وفاق کابینہ اجلاس: صدر وزیر اعظم، وزراءکے صوابدیدی فنڈ ختم

  • o۔۔۔ دفتری اوقات کار صبح 9 سے شام 5 بجے تک کرنےکا فیصلہ o۔۔۔ ملتان ، اسلام آباد ،لاہور میٹرواور اورنج لائن ٹرین منصوبوں کے فورنزک آڈٹ کا فیصلہo۔۔۔سی پیک کے تحت منصوبوں کو ہر صورت مکمل کرنے کے عزم کا اعادہ o۔۔۔وزارت کیڈ کو ختم کیا جائے گا o۔۔۔تمام منصوبے پارلیمان میں ڈسکس ہونگے
  • o۔۔۔وزیر اعظم خصوصی جہاز استعمال نہیں کرینگےo۔۔۔ وزراءاور سرکاری افسران فرسٹ کلاس میں سفر نہیں کرینگےo۔۔۔سرکاری ٹی وی کے ایڈیٹوریل بورڈ میں اپوزیشن کو بھی نمائندگی ملے گیo۔۔۔نواز شریف نے ایک سال میں 51 ارب روپے کے صوابدیدی فنڈ زاستعمال کئے، وزیر اطلاعات فواد چوہدری کی اجلاس بارے بریفنگ

j
اسلام آباد(این این آئی)وفاقی کابینہ نے صدر، وزیراعظم وزراءاور ایم این ایز کے صوابدیدی فنڈز ختم کرنے کی منظوری دیدی ہے جبکہ وزیر اطلاعات ونشریات فواد چوہدری نے کہاہے کہ ملک بھر  میں کچی آبادیوں کے معاملات کا جائزہ لینے کےلئے ٹاسک فورس بنائی جائےگی ’تمام ماس ٹرانزٹ منصوبوں جیسے ملتان ، اسلام آباد ،لاہور اور اورنج لائن ٹرین منصوبوں کا فورنزک آڈٹ ہوگا ¾ضرورت پڑی تو ایف آئی اے کے ذریعے تحقیقات کا دائرہ پھیلایا جائےگا ’تمام منصوبے پارلیمان میں ڈسکس ہوں گے ’سی پیک کے منصوبوں کے امین ہیں ’ ان میں کوئی رکاوٹ نہیں آنے دیں گے ’ نواز شریف نے ایک سال میں 51 ارب روپے کے صوابدیدی فنڈ استعال کئے گئے ’وزیر اعظم خصوصی جہاز استعمال نہیں کرینگے ’ وزراءاور سرکاری افسران کا فرسٹ کلاس میں سفر نہیں کرینگے ’ بطور انتظامیہ عدالتی امور میں مداخلت نہیں کرسکتے ، عدالتی احکامات پر عملدرآمد کیا جائیگا ’باہر سے پیسہ لانے کے حوالے سے منگل تک ٹی او آرز سامنے لائے جائیں گے ’آرٹی ایس کے حوالے سے جامع اور شفاف تحقیقات کرائی جائینگی ۔وزیراعظم عمران خان کی صدارت میں وفاقی کابینہ کا دوسرا اجلاس جمعہ کو ہوا جس میں حکومت کے ابتدائی 100 دن کے ایکشن پلان پرعملدرآمد کی حکمت عملی اور سرکاری ملازمین کی ہفتے کی چھٹی ختم کرنے سمیت 7 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا۔وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے کہا کہ عمران خان کے وزیر اعظم بننے کے بعد تواتر کے ساتھ کابینہ کے اجلاس ہورہے ہیں ’ اب کابینہ کے اجلاس میں کئی اہم فیصلے کیے گئے۔انہوں نے کہا کہ کابینہ نے ہفتہ کی چھٹی برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے تاہم کام کے اوقات تبدیل کیے گئے ہیں اور سرکاری دفاتر کے اوقات اب 9 سے 5 بجے تک ہوں گے ¾سرکاری دفاتر میں اوقات کار پر عملدرآمد یقینی بنایا جائیگا۔وزیر اطلاعات نے کہا کہ بڑے شہروں میں بڑے پیمانے پر کچی آبادیاں موجود ہیں ¾ ان کے حوالے سے ٹاسک فورس بنائی جائے گی۔فواد چوہدری نے بتایا کہ وفاقی کابینہ نے سب سے اہم فیصلہ صوابدیدی فنڈ ختم کرنے کا کیا ہے جو تاریخی اقدام ہے ۔ وزیر اطلاعا ت نے کہا کہ اگرصوابدیدی فنڈز کے خاتمے کے حوالے سے قانون سازی کی ضرورت پڑی تو کرینگے۔انہوں نے بتایا کہ سابق وزیراعظم نواز شریف نے 21 ارب روپے کے صوابدیدی فنڈ استعمال کیے، اس کے ساتھ 30 ارب روپے کے فنڈ ایم این ایز کو دیے گئے، ایک سال میں 51 ارب روپے کے صوابدیدی فنڈ استعال کئے گئے۔وزیر اطلاعات نے کہاکہ نواز شریف جلسوں میں کہتے تھے کہ میں نے یہ پیسے آپ پر وار دیے، پچھلی حکومت نے سرکاری خزانے کا بے دردی سے استعمال کیا لیکن یہ عوام کے ٹیکس کا پیسہ ہے جسے اس طرح سے استعمال نہیں کیا جا سکتا۔وزیر اطلاعات نے کہا کہ پاناما کیس کے سامنے آنے کے بعد نواز شریف جہاں بھی گئے وہاں ایک ایئرپورٹ اور موٹر وے کا اعلان ضرور کیا، یہ نہیں دیکھا گیا کہ اس علاقے کی ضرورت کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ صدر مملکت جن کا بظاہر کوئی آئینی کردار نہیں رہا، انہوں نے بھی 8 سے 9 کروڑ روپے کا صوابدیدی فنڈ استعمال کیا۔انہوںنے کہاکہ وزیراعظم، صدر اور ایم این ایز کے صوابدیدی فنڈ ختم کر دیے گئے، کسی منصوبے پر رقم استعمال ہونی ہے تو وہ پارلیمانی کمیٹی میں زیر بحث آئے گا اور ترقیاتی منصوبوں کیلئے تفصیلی جائزے کے بعد فنڈ دیئے جائیں گے۔ وزیر اطلاعات نے کہاکہ وزیراعظم عمران خان نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ خصوصی جہاز استعمال نہیں کرینگے ¾وزیراعظم عمران خان غیرملکی دوروں کیلئے کلب کلاس میں سفر کرینگے کیونکہ وزیراعظم کی خواہش ہے کہ بادشاہوں کی طرح پیسہ خرچ کرنے کا رواج ختم ہونا چاہیے۔ انہوںنے کہاکہ وزراءاور سرکاری افسران کا فرسٹ کلاس میں غیر ملکی سفر ختم کردیا گیا ہے۔ وزیراطلاعات نے کہاکہ پنجاب اور خیبرپختونخوا میں ماس ٹرانزٹ منصوبوں کے فرانزک آڈٹ کا فیصلہ کیا گیا ہے اور وفاقی کابینہ کے اجلاس میں ملتان، اسلام آباد، لاہور اور اورنج ٹرین منصوبوں کا فورنزک آڈٹ کرنے کی منظوری دی گئی، اور پھر اگر ضرورت پڑی تو ایف آئی اے سے اس کی تحقیقات بھی کرائی جائےگی۔ایک سوال کے جواب میں فواد چوہدری نے کہا کہ تحریک انصاف نے کبھی بھی کسی عوامی پراجیکٹ کو بند کرنے کی بات نہیں کی لیکن ہمارا پہلے روز سے مو¿قف رہا ہے کہ ان بڑے بڑے پراجیکٹ کے پیچھے کرپشن ہے۔وزیر اطلاعات نے بتایا کہ کابینہ نے ملک گیر شجرکاری مہم کا فیصلہ کیا ہے۔ وزیر اطلاعات نے کہاکہ وزیراعظم عمران خان نے عید کے دوران بجلی کی لوڈشیڈنگ پر برہمی کا اظہارکیا ہے ¾بجلی کی ترسیل کا ناقص نظام لوڈشیڈنگ کی وجہ بنا۔ وزیر اطلاعات نے کہاکہ گذشتہ حکومت 1000ارب روپے کا گردشی قرضہ چھوڑکر گئی ہے ¾چاہتے ہیں کہ گذشتہ حکومت کے میگاپراجیکٹس کی حقیقی تفصیلات سامنے آئیں۔انہوںنے کہاکہ وزیراعظم نے اپنے خطاب میں پہلے 100دن کی تمام ترجیحات کا احاطہ کیا ¾پرنسپل سیکرٹری کا تقرر کارکردگی کی بنیاد پر کیا گیا ہے۔فواد چودھری نے کہاکہ وزارت کیڈ کو ختم کرنے پر غور کیا جارہا ہے ¾ریڈیو اور پاکستان ٹیلی ویژن کو سیاسی سنسر شپ ختم کرنے کی واضح ہدایت کی ہے ’اے پی پی میں یومیہ 8گھنٹے کی نشریات جاری کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ¾پی ٹی وی ورلڈ میں علاقائی سطح کے امور کواجاگر کیا جائیگا۔وفاقی وزیراطلاعات نے کہاکہ پہلے ہی بجٹ میں 51ارب روپے کی بچت کی منصوبہ بندی کررہے ہیں ¾وزیراعظم چاہتے ہیں کہ قومی خزانے کی حفاظت کے حوالے سے عوام کا اعتماد بحال ہو۔ وزیر اطلاعات و نشریات نے کہاکہ وزیراعظم نے سی پیک منصوبوں کی جلدتکمیل کے حوالے سے ہدایت کی ہے ’ سی پیک منصوبوں پر عملدرآمدیقینی بنایا جائیگا۔ وزیر اطلاعات نے کہاکہ بطور انتظامیہ عدالتی امور میں مداخلت نہیں کرسکتے ، عدالتی احکامات پر عملدرآمد کیا جائیگا۔ ایک سوال پر انہوںنے کہاکہ میڈیا کارکنان ہمارے لئے سب سے زیادہ اہم ہیں۔انہوںنے کہاکہ باہر سے پیسہ لانے کے حوالے سے منگل تک ٹی او آرز سامنے لائے جائیں گے ¾آرٹی ایس کے حوالے سے جامع اور شفاف تحقیقات کرائی جائینگی۔انہوںنے کہاکہ چیف جسٹس نے کہا کہ اورنج لائن کی وجہ سے عوام سے بہت مشکلات اٹھائیں، پنجاب حکومت اورنج لائن ٹرین منصوبہ جلد مکمل کرنے کی ہدایت کی ہے۔ وزیر اطلاعا ت نے کہاکہ فیصل آباد واقعہ کو سوشل میڈیا میں غلط طور پر مذہبی رنگ دیا گیا ہے۔

Scroll To Top