جب خدا کا قہر نازل ہوتا ہے تو حضرت موسیٰ ؑ تو سمندر پار کرلیتے ہیں مگر فرعون غرق ہوجاتا ہے

aaj-ki-baat-new

قرآن حکیم ہدایت دینے والی کتاب ہے ۔۔۔
قرآن حکیم ڈرانے والی کتاب ہے۔۔۔
قرآن حکیم خوشخبری سنانے والی کتاب ہے ۔۔۔
قرآن حکیم اللہ تعالیٰ کی کتاب ہے۔۔۔
فرمان الٰہی ہے۔۔۔ وہ سچا اور دائمی آئین ہے جسے صدقِ دل سے تسلیم کئے بغیر کوئی مسلمان خود کو مسلمان نہیں کہلا سکتا۔۔۔
دوسرے الفاظ میں فرق ڈالنے والی کتاب ہے۔۔۔وہ جو اقرار کرتے ہیں اور وہ انکار کرتے ہیں ان کے درمیان فرق۔۔۔
آج میں صبح سورہ الشعراءسن رہا تھا۔۔۔201سے 207نمبر تک کی آیات سن کر میرے سامنے اس نوازشریف کا چہرہ گھوم گیا جس کی چال پرانے زمانے کے سلاطین کی یاد دلاتی تھی۔۔۔اور اس نوازشریف کا چہرہ بھی جو زنداں کی سلاخوں کے پیچھے سے زمانے کے بدلے رنگ بڑی حسرت بھری نگاہوں سے دیکھ رہا ہے۔۔۔
وہ نہ مانیں گے اس کو جب تک نہ دیکھ لیں گے عذاب درد ناک۔۔۔
پھر آئے ان پر اچانک اور ان کو خبر بھی نہ ہو۔۔۔
پھر کہنے لگیں کچھ بھی ہم کو فرصت ملے گی۔۔۔
کیا وہ ہمارے عذاب کو جلد مانگتے ہیں۔۔۔
بھلا دیکھ تو اگر فائدہ پہنچاتے رہیں ہم ان کو برسوں۔۔۔
پھر پہنچے ان پر جس چیز کا ان سے وعدہ تھا۔۔۔
تو کیا کام آئے گا ان کے ` جو فائدہ وہ اٹھاتے رہے ؟
کاش یہ انتباہ ایسے تمام لوگوں کی نظروں سے گزرتا رہے جو خدا کی ڈھیل سے فائدہ اٹھاتے رہتے ہیں اور نہیں جانتے کہ جو فائدہ خدا انہیں دیتا رہا وہ انہیں اس عذاب سے نہیں بچا پائے گا جو ان کے گناہوں کا ثمر ہے۔۔۔۔!
جب خدا کا قہر نازل ہوتا ہے تو فرعون اسی سمندر میں غرق ہوجاتا ہے جس سمندر میں اللہ تعالیٰ حضرت موسیٰ ؑ کے لئے بخیریت گزر جانے کا راستہ نکالتا ہے۔۔۔

Scroll To Top