پی ٹی آئی امیدوار اکرام اللہ گنڈاپور خود کش حملے میں جاں بحق

  • ایک اور محب وطن سیاستدان شہید کر دیا گیا، آرمی چیف
    جنرل قمر جاوید باجوہ نے افسوسناک واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ سیاسی رہنماو¿ں کو امن اور جمہوری عمل کے دشمن نشانہ بنا رہے ہیں، ہم پر عزم اور ثابت قدم ہیں، ہمارے شہداءکا لہو رائیگاں نہیں جائے گا، آئی ایس پی آر
  • اکرام اللہ گنڈاپور کلاچی میں واقع اپنے گھر سے انتخابی مہم پر نکلے ہی تھے کہ ان کی گاڑی کے قریب زور دار دھماکا ہوا، پی ٹی آئی رہنما اپنے گارڈ اور ڈرائیو سمیت زخمی ہو گئے ، بعد ازاں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے خالق حقیقی سے جاملے
ڈی آئی خان:۔کلاچی خود کش دھماکے میں  شہید ہونیوالے پی ٹی آئی رہنما اکرام اللہ گنڈا پور کی تباہ شدہ گاڑی ، ان سیٹ میں مرحوم کی تصویر

ڈی آئی خان:۔کلاچی خود کش دھماکے میں شہید ہونیوالے پی ٹی آئی رہنما اکرام اللہ گنڈا پور کی تباہ شدہ گاڑی ، ان سیٹ میں مرحوم کی تصویر

راولپنڈی(این این آئی)پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کا ڈیرہ اسماعیل خان خودکش حملے میں اکرام اللہ گنڈاپور کی شہادت پر مذمت کرتے ہوئے کہنا ہے کہ سیاسی رہنماو¿ں کو امن اور جمہوری عمل کے دشمن نشانہ بنا رہے ہیں۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے اکرام اللہ گنڈا پور کی خودکش حملے میں شہادت پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔آرمی چیف نے کہا کہ ہم ایک اور محب وطن سیاسی رہنما سے محروم ہوگئے ہیں ¾ سیاسی رہنماو¿ں کو امن اور جمہوری عمل کے دشمن نشانہ بنا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم پر عزم اور ثابت قدم ہیں، ہمارے شہداءکا لہو رائیگاں نہیں جائے گا۔۔ ادھر ڈیرہ اسماعیل خان میں پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی نشست کےلئے امیدوار اور سابق صوبائی وزیر اکرام اللہ خان گنڈا پور اپنے ڈرائیور اور گارڈ سمیت خودکش حملے میں شہید ہوگئے ¾اکرام اللہ گنڈاپور انتخابی مہم کے دوران دہشت گردی کا نشانہ بننے والے تیسرے سیاستدان ہیں، عوامی نیشنل پارٹی کے ہارون بلور اور بلوچستان عوامی پارٹی کے امیدوار نوابزادہ سراج رئیسانی بھی انتخا بی مہم کے دور ان خودکش حملوں میں شہید ہوچکے ہیں۔ڈپٹی کمشنر ڈی آئی خان نعمان افضل آفریدی نے میڈیا کو بتایا کہ ڈیرہ اسماعیل خان کی تحصیل کلاچی میں خودکش حملے کے نتیجے میں زخمی ہونے والے پی ٹی آئی امیدوار سردار اکرام اللہ خان گنڈا پور طبی امداد کے دوران چل بسے۔قبل ازیں ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر (ڈی پی او )نے بتایا کہ تحصیل کلاچی سے صوبائی نشست کےلئے تحریک انصاف کے امیدوار سردار اکرام اللہ خان گنڈاپور کی گاڑی پر خودکش حملہ ہوا جس کے نتیجے میں ان سمیت 4 افراد زخمی ہوئے۔ اکرام اللہ گنڈا پور اور دیگر زخمیوں کو طبی امداد کے لیے سی ایم ایچ ہسپتال لے جایا گیا جہاں پی ٹی آئی امیدوار دوران علاج چل بسے جبکہ ان کے خاندانی ذرائع نے بھی اکرام اللہ گنڈا پور کی شہادت کی تصدیق کردی ہے۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق اکرام اللہ گنڈاپور اپنے گھر سے نکلے تھے اور کچھ دوری پر ہی تھے کہ ان کی گاڑی کے قریب زور دار دھماکا ہوا۔کلاچی دھماکے بعد پولیس اور سیکورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور جائے وقوعہ پر حصار بناتے ہوئے وہاں کسی کو بھی جانے کی اجازت نہیں دی۔عینی شاہد کے مطابق دھماکے کی جگہ پر ایک انسانی سر اور ٹانگیں بھی موجود ہیں۔پولیس کے مطابق اکرم اللہ گنڈا پور پانچ سال قبل جاں بحق ہونے والے اپنے بھائی اور سابق صوبائی وزیر اسرار اللہ گنڈاپور کی شہادت میں ملوث ملزمان کی عدم گرفتاری کے خلاف منعقدہ ایک احتجاجی دھرنے میں شرکت کےلئے جارہے تھے کہ اس دوران ان کا گاڑی پر حملے کیا گیا۔یاد رہے کہ سابق صوبائی وزیر اسرار اللہ گنڈا پور کو پانچ سال قبل ایک خودکش حملے میں نشانہ بنایا گیا تھا۔ مقتول کے بھائیوں نے ان کی قتل کا الزام پی ٹی آئی ڈیرہ اسماعیل خان کے ایک اہم رہنما پر لگایا تھا تاہم ایف آئی آر میں ان کا نام ہونے کے باوجود ابھی تک اس ضمن میں کوئی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی ہے۔ادھر چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے خود کش حملے میں اکرام اللہ گنڈاپور کی شہادت پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے ملوث ڈامہ داروں کو عبرتناک سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے اکرام اللہ گنڈاپور کی شہادت پر گہرے رنج اور دکھ کا اظہار کرتے ہوئے ان کے لواحقین سے دلی ہمدردی اور تعزیت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اکرام اللہ گنڈا پور کی تحریکِ انصاف سے گہری وابستگی تھی۔عمران خان نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ دشمن بلا تمیز و تفریق انتشار کیلئے ہاتھ پاو¿ں مار رہا ہے، لیکن وہ ہمارے عزم میں شگاف ڈال سکتا ہے نہ ہی تقسیم میں کامیاب ہو گا۔چیئرمین پی ٹی آئی نے مطالبہ کیا کہ واقعے کی جامع تحقیقات کر کے ذمہ داروں کو عبرتناک سزا دی جائے اور الیکشن کمیشن انتخابات کے پرامن انعقاد اور امیدواروں کی سیکیورٹی کو ترجیح دے۔ یاد رہے کہ اکرام اللہ گنڈا پور صوبائی اسمبلی کی نشست پی کے 99 سے تحریک انصاف کے امیدوار تھے۔

Scroll To Top