چیف جسٹس کا لاہور میں بڑے سائز کے اشتہاری بورڈز فوری ہٹانے کا حکم

  • بل بورڈز کس قانون کے تحت لگائے گئے ؟جسٹس میاں ثاقب نثار ، ان کا تعلق ایک سیاسی جماعت سے ہے جو اب برسراقتدار نہیں،مئیر کرنل (ر) مبشر جاوید کا جواب
  • اشتہاری بورڈ نصب کرنے والے خود ہی اتار لیں تو اچھا ہو گا، بصورت دیگر بنچ تشکیل دے دیا جائے گا، چیف جسٹس کی دوران سماعت ہدایت

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثارلاہور (این این آئی) چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے لاہور میں بڑے سائز کے اشتہاری بورڈز فوری اتارنے کا حکم دے دیا۔ہفتہ کے روز سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں بینچ نے شہر میں لگے بڑے سائز کے اشتہاری بورڈ کے حوالے سے کیس کی سماعت کی۔ لارڈ مئیر لاہور کرنل (ر) مبشر جاوید بھی عدالت میں پیش ہوئے، چیف جسٹس نے کرنل (ر) مبشر جاوید سے استفسار کیا کہ بڑے سائز کے بل بورڈ کس قانون کے تحت لگائے گئے ہیں؟۔لارڈ مئیر کرنل (ر) مبشر جاوید نے بتایا کہ ان کا تعلق ایک سیاسی جماعت سے تھا اب دوسری سیاسی جماعت اقتدار میں ہے، چیف جسٹس سے استدعا ہے کہ انتظامی افسران کو حکم دیا جائے کہ ان کے ساتھ تعاون کریں۔چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ یہ عوامی عہدہ ہے جس کا کسی سیاست سے کوئی تعلق نہیں، اشتہاری بورڈ نصب کرنے والے خود ہی اتار لیں تو اچھا ہو گا، ورنہ بنچ تشکیل دے دیا جائے گا۔چیف جسٹس پاکستان نے شہر سے بڑے سائز کے بل بورڈ اتارنے اور ڈی جی پی ایچ کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی۔

Scroll To Top