ضابط اخلاق کی خلاف ورزی، فضل الرحمن ایاز صادق ،پرویز خٹک کی معافی قبول

اسلام آباد:۔ پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنما پرویز خٹک الیکشن کمیشن آف پاکستان کے باہر میڈیا سے گفتگو کر رہے ہیں

اسلام آباد:۔ پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنما پرویز خٹک الیکشن کمیشن آف پاکستان کے باہر میڈیا سے گفتگو کر رہے ہیں

اسلام آباد (این این آئی)الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ناشائستہ زبان استعمال کرنے کے معاملے کو نمٹاتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما پرویز خٹک، جمیعت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما ایاز صادق کی غیر مشروط معاف قبول کرلی اور انہیں آئندہ ایسے الفاظ سے گریز کرنے کی وارننگ جاری کردی جبکہ الیکشن کمیشن نے عمران خان کی متنازعہ تقریر والا از خود نوٹس بھی خارج کر دیا۔تفصیلات کے مطابق حالیہ انتخابات سے قبل انتخابی مہم کے دوران نازیبا الفاظ استعمال کرنے پر الیکشن کمیشن نے دونوں رہنماوں کو 21 جولائی کو طلب کیا تھا۔ جمعرات کو چیف الیکشن کمشنر سردار رضا کی سربراہی میں 4 رکنی بینچ نے انتخابات 2018 سے قبل انتخابی مہم کے دوران پرویز خٹک اور ایاز صادق کی جانب سے غیر اخلاقی زبان استعمال کرنے کے معاملے پر سماعت کی۔دونوں رہنماو¿ں، سابق وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک اور اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق، نے ای سی پی سے غیر مشروط معافی مانگی تھی۔سماعت کے دوران ایاز صادق کے وکیل کامران مرتضی الیکشن کمیشن میں پیش ہوئے اور کمیشن میں ایاز صادق کا ویڈیو کلپ بھی چلا کر دکھایا جس میں انہوں نے نازیبا الفاظ پر غیر مشروط معافی مانگی تھی۔انہوں نے کہا کہ آدمی جب تقریر کر رہا ہوتا ہے تو اس کو اندازہ نہیں ہوتا ،میں پورے ہال کے سامنے ایاز صادق کی جانب سے آپ سے معافی چاہتا ہوں۔ان کا کہنا تھا کہ میں ان لوگوں سے بھی معافی چاہتا ہوں جن کی اس تقریر سے دل آزاری ہوئی۔جس پر چیف الیکشن کمشنر نے ریمارکس دیئے کہ ایاز صادق ہمیں کہہ رہے تھے کہ آپ کی حیثیت ہی کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اب یہ دیکھیں کہ ان کی اپنی کیا حیثیت ہے۔بعد ازاں ایاز صادق کے وکیل نے پھر کہا کہ میں ایک مرتبہ پھر معافی چاہتا ہوں۔اسی دوران کمیشن میں پرویز خٹک کی جانب سے معافی مانگنے والا کلپ بھی دکھایا گیا ،اس سے قبل ای سی پی نے انتخابی مہم کے سلسلے میں تمام سیاسی جماعتوں کے امیدواروں کو ناشائستہ اور نازیبا زبان نہ استعمال کرنے کی ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ امیدوار اپنے جلسوں کے دوران زبان کا مناسب استعمال کرنے میں محتاط رہیں۔الیکشن کمیشن نے محفوظ فیصلہ کچھ دیر بعد سناتے ہوئے چاروں رہنماو¿ں کی غیر مشروط معافی قبول کرلی اور مستقبل میں ایسی زبان استعمال نہ کرنے کی ہدایت کی ہے۔الیکشن کمیشن نے فیصلہ سنانے کے ساتھ ہی پرویز خٹک ، ایاز صادق کی کامیابی کا نوٹی فکیشن بھی جاری کرنے کا حکم دےدیا۔واضح رہے کہ 3 اگست کو پرویز خٹک کی جانب سے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو پیغام جاری ہوا جس میں انہوں ںے انتخابی مہم کے دوران نازیبا الفاظ استعمال کرنے پر قوم سے معافی مانگی تھی۔بعد ازاں الیکشن کمیشن نے پرویز خٹک کی جانب سے انتخابی مہم کے دوران ناشائستہ زبان استعمال کرنے پر از خود نوٹس لیا تھا جس پر پی ٹی آئی کے رہنما پرویز خٹک نے الیکشن کمیشن آف پاکستان سے غیر مشروط معافی طلب کی تھی۔الیکشن کمیشن نے انتخابی مہم کے دوران ایازصادق، پرویز خٹک اور مولانا فضل الرحمان کے خلاف ناشائستہ زبان کے استعمال کا از خود نوٹس لیا تھا۔واضح رہے کہ الیکشن کمیشن نے پرویز خٹک کی کامیابی کو ان کے کیس سے مشروط کررکھا تھا۔

Scroll To Top