وفاقی کابینہ اجلاس:نواز اورمریم کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا معاملہ آئندہ حکومت پر چھوڑنے کا فیصلہ

  • پرامن اور بروقت انتخابات کروانے کا ٹاسک مکمل ہوچکا، عام انتخابات کا پرامن انعقاد اطمینان بخش ہے ،وفاقی کابینہ
  • ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج محمد ظفیر بلوچ کو انسداد منشیات عدالت کوئٹہ کا خصوصی جج تعینات کرنے اور آٹھویں ویج بورڈ ایوارڈ کےلئے قواعد و ضوابط کی بھی منظوری

مریم نواز

اسلام آباد (آن لائن)نگران حکومت نے سابق وزیراعظم نوازشریف اور مریم نواز کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ(ای سی ایل) میں ڈالنے کا معاملہ آئندہ حکومت پر چھوڑ دیا اورای سی ایل کے معاملے پر قائم کمیٹی نے اپنی رپورٹ بھی وفاقی کابینہ کو پیش کردی ہے ۔ گزشتہ روز نگران وزیراعظم ناصر الملک کی زیر صدارت نگران وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نوازکا نام ای سی ایل میں ڈالنے کے حوالے سے قائم کردہ کمیٹی نے اپنی رپورٹ پیش کی جس پر کمیٹی نے کابینہ سے سفارش کی ہے کہ وہ سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا معاملہ آئندہ حکومت پر چھوڑ دے۔ کمیٹی نے دیگر افراد کے نام بھی ای سی ایل میں ڈالنے اور نکالنے کا معاملہ بھی آئندہ حکومت پر چھوڑ دیا۔کابینہ اجلاس میں ڈی جی انفورسٹمنٹ پی ٹی اے یاور یاسین کو ممبر ٹیکنیکل پی ٹی اے کا اضافی چارج کی بھی منظوری دی گئی ، کابینہ نے ممبر کمپلائنس چوہدری اصغر کو تین ماہ کے لئے ڈی جی قانون کا اضافی چارج دینے کی بھی منظوری دی ۔ کابینہ نے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج محمد ظفیر بلوچ کو انسداد منشیات عدالت کوئٹہ کا خصوصی جج بھی تعینات کرنے کی منظوری دی ۔دوسری جانب آٹھویں ویج بورڈ ایوارڈ کے لئے قواعد و ضوابط کی بھی منظوری دید ی گئی ہے ۔کابینہ میں کیس نمبر 5/2017 سٹیٹ بنک کراچی کو انسداد دہشت گردی عدالت کراچی ٹو سے انسداد دہشت گردی عدالت اسلام آباد منتقل کرنے کی بھی منظوری دی ہے ۔کابینہ نے فنانس ڈویژن کو کینوپ ٹو اور تھری منصوبوں کے لئے میپ آف گارنٹی جاری کرنے کی بھی منظوری دی ۔چارٹر اکاﺅنٹ بائی لاز1983کی شق 106اور124 میں ترمیم کرنے کی بھی منظوری دی گئی۔ نگران وفاقی کابیبنہ میں پی ایل ڈی اے کے سی او مشرف رسول کی تقریر کا معاملہ ایم کیو ایم کے خلاف منی لانڈرنگ کے کیس کے معاملہ کی رپورٹ بھی آئندہ حکومت کو ارسال کرنے کا فیصلہ کیا جبکہ سی ای او پی آئی اے اور صدر نیشنل بینک کی تقرری نئی حکومت کرے گی۔ذرائع کے مطابق کابینہ اجلاس میں کہا گیا کہ نگران حکومت کے الیکشن کروانے کا ٹاسک مکمل ہوچکا ہے،نگران حکومت نے پچیس جولائی کو ہونیوالے عام انتخابات کے پرامن انعقاد پر اطمینان کا اظہار کیا اور انتخابات کے دوران سکیورٹی اہلکاروں اور پولنگ عملے کی خدمات کو سراہا۔ذرائع نے مزید بتایا کہ اجلاس کے دوران ملک میں عام انتخابات کے حتمی نتائج کے بعد کچھ سیاسی جماعتوں کے تحفظات کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا گیا ۔ملک بھر میں امن وامان کی صورتحال کا بھی تفصیلی جائزہ لیا گیا اور اس حوالے سے قانون نافذ کرنیوالے اداروں کی خدمات کو قابل ستائش قراردیا گیا ۔

Scroll To Top