلام سرور خان اورسی پیک کمیٹی کے چیئرمین خسرو بختیار مقرر

عمران خان کی بطور  وزیراعظم آفیشل تصویر جاریاسلام آباد (این این آئی)وزیراعظم عمران خان نے پٹرولیم ڈویژن کو ملک میں گیس چوری کی روک تھام کےلئے جامع منصوبہ وضع کرنے کی ہدایت کی ہے ۔وزیراعظم نے یہ ہدایت منگل کو وزیراعظم آفس میں تیل و گیس کے شعبہ سے متعلق ایک بریفنگ کی صدارت کرتے ہوئے دی۔اس موقع پر وزیرپٹرولیم غلام سرور خان ، ایڈیشنل سیکرٹری انچارج پیٹرولیم ڈویژن میاں اسعد حیا الدین اور سینئر سرکاری افسران بھی موجود تھے ۔ایڈیشنل سیکرٹری انچارج پٹرولیم ڈویژن نے وزیراعظم کو ملک میں گیس اور تیل کے شعبہ میں طلب اور رسد کی صورتحال کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی۔ وزیراعظم کو ”تاپی “ اور پاک ایران گیس پائپ لائن کی تعمیر اور فعالیت پر پیش رفت کے ساتھ ساتھ دیگر اہم منصوبوں کے بارے میں بھی آگاہ کیا گیا جو ملک کی بڑھتی ہوئی توانائی ضروریات کو پورا کرنے کےلئے زیر غور ہیں۔ انہوں نے گیس کی فروخت کی قیمتوں کو معقول بنانے ، قابل وصول رقوم کی بازیابی ، پالیسیوں پر عدم عملدرآمد اور ان میں بار بار تبدیلی جس کے نتیجے میں سرمایہ کاروں کے اعتماد کو ٹھیس پہنچتی ہے ،گزشتہ پانچ سال کے دوران تیل و گیس کی تلاش کے بلاکس ایوارڈ نہ کرنے سمیت مختلف مسائل کو بھی اجاگر کیا۔ وزیراعظم نے ہدایت کی کہ تیل و گیس کے شعبہ کے مختلف مسائل کے حل کے لئے واضح نظام الاوقات کے ساتھ جامع لائحہ عمل جلد از جلد پیش کیا جائے۔دریں اثناء
وزیراعظم عمران خان نے کابینہ کی نجکاری، سی پیک اور توانائی کمیٹیاں تشکیل دے دیں ،وزیراعظم عمران خان نے توانائی کے لیے کابینہ کی 6 رکنی کمیٹی تشکیل دی ہے جس کا چیئرمین وزیر پیٹرولیم غلام سرور خان کو مقرر کیا گیا۔ منگل کو جاری نوٹی فکیشن کے مطابق کمیٹی میں وزیر خزانہ، وزیر منصوبہ بندی، وزیر ریلوے، مشیر تجارت و ٹیکسٹائل مشیر صنعت و پیداوار بھی شامل ہیں ، سیکرٹری کابینہ ڈویژن بھی کمیٹی کا حصہ ہوں گے۔وزیراعظم نے 7 رکنی کابینہ کمیٹی برائے نجکاری بھی تشکیل دی ہے جس کا چیئرمین وزیر خزانہ اسد عمر کو مقرر کیا گیا ہے۔نوٹیفکیشن کے مطابق وزیر قانون، وزیر منصوبہ بندی، مشیر تجارت و ٹیکسٹائل صنعت و پیداوار، وزیراعظم کے مشیر برائے ادارہ جاٹی اصلاحات اور کفایت شعاری کمیٹی کے ارکان بھی کمیٹی میں شامل ہیں۔کمیٹی میں مشیر تجارت و ٹیکسٹائل، صنعت و پیداوار و سرمایہ کاری اور سیکریٹری کابینہ ڈویژن بھی کمیٹی کا حصہ ہیں ، وزیر نجکاری یا مشیر کی تعیناتی پر ممبر مقرر کیا جائے گا۔وزیراعظم نے 9 رکنی کابینہ کمیٹی سی پیک بھی تشکیل دی ہے جس کا چیئرمین وزیر منصوبہ بندی خسرو بختیار کو مقرر کیا گیا ہے۔نوٹی فکیشن کے مطابق وزیر خارجہ، وزیرقانون وانصاف، وزیرخزانہ، وزیر پیٹرولیم، وزیر ریلوے اور وزیر مملکت برائے داخلہ کمیٹی میں شامل ہیں جبکہ کمیٹی میں مشیر تجارت وٹیکسٹائل،صنعت وپیداوار و سرمایہ کاری بھی ہوں گے ،سیکرٹری کابینہ ڈویڑن بھی کابینہ کمیٹی سی پیک کے ممبر مقرر کیے گئے ہیں ،کابینہ ڈویژن نے تینوں کمیٹیوں کی تشکیل کا نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے۔

Scroll To Top