حکومت نہیں ”بدحکمرانی“ کیخلاف جہاد کرنے آئے ہیں، عمران خان

  • صدر ،وزیر اعظم اور وزراءکے اخراجات کم کریں گے ، جو وزیر کام نہیں کرے گا اسے تبدیل کریں گے ، وزراءکو 9بجے دفتر پہنچا ہوگا، صوابدیدی فنڈز ختم کریں گے ، ملک کو 5سال میں فلاحی ریاست میں تبدیل کر دیں گے
  • نیا پاکستان بنانا ہے، عوام کو مایوس نہیں کریںگے،احتساب سب کا ہوگا کسی وزیر اور مشیرکو استثنی ٰحاصل نہیں ہوگا ، چیئرمین پاکستان تحریک انصاف اورنامزد وزیر اعظم کا صوبائی پارلیمانی پارٹی اجلاس سے خطاب
اسلام آباد:۔ چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمرا ن خان سے جمہوری وطن پارٹی کے سربراہ شاہ زین بگٹی ملاقات کر رہے ہیں

اسلام آباد:۔ چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمرا ن خان سے جمہوری وطن پارٹی کے سربراہ شاہ زین بگٹی ملاقات کر رہے ہیں

پشاور(این این آئی)چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ ہم حکومت نہیں جہاد کرنے آئے ہیں،اگر انسان چاہے توسب کچھ ہوسکتا ہے،پاکستان کومعاشی طورپر بہت مسائل درپیش ہے،بہت کام کرنا ہوگا۔ احتساب سب کا ہوگا کوئی وزیر اور مشیرنہیں بچے گا۔ کسی کو صوابدیدی فنڈ جاری نہیں کیے جائیں گے ۔قانون تبدیل کرکے صوابدیدی فنڈ کو مکمل ختم کریں گے ۔انہوں نے وزراءکو صبح نو بجے دفتر پہنچنے کی ہدایت کردی۔عمران خان نیب میں پیش کے بعد پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں پہنچ گئے،پارلیمانی پارٹی کے اجلاس سے خطاب میں چیئرمین تحریک انصاف کاکہنا تھا کہ ہم حکومت میں نہیں جہاد کرنے آئے ہیں جو حالات اب ہے وہ پہلے نہیں تھے، پاکستان کو معاشی طور پر بہت مسائل درپیش ہیں اس ضمن میں بہت کام کرنا ہے۔ مشکل وقت کا سامنا کرنا پڑے گا۔لیکن ہرقسم کے حالات کاڈٹ کرمقابلہ کریںگے۔ آ ئی ایم ایف کے ساتھ کیا کرنا ہوگا۔ بہت سوچ بچار کرنی ہوگی۔ انکا کہنا تھا کہ تمام ممبران پوری تیاری کے ساتھ اسمبلی اجلاسوں میں شرکت یقینی بنائی جائے،، مخصوص نشستوں پر آنے والے لوگوں کو تیاری کیساتھ اسمبلی میں ٓانا چاہیے ۔ماضی میں اقتدارمیں آنے والے لوگوں نے اپنی ذات کے لیے بہت کچھ کیا ہم حکومت میں نہیں جہاد کرنے آئے ہیں،انسان اگر چاہیے تو سب کچھ ہوسکتاہے۔ میری جدوجہد واضح مثال ہے۔ غیر ضروری اخراجات ختم کرکے عوام کی ترقی پر وسائل استعمال کرینگے کمیٹی بنائیں گے تاکہ وزیراعظم صدر ،وزیروں کے خرچے کم کرینگے ۔پچاس فیصد پاکستانی دو وقت کی روٹی سے محروم ہے۔ مدینہ کی ریاست نے قانون کی بالادستی قائم کرکے فلاحی ریاست قائم کی اورمسلمانوں نے ترقی کی، ہم نے پاکستان کو فلاحی ریاست بنانی ہے۔ اقتداراپنی ذات کےلئے نہیں لوگوں کی خدمت کرنی ہے ۔خیبرپختونخوا مےں مزید کام کرنے کی ضرورت ہے۔ بلدیات، پولیس اور تعلیم میں مزید کام کرنے ہونگے۔ نیا پاکستان بنانا ہے۔ لوگوں کو مایوس نہیں کریںگے۔ وزیروں، مشیروں اور تمام اراکین کا احتساب کرینگے، وزیروں کو نو بجے دفتر آنا ہو گا۔ کوئی صوابدیدی فنڈز کسی کے پاس نہیں ہونگے۔قانون کے ذریعے یہ فنڈز ختم کرینگے۔ پرویز خٹک نے بڑی مشکل سے حکومت چلائی ہے کبھی کوئی چیز چھپی نہیں رہ سکتی اس لئے احتیاط کے ساتھ کام کریں۔

Scroll To Top