وزیر اعظم کی زیر صدارت وفاقی کابینہ اجلاس:100روزہ پلان پر تیزی سے عملدرآمد کافیصلہ

  • چیئرمین نیشنل بنک کو عہدے سے ہٹانے کی منظوری جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کیلئے کمیٹی قائم
  • نیب قوانین میں تبدیلی کیلئے ٹاسک فورس کا قیام فاٹا انضمام کے عمل کو تیز کرنے کیلئے کمیٹی قائم
  • سول قوانین میں ترمیم کیلئے ٹاسک فورس کا قیام خواتین کی وراثت کیلئے قانون میں ترامیم کا فیصلہ
  • سادگی اور اخراجات میں کمی کیلئے ٹاسک فورس کا قیام فوری شجرکاری مہم شروع کرنے کا فیصلہ
  • ایک کروڑ نوکریوں، 50لاکھ گھروں کی تعمیر کیلئے ٹاسک فورس کا قیام، ٹاسک فورس کے پاس عملدرآمد رپورٹ بارے 90دن کا وقت ، سی پیک پروجیکٹس سے متعلق کمیٹی کا قیام،کسی کنٹریکٹ ملازم کو برطرف نہیں کیا جائےگا،،وزیر اعظم ہر 15 دن بعد بنائی گئی تمام ٹاسک فورسز سے پیشرفت رپورٹ لیں گے
اسلام آباد:۔ وزیر اعظم عمران خان وفاقی کابینہ اجلاس کی صدارت کر رہے ہیں

اسلام آباد:۔ وزیر اعظم عمران خان وفاقی کابینہ اجلاس کی صدارت کر رہے ہیں

اسلام آباد(این این آئی)وفاقی کابینہ نے چیئرمین نیشنل بینک سعید احمد خان کو عہدے سے ہٹانے ،نیب قوانین کو موثر بنانے کیلئے اس میں ترامیم کرنے ،جنوبی پنجاب صوبہ کے قیام کیلئے کمیٹی بنانے، سول سروس ریفارمز اور وفاقی حکومت کے عہدوں کی تنظیم نو، وفاقی وزارتوں، محکموں اور ڈویژنز کے اخراجات میں کمی کا جامع میکانزم بنانے، سادگی اور اخراجات میں کمی کیلئے ٹاسک فورس بنانے، 100 روزہ پلان پر عمل درآمد سے متعلق جامع نظام بنانے کی منظوری دیدی ہے جبکہ خواتین کا وراثت میں حصہ یقینی بنانے کیلئے قانون میں ترامیم کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ منگل کو وفاقی کابینہ کا اجلاس وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت منعقد ہوا جس میں کئی اہم فیصلے کئے گئے۔ وزیراعظم ہاو¿س میں وفاقی کابینہ کا ہونےوالا یہ تیسرا اجلاس تھا جس میں 9 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا۔وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد مشیر ماحولیات امین اسلم کے ہمراہ میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات ونشریات فواد چودھری نے بتایا کہ وفاقی کابینہ نے چیئرمین نیشنل بینک سعید احمد خان کو عہدے سے ہٹانے کی منظوری دے دی ہے جبکہ طارق جمالی نیشنل بینک کے قائم مقام صدر ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ چیئرمین نیشنل بینک سابق وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے ساتھ منی لانڈرنگ میں ملوث ہیں ۔انہوں نے کہا کہ نیب کے قوانین میں مزید ترامیم کی جائیں گی، نیب قوانین میں ترامیم کیلئے وزیر قانون فروغ نسیم کی سربراہی میں ٹاسک فورس بنادی گئی ہے جو اپنی سفارشات کابینہ کے سامنے رکھے گی۔انہوں نے کہا کہ بلاامتیاز احتساب پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا ۔انہوں نے بتایا کہ وفاقی کابینہ نے سول سروس ریفارمز اور وفاقی حکومت کے عہدوں کی تنظیم نو، وفاقی وزارتوں، محکموں اور ڈویژنز کے اخراجات میں کمی کا جامع میکانزم بنانے، سادگی اور اخراجات میں کمی کیلئے ٹاسک فورس بنانے، 100 روزہ پلان پر عمل درآمد سے متعلق جامع نظام بنانے کی منظوری دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عدلیہ کےساتھ مل کر سول لاز میں ترامیم کی جائینگی تاکہ مقدمات کے فیصلے جلد ہوسکیں۔ انہوں نے کہا کہ سول لاز میں ہمارا انڈیکس افغانستان سے بھی کم ہے۔انہوں نے کہا کہ انسداد دہشت گردی ایکٹ میں بھی ترامیم لائی جائیں گی تاکہ انہیں مزید موثر بنایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ مار خداداد لق کو نیکٹا کا سربراہ بنا دیا گیا ہے۔فواد چودھری نے بتایا کہ جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کیلئے کمیٹی قائم کردی گئی ہے، جنوبی پنجاب صوبے کیلئے قائم کی گئی کمیٹی میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور خسرو بختیار شامل ہیں۔انہوں نے بتایا کہ یہ کمیٹی مسلم لیگ (ن) ، پاکستان پیپلز پارٹی اور دیگرجماعتوں سے رابطہ کرے گی کیوں کہ صوبے کے قیام کےلئے آئینی ترمیم کی ضرورت ہوتی ہے۔وزیر اطلاعات نے بتایا کہ ایک کروڑ نوکریاں اور 50 لاکھ گھروں کیلئے بھی ٹاسک فورس بنادی ہے۔گھروں اور نوکریوں سے متعلق ٹاسک فورس کو 90 دن کا وقت دیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ وزیر اعظم ہر 15 دن بعد تمام ٹاسک فورسز سے پیشرفت رپورٹ لیں گے، گورننس کے حوالے سے ریفارمز کی جائیں گی۔فواد چوہدری نے کہا کہ کسی بھی کنٹریکٹ ملازم کو برطرف نہیں کیا جائے گا،بیوروکریسی میں موجود ایمان دار افسروں کو ڈرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے مگر جو ایماندار نہیں انہیں ضرور ڈرنا چاہئے۔انہوں نے بتایا کہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں فاٹا کے خیبر پختونخوا کے ساتھ انضمام کے عمل کو تیز کرنے کیلئے بھی کمیٹی بنادی گئی ہے۔انہوں نے بتایا کہ فاٹا کے متعلق کمیٹی میں گورنر، وزیراعلیٰ، وزیر دفاع اور مشیر اسٹبلشمنٹ شامل ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ اجلاس میں سی پیک کا ریویو کیا گیا ہے ، سی پیک کے 28 ارب کے پراجیکٹ جاری ہیںجن میں سے 22 ارب کے پراجیکٹ انرجی سے متعلق ہیں۔انہوں نے کہا کہ تمام پراجیکٹس کےلئے ایک ایک کمیٹی بنائی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کو مخدوم خسرو بختیار اس حوالے سے بریفنگ دینگے۔ انہوں نے کہا کہ کابینہ اجلاس میں خواتین کا وراثت میں حصہ یقینی بنانے کیلئے قانون میں ترامیم کا فیصلہ کیا گیا ہے اور وزیراعظم نے فیصلہ کیا ہے کہ اس حوالے سے بھرپور مہم چلائی جائیگی تاکہ خواتین کو وراثت میں ان کا حصہ مل سکے۔انہوں نے کہاکہ وفاقی کابینہ نے وفاقی حکومت کے سینئر افسران کی تبادلوں کی توثیق بھی کی ہے ۔انہوں نے کہا کہ بیرون ملک موجود پاکستان کا پیسہ وطن واپس لانے کیلئے مشیر اسٹیبلشمنٹ رپورٹ تیار کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مشیر اسٹیبلشمنٹ مختلف ممالک کے قوانین کاجائزہ لے رہے ہیں، کابینہ نے مشیر اسٹیبلشمنٹ کو دو ہفتوں میں جامع رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیاہے۔فواد چودھری نے کہا کہ بیرون ملک رکھی رقوم کی واپسی کے حوالے سے وفاقی کابینہ کا خصوصی اجلاس ہوگا۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کی جانب سے ہیلی کاپٹر کا استعمال وی آئی پی کلچر نہیں ہے، وی آئی پی کلچر اور سیکیورٹی میں فرق کرنا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان وزیر اعظم پاکستان ہیں، کیا وہ ٹیکسی پر بنی گالہ جائیں؟۔انہوں نے کہا کہ سیکیورٹی کے ساتھ وزیر اعظم کے بنی گالہ جانے سے عوام کو مشکلات ہوں گی۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے ہیلی کاپٹر استعمال کرنے سے ہونےوالا خرچہ گوگل کیا تھا، آپ بھی گوگل کرکے دیکھ لیں پتہ چل جائےگا وزیر اطلاعات نے کہا کہ پاک پتن کے ڈی پی او کے معاملہ کی پنجاب حکومت تحقیقات کررہی ہے۔اس موقع پر مشیر ماحولیات امین اسلم نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت ماحولیات کے حوالے سے اقدامات کرےگی اور 2 ستمبر سے باقاعدہ اس مہم کا آغاز ہوگا۔انہوں نے کہا کہ 2 ستمبر کو پورے پاکستان میں 15 لاکھ پودے لگائے جائیں گے اور عوام کو مفت پودے فراہم کیے جائیں گے۔انہوں نے کہاکہ اس دن پلانٹ فارپاکستان ڈے منایا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم اس مہم کا افتتاح اسلام آباد میں کریں گے اور وزرا ءاعلیٰ اپنے صوبوں میں اس مہم کو جاری رکھیں گے۔

Scroll To Top